02:38 pm
امریکہ سے جنگ جیتنےوالے عمران خان کیساتھ کھڑے ہیں مولانافضل الرحمٰن کے آزادی مارچ کی حمایت نہیں کریں گے

امریکہ سے جنگ جیتنےوالے عمران خان کیساتھ کھڑے ہیں مولانافضل الرحمٰن کے آزادی مارچ کی حمایت نہیں کریں گے

02:38 pm

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )مولانافضل الرحمٰن جہاں عالمی قوتوں کےہاتھوں استعمال ہورہے ہیںاوران کے اس مارچ کوبیرونی ممالک کی حمایت حاصل ہونے کی باتیں کی جارہی ہیں وہیں پرافغان طالبان کے حوالے سے بھی باتیں کی جارہی ہیں کہ افغان طالبان عمران خان کی حکومت کوگرتے نہیں دیکھناچاہتےیہ ان کی خواہش ہے اوروہ چاہتے ہیں کہ اس حکومت کولمباٹائم ملےملک میں سن 2000اس سے کچھ عرصہ پہلے اوراس کے بعدملک میں جتنی بھی حکومتیں آئی ہیں
انہوں نے ملک کونقصان پہنچانےمیں کوئی کسرنہیں چھوڑی عمران خان کی حکومت وہ واحد حکومت ہے جنہوں نے افغانستان کے حوالے سے ایک مشورہ دیاکہ جوافغانستان میں لڑنے والے ہیں وہ اس لیے لڑ رہے ہیںکیونکہ امریکہ نے ا ن کے ملک پرقبضہ کیاہواہےاوروہ بالکل صحیح جواب دے رہےہیں۔2011میں عمران نے کہاتھاکہ افغان معاملے کاسیاسی حل نکالاجائے فوجی طاقت کااستعمال کسی مسئلے کاحل نہیں۔ ملک میں اب افراتفری پھیلانےکی کوشش کی جارہی ہےدوسری جانب افغان طالبان چاہتے ہیں کہ عمران خان کی حکومت رہے کیونکہ عمران خان امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ پرجتناپریشرڈال سکتے ہیں وہ کوئی دوسرانہیں ڈال سکتا۔افغان طالبان چاہتے ہیں کہ روس ،ترکی ،ایران چین اورجوبھی ممالک ان کے ساتھ آناچاہتے ہیں وہ آئیں اورہماراساتھ دیں ہم اپنی حکومت ڈکلیئرکریں۔

تازہ ترین خبریں