09:15 am
نرسوں کی ڈانس اور ٹھمکوں کی ویڈیوسوشل میڈیا پر وائرل

نرسوں کی ڈانس اور ٹھمکوں کی ویڈیوسوشل میڈیا پر وائرل

09:15 am

لاہور ۔ یہی نرسیں اور ڈاکٹرز ہیں جو سڑکوں پر دھمال ڈالے ہوئے ہیں کہ ہمارے مطالبات منظور کیے جائیں اور دوسری طرف ہسپتال کے اس وارڈ میں جہاں مریض زندگی اور موت کی کشمکش میں پڑے ہوتے ہیں یہ اپنے بھاری بھرکم قدموں سے فلور پر زلزلہ ڈھانے کی کوششوں میں مصروف پائی جاتی ہیں۔اکثر شکایات ملتی ہیں کہ نرسز کا مریضوں کے ساتھ رویہ درشت ہوتا ہے اور وہ ہر وقت موبائل پر ٹچ ٹچ کرتی پائی جاتی ہیں۔یقیناً نرسز مریضوں کی دیکھ بھال کم اور سوشل میڈیا پر ٹک ٹک زیادہ کرتی ہوں گی


https://youtu.be/poP9EHLg_eA
جس کا عملی مظاہرہ بھی اب سوشل میڈیا کی زینت بن چکا ہے۔کراچی میں صنعتی مزدوروں کیلئے قائم سب سے بڑے سرکاری اسپتال میں ڈانس پارٹی کی مبینہ ویڈیو منظر عام پر آگئی جس میں نرسیں کام کے بجائے رقص میں مصروف ہیں۔سوشل میڈیاپر عام ہونے والی ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ کراچی کے اہم صنعتی علاقے سائٹ میں قائم ولیکا سوشل سیکیورٹی اسپتال میں نرسیں مریضوں کی دیکھ بھال کے بجائے رقص میں مصروف ہیں اور اسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ (ایم ایس)سمیت دیگر انتظامی افسران بھی تماشا دیکھنے میں مصروف ہیں۔ویڈیو میں رقص دیکھنے والوں میں اسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر اعظم سلہری، ڈپٹی ایم ایس ڈاکٹر غلام مصطفیٰ ابڑو اور دیگر انتظامی افسران شامل ہیں۔سوشل میڈیا پراسپتال میں نرسوں کے رقص کی ویڈیوعام ہوئی تو سندھ حکومت کو ہوش آیا۔صوبائی وزیر محنت سعید غنی نے اسپتال کے ایم ایس اور ڈپٹی ایم ایس کو عہدوں سے ہٹا کر کمشنر سندھ ایمپلائز سوشل سیکیورٹی انسٹی ٹیوشن کے دفتر رپورٹ کرنے کا حکم دے دیا جبکہ اسپتال کے میٹرن، دو نرسوں اور نرسنگ ایڈ خورشید کو معطل کر دیا۔وزیر محنت نے معاملے کی تحقیقات کیلئے کمیٹی قائم کر کے تین دنوں میں رپورٹ بھی طلب کر لی ہے۔دوسری جانب کمشنر سیسی کاشف گلزار شیخ کے مطابق ایک ملازم کی ریٹائرمنٹ پر تقریب کا اہتمام کیا گیا تھا تاہم تحقیقات میں صورتحال واضح ہو جائے گی۔

تازہ ترین خبریں