07:20 pm
بینکوں میں رقوم رکھوانے والوں کیلئے بڑی خوشخبری آگئی

بینکوں میں رقوم رکھوانے والوں کیلئے بڑی خوشخبری آگئی

07:20 pm

کراچی(ویب ڈیسک) رواں مالی سال کے پہلے 65 ماہ کے دوران بینکوں کے ڈیپازٹس 
میں 2020 ارب روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔اسٹیٹ بینک نے رواں مالی سال کی پہلی ششماہی (جنوری تا جون 2022) کے دوران بینکاری کے شعبے کی کارکردگی سے متعلق جائزہ رپورٹ جاری کردی ہے۔رپورٹ میں مالی منڈیوں اور مائیکروفنانس بینکوں کی کارکردگی کے ساتھ ساتھ نظامیاتی خطرے کے سروے کے نتائج کو بھی شامل کیا گیا ہے، جو مالی استحکام کو لاحق اہم خطرات کے بارے میں آزاد ماہرین کی رائے پر مبنی ہے۔جائزے میں کہا گیا ہے کہ 2022ء کی پہلی ششماہی کے دوران پائیدار معاشی سرگرمی سے بینکاری کے شعبے کی بیلنس شیٹ میں 16 فیصد توسیع میں مدد ملی۔ اثاثوں کی بنیاد میں مضبوط اضافے کا اہم محرک نجی شعبے کے قرضوں کے بہاؤ اور سرمایہ کاریوں خصوصاً حکومتی تمسکات میں اضافہ تھا۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ بھاری مقدار میں ڈپازٹس جمع کرنے کے علاوہ توسیع شدہ بیلنس شیٹ کو فنانس کرنے میں بینکوں کے قرضوں پر انحصار میں خاصا اضافہ ہوگیا۔رپورٹ کے مطابق رواں سال کے پہلے 6 ماہ کے دوران بینکوں میں جمع کرائی گئی رقوم میں گزشتہ برس کی اسی مدت کے مقابلے میں 9.3 فیصد اضافے کے ساتھ 2 ہزار 20 ارب (20 کھرب 20 ارب) روپے کا اضافہ ہوا۔جائزہ رپورٹ میں بینک ڈپازٹس میں اضافے کی بڑی وجہ بیرون ملک سے بھجوائی گئی ترسیلات زر، دالر کے مقابلے میں روپے کی گرتی قدر، سمندر پار پاکستانیوں کی جانب سے روشن پاکستان اکاؤنٹس میں سرمایہ کاری، ای بینکنگ کی بڑھتی شرح اور گندم کی امدادی قیمت بڑھنے کو قرار دیا گیا ہے۔2022ء کی پہلی ششماہی کے دوران نجی شعبے کے قرضوں کی نمو کی رفتار گذشتہ تین برسوں کی تقابلی مدت میں بلند ترین تھی۔ 2022 کی پہلی ششماہی کےدوران مینوفیکچرنگ سرگرمی میں بہتری، جس کی عکاسی بڑے پیمانے کی اشیا سازی کے انڈیکس میں دو ہندسی (double-digit) نمو سے ہوتی ہے، خام مال کی بلند قیمتوں اور اسٹیٹ بینک کی ری فنانس اسکیموں نے قرضوں کے مجموعی بہاؤ کو بڑھانے میں کردار ادا کیا۔لوگوں نے انفرادی طور پر اور چینی کے شعبے نے بینکوں سے قرضوں کا بڑا حصہ حاصل کیا جس کے بعد ٹیکسٹائل شعبے کا نمبر آتا ہے۔نمو کی قابل ذکر کارکردگی کے علاوہ بینکوں کے اثاثہ جاتی معیار کے اظہاریوں ( indicators ) میں مزید بہتری آ ئی۔ خام غیر فعال قرضوں (این پی ایل) کا تناسب آخر جون 2022 تک کم ہو کر 7.5 فیصد ہو گیا، جو آخر دسمبر 2021 میں 7.9 فیصد تھا۔ تاہم، ملک کے کئی حصوں میں حالیہ تباہ کن سیلاب بینکوں سے زرعی قرضہ لینے والوں اور مائیکروفنانس قرض گیروں کی قرض واپسی کی صلاحیت کو متاثر کر سکتے ہیں۔جائزے میں یہ بات اجاگر کی گئی ہے کہ آمدنیوں میں طاقتور نمو کے باوجود نفع بابی کے اساسی اظہاریوں میں اعتدال آیا، جس کی بنیادی وجہ عائد کردہ ٹیکس میں تیزی سے اضافہ ہے۔ بینکوں کی شرحِ کفایتِ سرمایہ ( CAR ) اثاثوں اور قرضوں میں تیز رفتار نمو کی بنا پر گر کر 16.1 فیصد ہوگئی۔ تاہم اس سے قطع نظر، مذکورہ شرح کم از کم ضوابطی تقاضوں (یعنی 11.5 فیصد) سے خاصی اوپر رہی اور بینکوں کے پاس بحیثیتِ مجموعی مناسب بفر (buffer) اور وہ لچک (resilience) موجود ہے جو انہیں معاشی صورتِ حال کے شدید دباؤ اور خطرات کے اہم عوامل کے اثرات سے بچا سکتی ہے۔اس جائزے میں مارکیٹ کے آزاد شرکا کے احساسات پر مبنی ’ایس آر ایس‘ کے دسویں مرحلے (جولائی 2022ء) کے نتائج کا بھی احاطہ کیا گیا ہے۔ماہرین کا خیال ہے کہ مالی نظام کو لاحق بیشتر خطرات بیرونی نوعیت کے ہیں، یعنی عالمی اور کلی معاشی خطرات تاہم رائے دہندگان کی اکثریت نے مالی نظام کے استحکام پر اعتماد ظاہر کیا۔ملک کے بہت سے علاقوں میں تباہ کن سیلاب بینکوں اور مائیکرو فنانس کے زرعی قرض داروں کی ادائیگی قرض کی صلاحیت پر اثر ڈال سکتا ہے، اور اسی طرح دورِ ثانی کے اثرات کے طور پر دیگر قرض داروں کی بھی ادائیگی قرض کی صلاحیت متاثر ہو سکتی ہے۔جائزے میں کہا گیا ہے کہ بینکوں کے ساتھ مائیکرو فنانس بینکوں کو بھی چاہیے کہ قرض گاری کے پورٹ فولیو پر ممکنہ اثرات کا محتاط طریقے سے تجزیہ کریں اور اثاثوں کے معیار نیز اپنے اداروں کے مالی استحکام کی لچک برقرار رکھنے کے لیے ضروری اقدامات کریں۔


تازہ ترین خبریں

آرمی چیف کا جنرل(ر) پرویز مشرف کے  انتقال پر   افسوس  کا اظہار

آرمی چیف کا جنرل(ر) پرویز مشرف کے  انتقال پر   افسوس  کا اظہار

سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف انتقال کرگئے

سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف انتقال کرگئے

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کا جیل بھرو تحریک کا اعلان

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کا جیل بھرو تحریک کا اعلان

عمران خان کی نااہلی متوقع،پی ڈی ایم ضمنی الیکشن میں حصہ نہ لے، فضل الرحمن کا شہباز شریف کو مشورہ

عمران خان کی نااہلی متوقع،پی ڈی ایم ضمنی الیکشن میں حصہ نہ لے، فضل الرحمن کا شہباز شریف کو مشورہ

قتل  ہوا  تو  ذمہ دار آصف زرداری، بلاول، شہباز اور رانا ثنا اللہ ہوں گے، شیخ رشید   کا دعویٰ

قتل ہوا تو ذمہ دار آصف زرداری، بلاول، شہباز اور رانا ثنا اللہ ہوں گے، شیخ رشید کا دعویٰ

وزیرخزانہ اسحاق ڈار اپنے معاشی اعداد وشمار درست کریں، شوکت ترین کی تنقید

وزیرخزانہ اسحاق ڈار اپنے معاشی اعداد وشمار درست کریں، شوکت ترین کی تنقید

ہرجانہ کیس ، افتخار چوہدری کے اعتراض پر عمران خان کیخلاف بینچ تبدیل

ہرجانہ کیس ، افتخار چوہدری کے اعتراض پر عمران خان کیخلاف بینچ تبدیل

انتقامی کارروائیوں سے معیشت بہتر نہیں ہوگی،حکومت الیکشن کا اعلان کرے مذاکرات  کیلئے تیار ہیں، فیصل جاوید

انتقامی کارروائیوں سے معیشت بہتر نہیں ہوگی،حکومت الیکشن کا اعلان کرے مذاکرات کیلئے تیار ہیں، فیصل جاوید

تحریک انصاف کے سابق ارکان قومی اسمبلی سے پارلیمنٹ لاجز کے کمرے خالی کروالئے گئے

تحریک انصاف کے سابق ارکان قومی اسمبلی سے پارلیمنٹ لاجز کے کمرے خالی کروالئے گئے

شیخ رشید  اسلام آباد کے کسی تھانے میں موجود نہیں، راشد شفیق کا دعویٰ

شیخ رشید اسلام آباد کے کسی تھانے میں موجود نہیں، راشد شفیق کا دعویٰ

حکومتی ترجیحات امن نہیں، مقدمات ہیں، ہمیں کسی اور کی جنگ کاایندھن بنایا جارہا ہے، مراد سعیدکا انکشاف

حکومتی ترجیحات امن نہیں، مقدمات ہیں، ہمیں کسی اور کی جنگ کاایندھن بنایا جارہا ہے، مراد سعیدکا انکشاف

مہنگائی میں اضافے سے عوام کو تکلیف پہنچی ،ہم سب جانتے ہیں، وزیرخزانہ اسحاق ڈار

مہنگائی میں اضافے سے عوام کو تکلیف پہنچی ،ہم سب جانتے ہیں، وزیرخزانہ اسحاق ڈار

سابق وفاقی وزیر شیخ رشید کیخلاف کراچی میں مقدمہ درج ، پولیس گرفتاری کیلئے اسلام آباد پہنچ گئی

سابق وفاقی وزیر شیخ رشید کیخلاف کراچی میں مقدمہ درج ، پولیس گرفتاری کیلئے اسلام آباد پہنچ گئی

کوہاٹ تاندہ  ڈیم خادثہ ، آخری طالب علم  کی لاش 6 روز بعد  نکال لی گئی،جاں بحق ہونیوالوں کی تعداد 53 ہو گئی

کوہاٹ تاندہ ڈیم خادثہ ، آخری طالب علم کی لاش 6 روز بعد نکال لی گئی،جاں بحق ہونیوالوں کی تعداد 53 ہو گئی