09:21 am
  اچھا ہوتا اگر آپ بھارت کی جگہ اپنے ملک پر فوکس کرتے

اچھا ہوتا اگر آپ بھارت کی جگہ اپنے ملک پر فوکس کرتے

09:21 am

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان کی کامیاب خارجہ پالیسی اور وزیراعظم عمران خان پر اثر شخصیت کے سامنے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی ڈھیر ہو گئے۔کہ نریندر مودی نے اقوام متحدہ میں اپنی تقریر میں ایک بار بھی پاکستان کا ذکر نہیں کیا۔جب کہ وزیراعظم عمران خان نے پوری دنیا کے سامنے بھارتی مظالم کا پردہ چاک کیا۔اور مودی کا نام لیتے ہوئے دنیا کو بتایا کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں مسلمانوں کے قتل عام کے ذمہ دار ہیں۔وزیراعظم عمران خان کی تقریر میں بھارت اور مودی کے ذکر نے بھارتی میڈیا کو آگ بگولا کر دیا۔
بھارتی صحافی نے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے کہا کہ اچھا ہوتا اگر آپ کا فوکس بھارت کہ بجائے اپنے ملک پر ہوتا۔جس پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ اچھا تو بہت ہوتا اگر مقبوضہ کشمیر میں کرفیو اٹھ جاتا۔اچھا تو پھر بھی ہوتا اگر وہاں بچے سکول جا رہے ہوتے۔اچھا تو بہت ہوتا اگر مقبوضہ کشمیر میں مریضوں کو اسپتالوں تک رسائی مل جاتی جو کہ نہیں مل رہی۔بہت اچھا ہوتا اگر مقبوضہ کشمیر میں جو پیلٹ گن کا استعمال ہو رہا ہے وہ نہ ہوتا۔شاہ محمود قریشی کے جواب نے بھارتی صحافی کی بولتی بند کر دی۔.۔ جب کہ دوسری جانب اپنی تقریر میں پاکستان کا ذکر نہ کرنے پر بھارتی وزیراعظم نریندر مودی پر اپنے ملک میں خوب تنقید کی جا رہی ہے۔ نریندر مودی کی بھونڈی تقریر پر بھارت میڈیا پھٹ پڑا ہے اور توپوں کا رخ اپنے ہی وزیراعظم کی طرف کر دیا۔بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ گذشتہ 8 سالوں میں پہلی بار ہوا ہے کہ کسی بھارتی وزیراعظم یا وزیر خارجہ نے اقوام متحدہ میں تقریر کی ہو اور پاکستان کا ذکر تک نہ کیا ہو۔