12:07 pm
 آئی جی پولیس ادریس عباسی کیخلاف کارروائی  یقینی بنائیں، شہبازظریف

آئی جی پولیس ادریس عباسی کیخلاف کارروائی یقینی بنائیں، شہبازظریف

12:07 pm

آئی جی پولیس ادریس عباسی کیخلاف کارروائی یقینی بنائیں، شہبازظریف تین روز گزرنے کے باوجود دھیرکوٹ پولیس کارروائی کرنے سے گریزاں ہے دھیرکوٹ(نمائندہ اوصاف) اسلحہ کے زور پر میرے بیٹے کو اغواہ کر کے سخت ترین تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ گالم گلوچ کی گئی۔تین روز گزرنے کے باوجود پولیس کارروائی کرنے سے گریزاں ہے۔ سردار شہبازظریف نے کہا کہ جب لاتوں اور مکوں کی بارش ہو رہی تھی اور گاڑی نمبر027 میں مجھے اغواہ کر کے لے گئے۔ چہرے پر مار پیٹ اور زخموں کے واضح نشانات تھے۔اور ملزمان نے کلاشنکوف سیدھی کر کے سائل سے ساڑھے تین لاکھ روپے کی رقم چھین لی۔اس وقت تکیہ موڑ کے قریب آپریٹر ، ہیلپر اور دیگر سروس سٹیشن پر کام کرنے والے افراد نے بھی دیکھا۔انہوں نے آئی جی پولیس، ڈی آئی جی پولیس، اور تھانہ دھیرکوٹ کے ایس ایچ او سے کارروائی کا مطالبہ کیا۔ اور کہا کہ اگر ایف آئی آر میں درج ملزمان کے خلاف کارروائی نہ کی گئی تو حالات کی خرابی کی تمام تر ذمہ داری انتظامیہ پر ہو گی۔ چونکہ اس طرح کے واقعات یہ لوگ اکثر بدمعاشی کے زور پر کر تے ہیں۔ اگر ان کی روک تھام نہ کی گئی تو آئندہ حالات مزید خراب ہوںگے۔ علاقے میں تصادم کا خطرہ۔کسی بھی وقت کوئی بھی بڑا واقعہ رونما ہو سکتا ہے۔اس واقعہ کی ایف آئی آر درج کروائے تین روز ہوگئے کوئی کارروائی نہیں ہوئی، 7آدمیوں کو پولیس گرفتار کرے۔ادریس عباسی ولد کاظم خان، امجد علی، کاشف، رضوان، سلطان اور ایک نامعلوم شخص کا نام ایف آئی آرمیں درج ہے۔ملزمان اسلحہ سر عام لے کر علاقے میں گھوم رہے ہیں اور لوگوں کا حراساں کرنا ان کا معمول ہے۔ یونین کونسل ساہلیاں کے صدر سردار ظریف عباسی کے بیٹے کے ساتھ سردار ادریس کاظم کا تنازعہ شدت اختیار کر گیا۔ میری ایکسیویٹر مشینیں ٹھیکیدار ادریس کے کام پر لگی ہوئی تھیں۔ ایک پاچھیوٹ اور ایک نڑول۔ میرے بیٹے سردار شہباز ظریف کے ساتھ گالم گلوچ شروع کر دی جو میرے بیٹے کو اغواہ کر کے اپنے گھر مناسہ لے گئے۔ وہاں مارا پیٹا۔ جب ان کو علم ہوا کہ ساہلیاں کے لوگ آ رہے ہیں تو وہ اسے کوہالہ چوکی پر لے گئے۔ جب وہاں پہنچے تو میرے بیٹے کو شدید زدوکوب کیا اور بیٹے کی حالت غیر ہوچکی تھی۔ اسی دوران میرے بیٹے سے ساڑھے تین لاکھ روپے رقم لے کر ملزمان فرار ہو گئے۔چوکی پولیس کوہالہ راجہ گلداد بھی ان بدمعاش ملزمان کی پشت پناہی کر رہے ہیں۔ان ملزمان نے اسلحہ لے کر علاقے میں خوف و ہراس قائم کر رکھی ہے اور ساہلیاں کے لوگ مشتعل ہیں۔اس موقع پر درجنوں افراد دھیرکوٹ آئے ہوئے تھے جو سخت مشتعل تھے۔جن کی نمائندگی کرتے ہوئے سردار ظریف عباسی صدر مسلم کانفرنس یونین کونسل ساہلیاں، سردار تجمل عباسی، نمبر دارسلطان محمد خان، سردار زرین خان سابق ڈسٹرکٹ کونسلر ، سردار حمید خان، حاجی لیاقت خا، محمد نعیم خان اور دیگر بڑی تعداد میں ساہلیاں سے تعلق رکھنے والے افراد نے دھیرکوٹ میں پریس کانفرنس کی۔اس موقع پر انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنی طرف سے اس تصادم کو ٹالنے کی بھرپور کو شش کی۔ کوہالہ میں بھی بڑا تصادم ہو سکتا تھا لیکن ہم نے بچ بچائو کرایا اور معاملہ تھانے دھیرکوٹ لائے۔انتظامیہ کا کام تھا کہ وہ اس ظلم اور زیادتی کے خلاف قانون حرکت میں لاتی اور نامزد ملزم کو گرفتار کیا جاتا لیکن آج تک ہمارے ساتھ انصاف نہیں کیا گیا۔ شہبازظریف

تازہ ترین خبریں