05:02 pm
کیا مریم نواز نواز شریف کی جان لینے کی کوشش کر رہی ہیں؟اگر نواز شریف کو کچھ ہوا تو سب سے زیادہ فائدہ کس کو ہو گا

کیا مریم نواز نواز شریف کی جان لینے کی کوشش کر رہی ہیں؟اگر نواز شریف کو کچھ ہوا تو سب سے زیادہ فائدہ کس کو ہو گا

05:02 pm

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک)کیا مریم نواز نواز شریف کی جان لینے کی کوشش کر رہی ہیں؟اگر نواز شریف کو کچھ ہوا تو سب سے زیادہ فائدہ کس کو ہو گا؟ نیا پنڈورا باکس کھل گیا ۔۔۔ معروف صحافی و تجزیہ کار مبشر لقمان نے اپنے یو ٹیوب چینل پر جاری تازہ ترین ویڈیو میں کہا کہ اس وقت پاکستان میں شریف خاندان کو جان نشینی کے مسائل کا سامنا ہے۔ میاں نواز شریف کی قائدانہ حیثیت مسلمہ ہے۔ شہباز شریف ہر وقت نواز شریف کے سائے میں ہی کام کرتے رہے ہیں
لیکن مستقبل کس کا ہے اس پر سوالیہ نشان ہے۔ کچھ عرصہ پہلے تک حمزہ شہباز کا نام لیا جا رہا تھا۔ پھر ان کے بھائی سلمان شہباز بھی سامنے آئے۔ لیکن اگر جان نشینی کی روایات کو سامنے رکھا جائے تو میاں نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز اپنا سیاسی قد بنانے میں پہلے ہی کامیاب ہو چکی ہیں۔ اب صرف باقاعدہ تاج پوشی کا انتظار کیا جا رہا ہے جس کی راہ میں حکومت سے زیادہ نواز شریف کی بیماری حائل ہے۔ اس وقت حکومت کی جانب سے نواز شریف کی روانگی کو بانڈز سے مشروط کرنا ، شہباز شریف کی مفاہمت کی خواہش اور مریم نواز کی بانڈز دستخط نہ کرنے کی ضد نے نواز شریف کی صحت کے معاملے کو ایک شٹل کاک بنا دیا ہے۔ حکومت نے انسانی بنیادوں پر نواز شریف کو نہ صرف پاکستان میں طبی سہولیات فراہم کیں، اور وزیراعظم عمران خان نے ان کی رپورٹس کو دیکھتے ہوئے انہیں علاج کے لیے بیرون ملک بھیجنے کی حامی بھی بھر لی۔ جس پر ان کی اپنی جماعت سے ڈیل کی قیاس آرائیاں شروع ہونے لگیں۔ انہوں نے کہا کہ جاتی امرا سے موصول ہونے والی خبروں کے مطابق ڈاکٹرز نواز شریف کے جسم کی سوجن کو کم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ اگر جلد ہی نواز شریف کو بیرون ملک لے جا کر ان کے باقاعدہ ٹیسٹس نہ کروائے گئے تو ان کے پاکستان میں موجود ڈاکٹرز کے ہاتھ سے ان کی صحت کا معاملہ نکل جائے گا۔ مبشر لقمان نے کہا کہ اس ساری صورتحال کو دیکھتے ہوئے مسلم لیگ ن کی سینئیر لیڈر شپ کا ایک اجلاس طلب کیا گیا اور چڑیل نے اس اجلاس کے حوالے سے مخبری کر دی۔ چڑیل کی مخبری کے مطابق شہباز شریف سمیت شریف خاندان کے دیگر افراد سکیورٹی بانڈز جمع کروانے پر راضی ہو گئے ہیں۔ تمام افراد اس بات پر متفق ہیں کہ نواز شریف کی صحت اہم ہے سیاست نہیں۔ لیکن اگر کوئی راضی نہیں ہے تو وہ مریم نواز ہیں۔ مریم نواز چونکہ نواز شریف کی جان نشین ہیں لہٰذا شاید یہی وجہ ہے کہ وہ نواز شریف کی صحت پر اتنا بڑا رسک لے رہی ہیں کہ بیس روز گزرنے کے باوجود ، حکومتی اجازت کے باوجود بھی وہ بانڈز پر دستخط کرنے کو تیار نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دیکھنا یہ ہے کہ نواز شریف کی جان لینے کی کوشش کون کر رہا ہے ؟ اگر نواز شریف کو کچھ ہوا تو گھر میں سب سے بڑا بینیفشری کون ہو گا ؟ اس پر سوچنے کی ضرورت ہے۔ دوسری مرتبہ مستقبل قریب میں اگر کسی وجہ سے شریف خاندان کو بانڈ جمع کروانا بھی پڑ جائے تو کیا شریف برادران کے اتنے اثاثے ہیں کہ وہ سات ارب روپے کا بانڈ لکھ کر دے سکیں۔

تازہ ترین خبریں