10:28 am
پنجاب پولیس فرعون بن گئی ، چھلی کے پیسے مانگنے پر پولیس اہلکار آپے سے باہر

پنجاب پولیس فرعون بن گئی ، چھلی کے پیسے مانگنے پر پولیس اہلکار آپے سے باہر

10:28 am

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پولیس نے منفی انداز میں خبروں میں رہ کر اپنی کارکردگی اور ساکھ کو کافی حد تک متاثر کیا لیکن اس کے باوجود بھی پولیس اہلکار سُدھرنے کی بجائے مزید بگڑ گئے۔ قانون کے رکھوالے ہی قانون سے کھیلنے لگیں تو پھر شہریوں سے کیا اُمید کی جا سکتی ہے۔ ایسا ہی ایک واقعہ حال ہی میں لاہور کے علاقہ گلبرگ میں پیش آیا جہاں چھلی کے پیسے مانگنے پر پولیس اہلکار آپے سے باہر ہو گئے اور چھلی فروش سے ناروا سلوک کیا۔ پولیس اہلکاروں نے چھلی کے پیسے مانگنے پر ریڑھی میں موجود نمک میں پانی ملا دیا۔ ریڑھی بان کا کہنا ہے کہ پولیس مکمل طور پر مفت خور ہیں۔ ہم سے سودا لیتے ہیں لیکن پیسے نہیں دیتے ،
ہم دن بھر یہاں مزدوری کرتے اور دو وقت کی روٹی کمانے کی کوشش کرتے ہیں لیکن ان کو ذرہ برابر بھی خیال نہیں آتا۔ پیسے مانگنے پر پولیس اہلکار اپنا دھونس جماتے ہیں اور اُس کے بعد آپے سے باہر بھی ہو جاتے ہیں۔ ریڑھی بان کا کہنا ہے کہ میں نے پولیس اہلکاروں سے جب پیسے مانگے تو نہ صرف انہوں نے مجھے غلیظ گالیاں دیں، بلکہ مجھے تشدد کا نشانہ بھی بنایا۔ یہی نہیں ریڑھی میں موجود نمک اور آگ پر پانی ڈال کر میرا کام بھی بند کر دیا۔ ریڑھی بان نے پولیس کے اعلیٰ افسران سے اپیل کی کہ وہ پولیس اہلکاروں کے اس ناروا سلوک کا سختی سے نوٹس لیں اور ایسے اہلکاروں کے خلاف کارروائی کریں۔ ریڑھی بان کے ساتھ پولیس اہلکاروں کے اس ناروا سلوک کے بعد عوام نے بھی لاہور پولیس کو تنقید کا نشانہ بنانا شروع کردیا ہے۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ جب قانون کی رکھوالی پولیس ہی شہریوں پر تشدد کرے گی اور ان پر ظلم کرے گی تو پھر شہری اپنی فریاد لے کر کس کے پاس جائیں گے؟ پولیس کی جانب سے ریڑھی بان کے ساتھ کیا جانے والا یہ سلوک افسوسناک ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔