12:36 pm
ہم حکومت کیخلاف علیحدہ سے تحریک چلائیں گے، پیپلزپارٹی نے مولانا کیساتھ’ہاتھ ‘کردیا ،

ہم حکومت کیخلاف علیحدہ سے تحریک چلائیں گے، پیپلزپارٹی نے مولانا کیساتھ’ہاتھ ‘کردیا ،

12:36 pm

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) میڈیا رپورٹس میں بتایا جا رہا ہے کہ پیپلز پارٹی نے مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ سے خود کو الگ تھلگ کر لیا ہے اور اپنا علیحدہ احتجاجی ایجنڈا تشکیل دیا ہے جس پر اگلے چند روز میں عمل درآمد شروع ہو جائے گا۔ میڈیا ذرائع کے مطابق بلاول بھٹو موجودہ حکومت کے خلاف الگ سے تحریک چلانا چاہتے ہیں اور اس میں وہ کسی مذہبی یا سیاسی جماعت کی شمولیت نہیں چاہتے، چاہے وہ ن لیگ ہو یا مولانا فضل الرحمن کی جمعیت العلمائے اسلام (ف) یا عوامی نیشنل پارٹی
۔ذرائع کے مطابق پیپلز پارٹی اگلے ماہ سے حکومت کے خلاف بھرپور احتجاجی مہم شروع کر ے گی لیکن وہ اس احتجاجی تحریک میں سولو فلائٹ لینا چاہتی ہے تاکہ پیپلز پارٹی کا تشخص دوبارہ سے جاندار طریقے سے اُبھارا جا سکے۔پیپلز پارٹی کی نئی مہم کا آغاز سابق وزیر اعظم محترمہ بے نظیر بھٹو شہید کی برسی پر 27 دسمبر کو راولپنڈی کے لیاقت باغ میں ایک بڑے جلسے کا انعقاد کر کے کیا جائے گا۔اس جلسے میں بلاول بھٹو کی جانب سے حکومت کو بھرپور انداز میں للکارا جائے گا اور حکومت سے استعفے کا مطالبہ کیا جائے گا۔ جس کے بعد مُلک کے دیگر حصوں میں بھی بڑے بڑے جلسے منعقد کیے جانے کا پروگرام ہے۔ پیپلز پارٹی پنجاب پر بھی دوبارہ سے فوکس کرنا چاہتی ہے۔ ذرائع کے مطابق اسی وجہ سے بلاول بھٹو نے اپنا پنجاب اور سندھ کا شیڈول بھی تبدیل کر لیا ہے۔ پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اپنی نئی احتجاجی مہم کو کامیاب بنانے کے لیے اس وقت ایک لائحہ عمل کو مرتب کرنے میں مصروف ہو چکے ہیں۔ ذرائع کے مطابق پارٹی کی نئی مہم میں آصفہ بھٹو زرداری کو بھی شریک کیا جائے گا ، تاکہ نوجوان طبقہ پیپلز پارٹی کی جانب راغب کیا جا سکے۔

تازہ ترین خبریں