05:05 pm
یکم دسمبر سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا امکان

یکم دسمبر سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا امکان

05:05 pm

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) یکم دسمبر سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا امکان ہے۔ تفصیلات کے مطابق یکم دسمبر سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔ آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کی سمری تیار کرلی ہے، جس کے مطابق یکم دسمبر سے پیٹرول کی قیمت میں 25 پیسے کمی کی سفارش کی گئی ۔
سمری میں مٹی کے تیل کی قیمت میں 83 پیسے فی لیٹر اور لائٹ ڈیزل کی قیمتوں میں 2 روپے 90 پیسے فی لٹر کمی کی تجویز دی گئی ۔ اوگرا نے سمری پیٹرولیم ڈویژن کو ارسال کردی جس پر وزارت خزانہ حتمی فیصلہ کل وزیراعظم کی مشاورت سے کرے گی اور نئی قیمتوں کا اطلاق یکم دسمبر سے ہوگا۔ خیال رہے کہ نومبر کے لیے بھی پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کی گئی تھی۔ حکومت نے اوگرا کی جانب سے پیش کی جانے والی سمری پر اکتیس اکتوبر کو فیصلہ کیا جس کے تحت یکم نومبر سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا اعلان کیا گیا تھا۔ اس اعلان کے تحت لائٹ اسپیڈ ڈیزل کی فی لیٹر قیمت میں 6 روپے 56 پیسے، مٹی کے تیل کی فی لیٹر قیمت میں 2 روپے 39 پیسے کی کمی کر دی گئی تھی جبکہ پیٹرول کی قیمت میں 1 روپے کا اضافہ کر دیا گیا تھا۔ تاہم اب دسمبر کے لیے پیٹرول کی قیمت میں کمی کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے جس کا حتمی اعلان 30 نومبر کو کیے جانے کا امکان ہے۔ یاد رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت آنے کے بعد ضروریات زندگی کی اشیا میں کئی گنا اضافہ ہوا۔ ان اشیا میں پیٹرول بھی پیش پیش ہے جس نے شہریوں کو مزید مشکلات میں مبتلا کر دیا۔ حال ہی میں پاکستان تحریک انصاف کی رہنما عظمیٰ کاردار نے حال ہی میں دعویٰ کیا کہ ملک بھر میں پٹرول 75 روپے فی لیٹر ہے جو 114 روپے 24 پیسے پر فروخت کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے یہ دعویٰ پٹرول کی قیمت سے متعلق رپورٹر کی جانب سے پوچھے گئے سوال پر کیا تھا۔ عظمیٰ کاردار کے اس دعوے کے بعد سوشل میڈیا پر انہیں تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا ۔ اس دعوے پر عوام کا کہنا تھا کہ پاکستان تحریک انصاف نے اقتدار میں آنے کے بعد مہنگائی میں اضافے کے علاوہ کچھ نہیں کیا۔

تازہ ترین خبریں