01:06 pm
 وائس چانسلر جامعہ کشمیر کی گرفتاری کیلئے احتساب بیورو میں درخواست دائر

وائس چانسلر جامعہ کشمیر کی گرفتاری کیلئے احتساب بیورو میں درخواست دائر

01:06 pm

وائس چانسلر جامعہ کشمیر کی گرفتاری کیلئے احتساب بیورو میں درخواست دائر کلیم عباسی پر اختیارات سے تجاوز،یونیورسٹی کے اثاثوں کی منتقلی کے الزامات ہیں مظفرآباد(سٹاف رپورٹر)وائس چانسلر جامعہ کشمیر کی گرفتاری کیلئے احتساب بیورو میں درخواست دائر،صدر آزادکشمیر سردار مسعود خان کو بھی فریق بنا کر کارروائی کی استدعا کردی گئی،ڈاکٹر کلیم عباسی پر اختیارات سے تجاوز،عزیز و اقارب کو نوازے،غیر قانونی تقرریوں،تعیناتیوں ،فیسوں میں ناجائز اضافہ ،یونیورسٹی کا ماحول خراب کرنے ،یونیورسٹی کے اثاثوں کی منتقلی کے الزامات،احتساب بیورو میں شہریوں کی جانب سے جمع کروائی گئی سابق درخواستوں پر فوری بنیادوں پر ٹرائل کیا جائے، شہری جاوید احمد میر نے احتساب بیورو میںدائر کردہ درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ ڈاکٹر کلیم عباسی نے آزادکشمیر یونیورسٹی کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا ہے ،موصوف بڑے تعلیمی ادارے میں گروہی تعصبات پھیلانے کے مرتکب ہو چکے ہیں ،اس لیے مزید عہدے پررہنے کے اہل نہیں،ٹی ٹی ایس پرتعیناتی کے بعد اب غیر قانونی طور پربی پی ایس کی پنشن وصول کرنے کی کارروائی کررہے ہیں،صدر آزادکشمیر مکمل تحفظ فراہم کر رہے ہیںجس پر تحقیقات از حد ضروری ہیں،درخواست میں کہا گیا ہے کہ وائس چانسلر نے سینئر موسٹ پروفیسر ڈاکٹر صادق الرحمن کو بائی پاس کر کے جونیئر پروفیسر ڈاکٹرمرتضیٰ کو ڈین سائنسز تعینات کیا جو تھرڈ ڈویژن ڈگری کے حامل ہیں،ڈاکٹر محمد قیوم خان کو ڈین انجینئرنگ کا چارج دیا گیا جو زراعت کے ڈگری ہولڈر ہیں،سردار ظفر کو ڈپٹی رجسٹراراکیڈمک، جنرل اور چیف سیکورٹی آفیسر کے چارج سونپے،ڈاکٹر قیوم خان کے قریبی رشتہ دار ڈاکٹرجاوید خان کو غیر قانونی طور پر ڈیپوٹیشن پر لاکر یونیورسٹی میں مستقل کرنے کی کارروائی جاری ہے،اسی خاطر انھیں ماس کمیونیکشن کے شعبے کا اضافی چارج بھی سونپا حالانکہ یونیورسٹی میں سینئر موسٹ پروفیسر موجود ہیں ،ڈاکٹر جاوید خان کو ماس کمیونیکشن کا چارج دے کر وائس چانسلر خلاف میرٹ داخلے اور غیر قانونی تقرریاں کرنا چاہتے ہیں،ڈاکٹر قیوم کے ہی ایک اور قریبی عزیز کامران خان کو اے ڈی پلاننگ کا اضافی چارج سونپا ،ان تمام تعیناتیوں کے بعد وائس چانسلر نے پرتکلف دعوت بھی کھائی جس کی تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل ہو چکی ہیں،وائس چانسلر نے شعبہ اردو میں مری سے ایک قریبی عزیز کو لاکر کنٹریکٹ پر تعینات کیا ،مسعود عباسی وہاں سکول میں تعینات ہیں اور وہاں سے چھٹی لے کر آزادکشمیر یونیورسٹی میں تقرری کروا لی،شعبہ اردو میں ہی بغیر اشتہار ایک جونیئر کلرک کی خلاف میرٹ تقرری کی، وائس چانسلر نے اسے سے پہلے بھی اپنے ایک قریبی عزیز کو کیو ای سی میں گریڈ 17اور گریڈ18کے دو چارج دیئے ہوئے ہیں،پبلک ریلیشنز آفیسر کی ڈائریکٹ کوٹہ اسامی پر بھی اضافی چارج سونپا گیا،علاوہ ازیں دیگر شعبہ جات میں بھی بغیر اشتہار تقرریوں کا عمل جاری ہے ،مزید عزیز و اقارب کو ایڈجسٹ کرنے کیلئے سپیشل کلاسز کے نام پر عوام کو لوٹنے کیلئے اشتہار جاری کردیا،وائس چانسلر آزادکشمیر یونیورسٹی کے اثاثوں کو منتقل کرنے کی سازشیں کر رہے ہیں،اسی طرح ایک طرف دھڑا دھڑ غیر قانونی تقرریاں کر رہے ہیں اور دوسری جانب فیسوں میں از خود 100فیصد اضافہ کر کے عام آدمی پر تعلیم کے دروازے بند کررہے ہیں،ایسی صورتحال میں آزادکشمیر کا اہم ترین تعلیمی ادارہ دیوالیہ ہو چکا ہواہے ،صدر آزادکشمیر سردار مسعودخان کی کلیم عباسی کو مکمل آشیر باد حاصل ہے جس کی وجہ سے جملہ غیر قانونی اقدامات پروہ مکمل خاموش ہیں ،درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ آزادجموں وکشمیر یونیورسٹی میں ہونے والے غیر قانونی اقدامات کا فوری نوٹس لیا جائے اور کلیم عباسی کو فوری طور پر عہدے سے برطرف کر کے گرفتار کیا جائے تاکہ ریاست کا بڑا تعلیمی ادارہ مزید تباہی سے بچ سکے،درخواست میں مزید استدعا کی گئی ہے کہ قبل ازیں شہریوں کی جانب سے وائس چانسلر کے غیر قانونی اقدامات کے خلاف متعدد درخواستیں احتساب بیورو میں زیر کار ہیں جن پر فوری بنیادوںپر ٹرائل کیا جائے بصورت دیگر ادارہ کی تباہی کا ذمہ دار احتساب بیورو بھی برابر کا ہوگا۔ جامعہ کشمیر

تازہ ترین خبریں