08:34 pm
کھڑک سنگھ کے کھڑکنے سے کھڑکتی ہیں کھڑکیاں، ماضی کا یہ کردار کون تھا اور کیوں مشہور تھا؟

کھڑک سنگھ کے کھڑکنے سے کھڑکتی ہیں کھڑکیاں، ماضی کا یہ کردار کون تھا اور کیوں مشہور تھا؟

08:34 pm


کھڑک سنگھ کے کھڑکنے سے کھڑکتی ہیں کھڑکیاں، کھڑکیوں کے کھڑکنے سے کھڑکتا ہے کھڑک سنگھ، بچپن میں
جب اسکول میں زبان دانی کے مقابلے میں کچا پپیتا پکا پپیتا ازبر ہو جاتا تو اگلے مرحلے میں اس شعر کو پڑھنے کا ٹاسک ملتا- یہی وجہ ہے کہ ماضی کے اکثر افراد اس شعر سے نہ صرف واقف ہوں گے بلکہ اکثر افراد کو یہ ازبر بھی ہو گا۔مگر کیا آپ جانتے ہیں کہ یہ صرف ایک شعر نہیں ہے بلکہ اس کے پیچھے ایک سبق آموز قصہ بھی پوشیدہ ہے۔ آج ہم آپ کو اس تاریخی واقعے کے بارے میں بتائيں گے جس کو جاننے کے بعد آپ بھی یہ دعا کرنے پر مجبور ہو جائیں گے کہ کاش یہ کھڑک سنگھ اس دور میں بھی پیدا ہو جائے کھڑک سنگھ کون تھا؟ ویسے تو تاریخ میں کئی کھڑک سنگھ گزرے ہیں جن میں سے ایک سکھ راجہ تھے جب کہ ایک افسانہ نگار تھے مگر یہ کھڑک سنگھ کا شعر جسٹس کھڑک سنگھ آف پٹیالہ کے حوالے سے مشہور تھا-کھڑک سنگھ کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ انگریزوں کا جب ہندوستان پر قبضہ تھا اس وقت پٹیالہ کے نواب کھڑک سنگھ کے بھانجے تھے اور کھڑک سنگھ خود بھی ایک بڑی جاگیر کے مالک تھے۔ جس وجہ سے اکثر لوگوں کے پنچائت میں فیصلے وغیرہ بھی کروا دیتے تھے- جاگیر داری سے جج بننے کا سفر ایک دفعہ کھڑک سنگھ کے علم میں یہ بات آئی کہ پٹیالہ میں سیشن جج کی کرسی خالی ہے۔ تو ان کو شوق چڑھا کہ کیوں نہ وہ اس کرسی پر بیٹھیں۔ اس وقت میں ہندوستان میں سیشن جج کی بھرتی انگریز وائسرائے کی اجازت سے ممکن ہوتی تھی۔ کھڑک سنگھ نے اپنے بھانجے سے اپنی اس خواہش کا اظہار کیا- ماموں کے احترام میں راجہ نے وائسرائے کے نام ایک خط لکھ کر ماموں ک حوالے کر دیا اور کھڑک سنگھ وائسراۓ کے پاس سفارشی خط لے کر چلے گئے- تعلیم کے بغیر جج کی کرسی پر بیٹھنے کا حکمنامہ وائسرائے کے پاس جب کھڑک سنگھ خط لے کر پہنچے تو وائسرائے نے ان سے ان کا نام پوچھنے کے بعد ان کی تعلیم کے بارے میں دریافت کیا۔ کھڑک سنگھ پڑھے لکھے تو تھے نہیں مگر اس سوال سے بھڑک اٹھے-انہوں نے وائسرائے سے پوچھا کہ سیشن جج کا تعلیم سے کیا کام، انہوں نے بچوں کو تو پڑھانا نہیں ہے جو ان سے ان کی تعلیم دریافت کی جا رہی ہے-وائسرائے نے ان سے دریافت کیا کہ پھر وہ غلط اور صحیح کو کیسے پہچانیں گے تو اس کے جواب میں کھڑک سنگھ کا کہنا تھا کہ ساری عمر وہ پنچائت کے فیصلے کرتے رہے ہیں ان کو اچھے اور برے میں فرق بہت اچھی طرح سے کرنا آتا ہے-تنگ آکر وائسرائے نے ان کو پٹیالہ کا جج بنا کر بھجوا دیا اور سوچا کہ راجہ جانے اور اس کا ماموں جانے- جسٹس کھڑک سنگھ کی عدالت کا پہلا مقدمہ جب پہلے دن کھڑک سنگھ عدالت پہنچے تو ان کے سامنے ایک عورت کے شوہر کے قتل کا مقدمہ پیش کیا گیا۔ اس عورت کے ساتھ چار ملزمان کو بھی پیش کیا گیا جن پر الزام تھا کہ انہوں نے اس عورت کے شوہر کو ڈنڈوں، چاقو سے مار دیا-کھڑک سنگھ کے سامنے پولیس نے کیس کی فائل پیش کی تو کھڑک سنگھ نے عورت سے کیس کے بارے میں دریافت کیا عورت نے ملزمان کی طرف اشارہ کر کے بتایا کہ اس کے شوہر کے قتل کا واقعہ اس کے سامنے ہی پیش آیا اور ان ملزمان میں سے اس نے ڈنڈے سے اس نے چاقو سے اس نے کسی سے اور اس نے نوکدار نیزے سے اس کے شوہر کو مار مار کر ہلاک کر دیا-جب کھڑک سنگھ سے ملزمان سے اس بارے میں دریافت کیا تو ان کا کہنا تھا کہ ان میں سے ایک کے پاس بیلچہ تھا دوسرے کے پس کدال تھی جب کہ دو کے پاس گھاس کاٹنے کی درانتی تھی اور یہ عورت غلط بیانی کر رہی ہے- کھڑک سنگھ نے بات کو سمیٹتے ہوئے ان سے دریافت کیا کہ کیا واقعی اس عورت کا شوہر مر گیا ہے تو انہوں نے اس کا اقرار کر لیا- کھڑک سنگھ جب فیصلہ لکھنے لگا تو اسی دوران کالے کوٹ میں ایک وکیل سامنے آیا جو ان ملزمان کی جانب سے وکیل صفائی تھا اور اس نے کھڑک سنگھ سے درخواست کی کہ کیس ان لوگوں کے درمیان زمین کے جھگڑے کی وجہ سے ہوا۔ اور مقتول کے نام پر زمین نہیں تھی زمین تو ملزمان کے نام تھی اور مقتول ان کی زمین پر جھگڑے کی نیت سے آیا تھا- وکیل صفائی بھی ملزمان کا ساتھی وکیل صفائی کے بارے میں کھڑک سنگھ نے پولیس والے سے دریافت کیا کہ یہ کون ہے تو پولیس والے نے بتایا کہ یہ ملزمان کی جانب سے وکیل ہے تو کھڑک سنگھ نے کہا کہ یعنی یہ بھی ان کا ہی ساتھی ہوا نا- ایک ہی دن میں مقدمہ کا فیصلہ کاروائی کے بعد اسی وقت کھڑک سنگھ نے فیصلہ سنایا کہ کل صبح ان چاروں افراد کے ساتھ اس وکیل کو بھی پھانسی دے دی جائے- فیصلے کے اثرات ایسا فیصلہ جس میں ملزمان کے ساتھ ساتھ اس کے وکیل کو بھی پھانسی دے دی گئی اس نے کھڑک سنگھ کے انصاف اور دبدبے کی دھوم مچا دی۔ اس کا ایسا خوف بیٹھ گیا کہ اس کے بعد کھڑک سنگھ کے علاقے میں دوبارہ قتل کی کوئی واردات نہیں ہوئی۔ یہاں تک کہ فوری انصاف کے سبب دور دور سے لوگ کھڑک سنگھ کی عدالت میں انصاف کے لیے آنے لگے- موجودہ دور میں بھی کھڑک سنگھ آجائے تو ۔۔۔ ہمارا نظام انصاف طریقہ کار کے چکر میں اتنا پھنس گیا ہے کہ مظلوم کو انصاف ملنا دشوار اور ظالم کا ظلم کرنا آسان ہو گیا ہے اگر موجودہ دور میں بھی کھڑک سنگھ آجائے تو شائد عوام کا عدالتوں پر اعتبار پھر سے قائم ہو جائے-

تازہ ترین خبریں

خاندان میں نیہا جیسی عورت آجائے تو گھر ٹوٹ جایا کرتے ہیں، صبا فیصل نے اپنے بیٹےاور بہو سے تعلق ختم کرنیکا اعلان کر دیا 

خاندان میں نیہا جیسی عورت آجائے تو گھر ٹوٹ جایا کرتے ہیں، صبا فیصل نے اپنے بیٹےاور بہو سے تعلق ختم کرنیکا اعلان کر دیا 

پاکستانیوں کی تو موجیں لگ گئیں ۔۔۔پٹرول 42 روپے فی لٹرسستا۔۔۔فی لیٹرقیمت کیا ہو گی ۔۔۔؟جانیں

پاکستانیوں کی تو موجیں لگ گئیں ۔۔۔پٹرول 42 روپے فی لٹرسستا۔۔۔فی لیٹرقیمت کیا ہو گی ۔۔۔؟جانیں

پی ٹی آئی رہنما شہبازگل کی طبعیت ناساز۔۔۔ فورا اسپتال منتقل کر دیا گیا 

پی ٹی آئی رہنما شہبازگل کی طبعیت ناساز۔۔۔ فورا اسپتال منتقل کر دیا گیا 

ایک ماہ میں دوسری بار انڈہ پھینکنے کی کوشش میںبرطانوی بادشاہ کوانڈہ کہاں جا لگا۔۔۔؟دیکھیں خبر میں

ایک ماہ میں دوسری بار انڈہ پھینکنے کی کوشش میںبرطانوی بادشاہ کوانڈہ کہاں جا لگا۔۔۔؟دیکھیں خبر میں

ہمارے بعض لوگ اسمبلیاں تحلیل ہونے سے گھبرا رہے ہیں۔۔۔ہماری مقبولیت کم نہیں ہو گی۔۔۔کپتان نے کارکنان کوتسلی دے دی 

ہمارے بعض لوگ اسمبلیاں تحلیل ہونے سے گھبرا رہے ہیں۔۔۔ہماری مقبولیت کم نہیں ہو گی۔۔۔کپتان نے کارکنان کوتسلی دے دی 

بھار تی ہٹ دھرمی۔۔۔ پاکستانی بلائنڈ کرکٹ ٹیم کو ویزےجاری نہ کیے۔۔۔کھیلوں میں تو سیاست نہ لا یا جائے۔۔۔ ترجمان دفتر خارجہ

بھار تی ہٹ دھرمی۔۔۔ پاکستانی بلائنڈ کرکٹ ٹیم کو ویزےجاری نہ کیے۔۔۔کھیلوں میں تو سیاست نہ لا یا جائے۔۔۔ ترجمان دفتر خارجہ

’اسمبلی نہ توڑیں، مشاورت سے ۔۔۔!!!سابق صدر آصف علی زرداری اورق لیگ کے سربراہ چوہدری شجاعت کی حالیہ ملاقات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی

’اسمبلی نہ توڑیں، مشاورت سے ۔۔۔!!!سابق صدر آصف علی زرداری اورق لیگ کے سربراہ چوہدری شجاعت کی حالیہ ملاقات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی

تمام تعلیمی اداروں میں ہفتہ وار تین چھٹیوں کا اعلان

تمام تعلیمی اداروں میں ہفتہ وار تین چھٹیوں کا اعلان

دل دل پاکستان سے دلوں میں گھرکرنے والے معروف گلوکار اور نعتیہ کلام پیش کرنے والےجنید جمشید کو ہم سے بچھڑے 6 سال بیت گئے 

دل دل پاکستان سے دلوں میں گھرکرنے والے معروف گلوکار اور نعتیہ کلام پیش کرنے والےجنید جمشید کو ہم سے بچھڑے 6 سال بیت گئے 

سینٹورس کوسیل کرنے کا مجھے یا وزیراعظم کو علم تھا یا نہیں ؟ وزیرداخلہ نے وضاحت کردی

سینٹورس کوسیل کرنے کا مجھے یا وزیراعظم کو علم تھا یا نہیں ؟ وزیرداخلہ نے وضاحت کردی

مراکش فیفا ورلڈکپ قطر کے کوارٹر فائنل میں پہنچنے والا واحد اسلامی ملک بن گیا

مراکش فیفا ورلڈکپ قطر کے کوارٹر فائنل میں پہنچنے والا واحد اسلامی ملک بن گیا

توہین عدالت کیس،پی ٹی آئی رہنما اسد عمر نے غیر مشروط معافی مانگ لی

توہین عدالت کیس،پی ٹی آئی رہنما اسد عمر نے غیر مشروط معافی مانگ لی

سعودی عرب کا سمندری سیاحت کے فروغ کیلیے بڑا اعلان

سعودی عرب کا سمندری سیاحت کے فروغ کیلیے بڑا اعلان

ملک کے سب سے بڑے شہر کی پراسرار خالی بستی، شہر کے مرکز میں موجود ایسا علاقہ جہاں کروڑوں کے گھر مگر رہنے والا کوئی نہیں

ملک کے سب سے بڑے شہر کی پراسرار خالی بستی، شہر کے مرکز میں موجود ایسا علاقہ جہاں کروڑوں کے گھر مگر رہنے والا کوئی نہیں