05:21 pm
یورپ اور اقوام متحدہ میں پاکستان مخالف پروپیگنڈے  کےلئےبھارتی گروہ سرگرم

یورپ اور اقوام متحدہ میں پاکستان مخالف پروپیگنڈے کےلئےبھارتی گروہ سرگرم

05:21 pm

اسلام آباد(آن لائن) ایک غیر سرکاری یورپی گروپ’’ یورپی یونین ڈس انفو لیب ‘‘نے بھارتی نیٹ ورک کے زیر انتظام65ملکوں میں قائم ایسے 265 ایسے جعلی میڈیا گروپوںاور ویب سائٹس کی موجودگی کا انکشاف کیا ہے جن کا مقصد پاکستان کے حوالے سے تنقیدی مواد کے ذریعے یورپی یونین اور اقوامِ متحدہ پر اثر انداز ہونا ہے۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق ’ای یو ڈس انفو لیب‘ کا کام نامی یورپی گروپ یورپی یونین،
اس کے رکن ملکوں اور اہم اداروں کو ہدف بنانے والی غلط معلومات کے حوالے سے تحقیق کرنا ہے۔ گروپ کو اپنی ایک حالیہ تحقیق کے دوران پتہ چلا ہے کہ یہ جعلی ویب سائٹس اور میڈیا گروپس بھارتی سفارتی اور سیاسی مفادات کے تحفظ کیلئے پاکستان کے خلاف مختلف طرح کا مواد نقل کرکے چھاپنے کا عمل انجام دے رہے ہیں۔ ڈس انفو لیب کی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی کہ ان جعلی ویب سائٹ نے بہت بڑی تعداد میں ایسے مضامین شائع کیے ہیں جو پاکستان میں اقلیتوں سے متعلق تھے۔ لیب کی تحقیق کے مطابق آ ن لائن میڈیا ،نیو دہلی ٹائمز کے علاوہ ٹائمز آف جنیوابھی پاکستان مخالف خبروں کا ایک ذریعہ بن کر سامنے آیا ہے ۔ ان جعلی میڈیا گروپوں نے حالیہ دنوں کے دوران ایسا مواد چھاپا اور ویڈیوں لوڈ کیں جن میں مسئلہ کشمیر پر پاکستان کے کردار پر شدید تنقید شامل ہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ان جعلی میڈیا آؤٹ لیٹس کی تشکیل کا مقصد پاکستان کے بارے میں عوامی تاثرات پر اثر انداز ہونا اور اس حوالے سے بین الاقوامی اداروں و منتخب نمائندوں کو متاثر کرنا ہے۔تحقیق میںکہا گیا کہ جعلی میڈیا گروپ بھارتی اسٹیک ہولڈرز چلا رہے ہیں جن کے تعلقات تھنک ٹینکس، غیر سرکاری تنظیموں(این جی او) اور بھارتی سری وستاوا گروپ سے تعلق رکھنے والی کمپنیوں سے ہیں۔ یورپی پارلیمنٹ کے جن 27ارکان نے حال ہی میں مقبوضہ کشمیر کا دورہ کیا کہا جا رہا ہے کہ یہ دورہ بھی بھارتی مفادات کے لیے کام کرنے والے ان جعلی گروپوں کے ذریعے کر ایا گیا اوریہ دورہ کرانے میں عالمی شہرت یافتہ بھارتی بروکر میڈی شرما نے ایک کردار ادا کیا تھا۔