12:25 pm
ٍجامعہ کوٹلی میں طالبہ کو حراساں کیاجانا قابل مذمت ہے،عبدالرحیم

ٍجامعہ کوٹلی میں طالبہ کو حراساں کیاجانا قابل مذمت ہے،عبدالرحیم

12:25 pm

ٍجامعہ کوٹلی میں طالبہ کو حراساں کیاجانا قابل مذمت ہے،عبدالرحیم واقعہ میں ملوث پروفیسر سعید کو ملازمت سے فارغ کرکے فوری کارروائی کی جائے عباسپور (نمائندہ خصوصی)جامعہ کوٹلی میں طالبہ کو حراساں کیاجانا قابل مذمت ہی نہیں قابل ا فسوس ہے فل فور نوٹس لیا جائے ورنہ شدید ردعمل دیا جائے گا چیئر مین جموں کشمیر سٹو ڈنٹس لبریشن فرنٹ ملک عبدالرحیم ایڈوکیٹ،جموں کشمیر سٹوڈنٹس لبریشن فرنٹ کے مرکزی رہنمائوں نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آئے روز جماعت میں طالبات کو حراساں کیا جا رہا انہیں تعلیم کے بجائے ہوس کی بھینٹ چڑھایا جا رہا ہے اور اس گھنائونے فعل میں اساتذہ کرام ملوث ہیں جو کے ایک مقدس پیشے کے ساتھ منسلک ہیں اور اس پر حکومت اور انتظامیہ خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہے ہیں جو کہ تشویش ناک ہے اور والدین اب بچوں کو اداروں میں بھیج کر یہ سوچنے پر مجبور ہو جاتے ہیں کے وہ سلامت واپس لو ٹے گے بھی یا نہیں ان سب واقعات میں ملوث لوگوں کے خلاف جب تک سخت قانونی کاروائی عمل میں نہیں لائی جا تی تب تک ان کی روک تھام نا ممکن ہے ۔ان خیالات کا اظہار جموں کشمیر سٹوڈنٹس لبریشن فرنٹ کے مرکزی رہنمائوں چئیر مین ملک عبدالرحیم ایڈو کیٹ ،سکرٹری جنرل شاہجان ارشد ،چیف آرگنائزعامر،ترجمان غلام اویس،سکرٹری مالیات عبید شبیرودیگر رہنمائوں نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیاایسا واقعہ جب بھی رونما ہوتا ہے ادارے کی انتظامیہ اس میں ملوث درندے کو یہ پیغام اپنی خاموشی سے دے رہی ہوتی ہے تم کالا کرو یا سفید ہم تمھارے ساتھ ہیں اور ہم سمجھتے ہیں یہ بھی جرم ہے اور اس موقع پر کہا کے اس سے قبل بھی کئی واقعات رونما ہو چکے اور کئی بار طالبات کی جانیں بھی گئی مگر ان کو خاموش کروا دیا گیا اور اس سے قبل جامعہ مظفرآباد میں ایک طالب علم نے ایک ٹیچر کی طالبات کے ساتھ غیر اخلاقی رویہ اور مشکوک حرکتوں کی نشاندہی کروائی تو اس پر انکوائری لگا کر جامعہ سے نکال دیا گیا اب ایسا ہی اگر کوٹلی میں بھی آواز اٹھانے والوں کے ساتھ کیا جاتا ہے تو اس کا سخت ردعمل آئے گا اور انھوں نے چانسلر وصدر آزاد کشمیر ،وزیر اعظم آزاد کشمیر اور یو نیورسٹی انتظامیہ سے فل فور نوٹس لینے کی اپیل کی اور کہا کے پروفیسر سعید جو کے اس واقعہ میں ملوث ہے اس کو ملازمت سے فارغ کر کے اس کے خلاف حراسگی ایکٹ کے تحت کاروائی کی جائے اور مستقبل میں ایسے واقعات سے بچنے کے لئے ہر ادارے میں ایسی کمیٹیاں تشکیل دی جائیں جو ایسے واقعات کی روک تھام کے لئے کام کریں تاکہ بچوں کا مستقبل محفوظ بنایا جاسکے بصورت دیگر جموں کشمیر سٹوڈنٹس لبریشن فرنٹ کے خلاف بھرپور ردعمل دے گا جو کے ہمارا سیاسی اور اخلاقی فریضہ ہے ۔ عبدالرحیم

تازہ ترین خبریں