01:47 pm
 لیگ (ن) بھی آمادہ ہوگئی؟ حامد میر نے حکومت کے لیے خطرے کی گھنٹی بجا دی

لیگ (ن) بھی آمادہ ہوگئی؟ حامد میر نے حکومت کے لیے خطرے کی گھنٹی بجا دی

01:47 pm

لاہور( نیوز ڈیسک)پاکستان مسلم لیگ ن کے صدرشہبازشریف اومولانا فضل الرحمان کے درمیان کنٹینرمیں بیٹھک ہوئی، ملاقات میں آئندہ کی سیاسی صورتحال پر مشاورت کی گئی، شہبازشریف نے آئندہ کی صورتحال پر مولانا فضل الرحمان کا اہم مشورہ مان لیا۔سینئر تجزیہ کار حامد میر نے نجی ٹی وی سے گفتگومیں بتایا کہ گزشتہ روز جب صدرن لیگ شہبازشریف نے دھرنے کے شرکاء سے خطاب کیا تو ایک تاثر دیا گیا تھا کہ شہبازشریف خطاب کے فوری بعد چلے گئے ہیں۔لیکن شہبازشریف کہیں بھی نہیں گئے تھے بلکہ شہبازشریف اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان کنٹینرمیں اہم بیٹھک ہوئی تھی۔دونوں رہنماؤں نے اہم معاملات پر تبادلہ خیال اور مشاورت کی ۔ حامدمیر نے بتایا کہ شہبازشریف اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان بعض معاملات پر کچھ مسئلہ پیش آیا
لیکن مولانا فضل الرحمان شہبازشریف کو آئندہ کی صورتحال پر قائل کرنے میں کامیاب ہوگئے۔جس پر شہبازشریف نے مولانا فضل الرحمان کا مشورہ مان لیا۔ دوسری جانب جمعیت علماء اسلام نے مطالبات تسلیم نہ ہونے پر تین آپشنز دے دیے ہیں۔ مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا کہ اگر ہمارے مطالبات تسلیم نہ کیے تو دو دن بعد ہمارے پاس تین آپشنز ہوں گے۔جس میں پہلا پشن جیل بھرو تحریک، دوسرا اجتماعی استعفے اور تیسرا آپشن پورے ملک کو لاک ڈاؤن کرنے کا موجود ہے۔ واضح رہے پرویز خٹک نے وزیراعظم کو آزادی مارچ کے حوالے سے مختلف تجاویز سے آگاہ کیا ہے۔وزیراعظم عمران خان نے حکومتی مذاکراتی ٹیم کو مذاکرات کے ذریعے معاملات حل کرانے کی ہدایت کی ہے۔حکومتی مذاکراتی ٹیم میں یہ فیصلہ کیا جائے گا کہ نہ تو وزیراعظم عمران خان مستعفی ہوں گے اور نہ ہی دوبارہ انتخابات ہوں گے۔