10:40 am
گندم کی پیداوار میں اضافے، گلگت بلتستان میں ماہی پروری سمیت آبی نظام ..

گندم کی پیداوار میں اضافے، گلگت بلتستان میں ماہی پروری سمیت آبی نظام ..

10:40 am

گلگت ۔  وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ گندم کی پیداوار میں اضافے، گلگت بلتستان میں ماہی پروری، دیہی علاقوں میں پولٹری کو فروغ دینے، گائے کے بچھڑے کی تحفظ اور زرعی شعبے کو فروغ دینے کیلئے آبی نظام کو بہتر بنانے کے مختلف منصوبے شروع کئے جائیں گے جس کا مقصدمقامی کسانوں کی خوشحالی اور زرعی اور ڈیری کے شعبے میں خودکفالت کی منزل حاصل کرنا ہے۔اس حوالے سے گندم کی پیداوار میں اضافے اور مصدقہ اور معیاری بیج کی فراہمی یقینی بنانے اور زرعی شعبے کے فروغ کیلئے جدید مشینری متعارف کرانے کیلئے 16 کروڑ کی لاگت سے منصوبہ شروع کیا جائے گا جس سے مقامی کسانوں کی خوشحالی میں معاون ثابت ہوگا۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے سیکریٹری زراعت کو ہدایت کی ہے کہ اجناس کے غیر معیاری بیج کی فروخت کی حوصلہ شکنی کیلئے بھی اقدامات کئے جائیں۔
 
ان خیالات کا اظہار وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے گندم اور زرعی شعبے کے فروغ کیلئے 16 کروڑ، مچھلیوں کی افزائش کیلئے شروع کئے جانے والا 49 کروڑ 35 لاکھ کا منصوبہ اور دیہی علاقوں میں پولٹری کے فروغ کیلئے شروع کئے جانے والا منصوبہ 7 کروڑ 77 لاکھ 23ہزار اور بچھڑوں کی تحفظ کیلئے شروع کئے جانے والامنصوبہ 19 کروڑ 3 لاکھ52 ہزار اسی طرح زرعی شعبے کو فروغ دینے کیلئے آبی نظام کی بہتری کیلئے شروع کئے جانے والا منصوبہ 4 ارب 95 کروڑ 67 لاکھ کے حوالے سے دیئے جانے والے بریفنگ کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا کہ حکومت نے زرعی شعبے کو فروغ دینے اور مقامی کسانوں کے خوشحالی کیلئے بھرپور اقدامات کئے ہیں۔ گلگت بلتستان میں زرعی اور ڈیری کے شعبے کو فروغ دے کر خودکفالت کی منزل حاصل کی جاسکتی ہے جس کیلئے مختلف پروگرامز شروع کئے جاچکے ہیں۔ زرعی شعبے میں نئے ٹیکنالوجی کو متعارف کرانے سے پیداوار میں اضافے کو ممکن بنایا جاسکے گا۔غیرمعیاری بیج اور کیڑے مار ادویات کے فروخت کی روک تھام یقینی بنائی جائے گی۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاکہ گلگت بلتستان کو آرگینک اجناس کی پیداوار کے حوالے سے ماڈل صوبہ بنایا جاسکتا ہے جس کیلئے درکار قانون سازی کی جائے گی۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاکہ ماہی پروری کے حوالے سے گلگت بلتستان انتہائی موزوں علاقہ ہے جس کو مدنظر رکھتے ہوئے ماہی پروری کے فروغ کیلئے حکومت اقدامات کررہی ہے۔جس کی وجہ سے پرائیویٹ شعبے میں مچھلیوں کی افزائش کا رجحان بڑھ رہاہے۔ چار سال قبل صرف چار پرائیویٹ فش فارمز تھے اس وقت 127 پرائیویٹ فش فارمز موجود ہیں۔ جس کی تعداد میں بتدریج اضافہ ہورہاہے۔ ماہی پروری کو فروغ دینے کیلئے پرائیویٹ فش فارمز بنانے والوں کو سستے نرخوں پر مچھلیوں کے بچے اور مفت فیڈ فراہم کی جائے گی۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے سیکریٹری زراعت کو ہدایت کی ہے کہ مچھلیوں کے مختلف اقسام متعارف کرانے کیلئے بھی اقدامات کئے جائیں۔ دیہی علاقوں میں پولٹری کو فروغ دینے کیلئے کم قیمتوں پر مرغیاں فراہم کی جائیں گی تاکہ گھریلو سطح پر پولٹری کے شعبے کو فروغ دیا جاسکے اور عوام کی زندگیوں میں خوشحالی لائی جاسکے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاکہ صوبے میں پولٹری کے شعبے کے فروغ کیلئے بلتستان اور دیامر میں ہیچریز بنائے جائیں گے۔ زرعی شعبے کے فروغ کیلئے آبی نظام کو بہتر بنایا جائے گا۔ محکمہ زراعت، ای ٹی آئی اور جی بی آر ایس پی باہمی تعاون سے ایری گیشن کے نظام کو بہتر بنانے کیلئے اقدامات کریں۔

تازہ ترین خبریں