07:18 am
اللّٰه تعالیٰ کے بعد اپنی معاشی ٹیم کا شکریہ ادا کرتا ہوں ، عمران خان

اللّٰه تعالیٰ کے بعد اپنی معاشی ٹیم کا شکریہ ادا کرتا ہوں ، عمران خان

07:18 am

اسلام آباد(ویب ڈیسک) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ملک طویل المدتی منصوبہ بندی نہ ہونے کی وجہ سے ماضی میں ترقی نہیں کرسکا، پن بجلی کی بجائے مہنگی بجلی کے منصوبے شروع کئے جاتے رہے‘ اللّٰه‎ تعالیٰ کے بعد اپنی معاشی ٹیم کا شکریہ ادا کرتا ہوں جس کی کوششوں کی بدولت ہم نے مشکل وقت نکال لیا ہے‘ اب ہمیں آگے بڑھنا ہے‘ موجودہ حکومت کے 14 ماہ میں معیشت مستحکم ہوئی ہے‘ روپے کی قدر مستحکم ہو رہی ہے۔اسٹاک مارکیٹ ترقی کر رہی ہے‘
کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں کمی اور برآمدات میںاضافہ ہوا ہے، سرمایہ کاروں کا اعتماد بڑھ رہا ہے‘ہماری سمت درست ہے، عوام کی بہتری کے لئے جو بھی کرسکے کریں گے‘ بجلی چوری کی روک تھام سے ایک سال میں 120 ارب روپے اضافی وصول کئے گئے ہیں، ہوا سے بجلی کی پیداوار نہ صرف ماحول دوست بلکہ سستی بھی ہوگی، گلوبل وارمنگ سے پاکستان متاثر ہوسکتا ہے، اس مسئلہ پر توجہ دینا ہوگی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پاکستان میں ہوا سے بجلی کی پیداوار کے 310 میگاواٹ کے منصوبوں کے معاہدے پر دستخط کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ ہماری بد قسمتی ہے کہ یہاں پر مختصر مدت کی منصوبہ بندی کی جاتی رہی اور جو بھی حکومت آئی اس نے طویل المدتی حکمت عملی اختیار کرنے کی بجائے انتخابات میں کامیابی کے لئے مختصر مدت کی حکمت عملی اپناتے ہوئے کروڑوں روپے خرچ کردیئے۔ برصغیر میں سب سے مہنگی بجلی ہم بنا رہے ہیں، جب تک سستی بجلی پیدا نہیں کریں گے اور صنعتی ترقی نہیں ہوگی تو آمدنی میں اضافہ کیسے ہو گا۔ماضی میں پن بجلی کی بجائے ہم نے مہنگی بجلی بنائی ۔ انہوں نے کہاکہ ہوا سے بجلی پیدا کرنے کے یہ سستے منصوبے ہیں جن کی قیمت 5 سینٹ سے بھی کم ہوگی اور اس سلسلہ میں ہم 2030ء تک 60 فیصد کا ہدف جو حاصل کرنا چاہتے ہیں اس میں بھی مدد ملے گی۔درآمدی فیول کی بجائے ہوا سے سستی بجلی بنے گی تو اگر روپے کی قدر میں بھی کمی ہوئی تو مسئلہ نہیں ہوگا۔

تازہ ترین خبریں