11:53 am
اسلام آباد پہنچتے ہی بڑی فتح مل گئی ، ہائیکورٹ نے مولانا کے حق میں فیصلہ سنادیا، آزادی مارچ میں جشن کا سماں

اسلام آباد پہنچتے ہی بڑی فتح مل گئی ، ہائیکورٹ نے مولانا کے حق میں فیصلہ سنادیا، آزادی مارچ میں جشن کا سماں

11:53 am

پشاور (مانیٹرنگ ڈیسک) اسلام آباد پہنچتے ہی بڑی فتح مل گئی ، ہائیکورٹ نے مولانا کے حق میں فیصلہ سنادیا، آزادی مارچ میں جشن کا سماں۔۔۔مولانا فضل الرحمن کی قیادت میں آزادی مارچ اسلام آباد پہنچ چکا ہے۔ مولانا فضل الرحمن کے اس بار سیاسی تیور کچھ خطرناک دکھائی دے رہے ہیں، اگرچہ بعض حلقوں کے خیال میں اُنہیں کہیں نہ کہیں سے اس مارچ اور ممکنہ دھرنے کے لیے اشیر باد بھی حاصل ہے۔ پی ٹی آئی حکومت کے ماتحت ادارے پیمرا کی جانب سے مولانا فضل الرحمن کی تقاریر نشر کرنے پر پابندی عائد کی گئی ہے، جس کے باعث کوئی بھی چینل مولانا کی تقریر نہیں دکھا رہا۔پیمرا کی جانب سے عائد اس پابندی کے خلاف پشاور ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی گئی تھی۔
اس حوالے سے مولانا فضل الرحمن کو ایک بڑی کامیابی حاصل ہو گئی ہے۔ پشاور ہائی کورٹ نے جے یوآئی (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کی تقاریر نشر نہ کرنے کا اقدام غیرآئینی وغیرقانونی قرار دے دیا ہے۔تفصیلات کے مطابق پشاورہائیکورٹ نے آزادی مارچ کے دوران مولانا فضل الرحمن کی تقاریر اور پریس کانفرنس نشر نہ کرنے کے اقدام کو غیر آئینی اور غیر قانونی قرار دے دیا ہے اور اس سلسلے میں پیمرا کی جانب سے جاری کیے گئے زبانی حکم نامے کو کالعدم قرار دے دیا ہے۔چیف جسٹس وقاراحمد سیٹھ کی جانب سے جاری تفصیلی فیصلے میں قراردیا گیا کہ پیمرا کے سیکشن 27میں واضح ہے کہ اگر کوئی پاکستان کے نظریے، نفرت آمیز تقاریر، لوگوں میں اشتعال اور قومی سلامتی سے متعلق حالات خراب کرنے کی کوشش کریگا تو اسی صورت میں پیمرا ایسے افراد کی تقاریر ودیگر تقریبات پر پابندی لگا سکتا ہے۔فیصلے میں مزید کہا گیا ہے کہ پیمرا واقعی اس طرح کی کوئی پابندی لگائے تو اس کے اپنے قوانین موجود ہیں جس میں وجوہات دینی پڑیں گی کہ کیوں یہ پابندی لگائی جارہی ہے۔اس پابندی کے خاتمے سے مولانا فضل الرحمن کو سیاسی طور پر بڑی کامیابی حاصل ہونے کا امکان ہے۔ سیاسی تجزیہ کاروں کے مطابق اس پابندی کے ختم ہونے کے بعد مولانا فضل الرحمن اپنی حکومت مخالف مہم کو زیادہ موثر انداز سے چلا سکتے ہیں۔

تازہ ترین خبریں