09:59 am
دودسمبر کا دن خواتین کی حوصلہ افزائی کیلئے اہم قرار، پاکستانی سیاست کا یادگار دن بن گیا

دودسمبر کا دن خواتین کی حوصلہ افزائی کیلئے اہم قرار، پاکستانی سیاست کا یادگار دن بن گیا

09:59 am

اسلا م آباد(نیوز ڈیسک)2دسمبر 1988کو پہلی خاتون نے پاکستان کی وزیراعظم کا منصب سنبھالا۔تفصیلات کے مطابق آج 2دسمبر کے دن پاکستان میں بے نظیر بھٹونے بطور پہلی خاتون وزیراعظم کے حکمرانی کی تھی۔یادر ہے ملک میں عام انتخابات کا انعقاد نومبر میں ہوا، تاہم کوئی بھی واضح طور پر اکثیر حاصل نہ سکا۔ ملک میں جوڑ توڑ میں بھی تیزی آچکی تھی۔اس وقت کے صدر غلام اسحاق صوابدیدی نے اپنے
اختیارات کا فائدہ اٹھاتے ہوئے بے نظیر بھٹو کو حکومت سازی کی دعوت دی۔بے نظیر نے آج کے دن وزیراعظم کا حلف لیا۔ایوانِ صدر میں منعقد تقریب میں بیگم نصرت بھٹو، آصف زرداری، صنم بھٹو، ٹکا خان، ولی خان، نواب زادہ نصراللہ خان، مسلح افواج کے سربراہ، مختلف ممالک کے سفارت کار اور دیگر اہم شخصیات نے شرکت کی۔تاہم سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو کی حکومت زیادہ دیر قائم نہ رہ سکی۔واضح رہےایک سال 8 ماہ بعد6اگست 1990ء پاکستان میں بے نظیر بھٹو کی پہلی حکومت کے خاتمے کا دن ہے۔ بے نظیربھٹو ضیاء الحق کی موت کے بعد 1988ء کے انتخابات میں کامیاب ہوئیں اور انہوں نے عالم اسلام کی پہلی خاتون وزیراعظم کی حیثیت سے حلف اٹھایا ، تاہم اس کے وقت اپوزیشن لیڈر میاں نوازشریف اور ان کے ساتھیوں نے ان کی حکومت گرانے کی کوششیں جاری رکھیں۔اس دوران ان کے خلاف تحریک عدم اعتماد بھی ناکام ہوئی۔ بالآخر برسراقتدارآنے کے صرف 20 ماہ بعد اس وقت کے صدرغلام اسحاق خان نے آئین کے آرٹیکل58 ٹوبی کے تحت حاصل اختیارات استعمال کرتے ہوئے قومی اسمبلی توڑ دی۔چاروں صوبائی اسمبلیاں بھی توڑ دی گئیں اور ملک بھر میں ہنگامی حالت نافذ کردی گئی۔ بے نظیر حکومت توڑے جانے کے بعد غلام مصطفی جتوئی کو نگران وزیراعظم مقرر کیاگیا جنہوں نے 24 اکتوبر کو عام ا نتخابات کرانے کا اعلان کیا۔