12:01 pm
مسلم لیگ کے 90فیصد رہنمائوں نے صاف انکار کر دیا

مسلم لیگ کے 90فیصد رہنمائوں نے صاف انکار کر دیا

12:01 pm

اسلام آبا د(مانیٹرنگ ڈیسک) نواز شریف کی یہ بات ہم نہیں مانیں گے ، مسلم لیگ کے 90فیصد رہنمائوں نے صاف انکار کر دیا،جیل میں موجود سابق وزیر اعظم کو بڑا دھچکا ۔۔۔مسلم لیگ ن نے مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ اور دھرنے کی مکمل حمایت کا اعلان کر رکھا ہے جس کے بعد سے دھرنے کی کامیابی کے لیے حکمت عملی بنانے پر بھی غور کیا جا رہا ہے۔ مولانا فضل الرحمان نے نوازشریف کو پیغام دیا ہے کہ اسلام آ باد دھرنا شروع ہونے پر اگر ہمارے مطالبات نہیں مانے جاتے تو اسمبلیوں سے استعفے دینے کا آ پشن بھی رکھا جائے۔با وثوق ذرائع کے مطابق نواز شریف، مولانا فضل الرحمان کے اس آ پشن کے لیے تیار ہیں ،
انہوں نے اس حوالے سے رضامندی ظاہر کرتے ہوئے اس سلسلہ میں اپنے چند قریبی ساتھیوں کو ٹاسک بھی دیا تھا کہ وہ لیگی اراکین اسمبلی سے ان کی رائے طلب کریں۔ جس پر معلوم ہوا کہ مسلم لیگ ن کے نوے فیصد اراکین اسمبلی نے استعفے دینے کے آپشن سے واضح انکار کر دیا ہے۔ جبکہ دس فیصد اراکین اسمبلی نے اس معاملے پر سوچ بچار کے لیے وقت مانگ لیا ہے۔ شہبازشریف سمیت پارٹی کے سینئیر رہنما بھی اسمبلیوں سے استعفے دینے کے لیے تیار نہیں ہیں۔ اس ضمن میں انہوں نے واضح کہہ دیا ہے کہ مولانا فضل الرحمان کے احتجاج پر جانے کے فیصلے کو تو ہم نے مجبوراََ مان لیا لیکن اسمبلی سے استعفے دینا اپنی سیاست ختم کرنے کے مترادف ہے ۔ اسمبلیوں سے استعفے صرف اسی صورت میں دئے جائیں اگرپاکستان پیپلزپا رٹی بھی استعفے دے اور سندھ میں اپنی حکومت ختم کرے کیونکہ اسی صورت میں اسمبلیوں سے استعفے دینے کا فائدہ ہو گا۔ لیکن اگر ایسا نہیں ہو تا تو ہماری چھوڑی نشستوں پرپاکستان تحریک انصاف یا پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما جیت جائیں گے اور ہم پارلیمنٹ سے باہر ہو جائیں گے ۔ لیگی رہنماؤں کا مؤقف ہے کہ مولانا فضل الرحمان خود تو اسمبلی سے باہر ہیں اور اب ہمیں بھی اسمبلی سے باہرکرنا چاہتے ہیں۔ میڈیا رپورٹ کے مطاب قنوازشریف جو ہر صورت میں حکومت کا خاتمہ چاہتے ہیں، کے حوالے سے بھی ن لیگ کے اندر اب اہم رہنما یہ کہنے لگے ہیں کہ یہ خود تو ڈوبے ہیں ہمیں بھی لے ڈوبیں گے ۔ فضل الرحمان کی خواہش کو پورا کرنے کے لئے نواز شریف آ خری حد تک جانا چاہتے ہیں لیکن لیگی اراکین پارلیمنٹ کسی صورت استعفے نہیں دیں گے ۔ شہباز شریف جو آ ج دھرنے کی حمایت کا اعلان کرنے جا رہے ہیں انہوں نے بھی اعلان کرنے کا فیصلہ نوازشریف کی جانب سے سخت ہدایات اور پیغام، کہ اگر آ پ اعلان نہیں کریں گے تو پھر تمام اعلان کیپٹن (ر) صفدر ہی کریں گے، کے بعد کیا۔ کیپٹن (ر) صفدر کے اعلان کہ حسین نواز مولانا سے رابطہ رکھیں گے اور نواز شریف کا پیغام اور اگلا لائحہ عمل بھی دیں گے ، پر بھی شہباز شریف نے ناراضگی کا اظہار کیا ۔ جبکہ دوسری جانب پاکستان پیپلزپا رٹی کے اہم رہنماؤں نے بھی استعفوں کے آپشن کی مخالفت کی اور کہا کہ اس طرح ہمارے ہاتھ سے سندھ کی حکومت بھی جائے گی۔