03:44 pm
عمران خان نے کبھی ہوم ورک نہیں کیا ،وہ این آر او دے ہی نہیں سکتے، جنرل (ر)امجد شعیب

عمران خان نے کبھی ہوم ورک نہیں کیا ،وہ این آر او دے ہی نہیں سکتے، جنرل (ر)امجد شعیب

03:44 pm

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے تجزیہ کار لیفٹننٹ جنرل (ر) امجد شعیب نے کہا کہ میں یہی کہتا ہوں کہ عمران خان نے کبھی ہوم ورک نہیں کیا جس کی وجہ سے انہیں شرمندگی اُٹھانا پڑتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں حیران ہوں موقع کچھ اورتھا اوروزیراعظم نے تقریر کچھ اورکی، یہ تو این آر او دے ہی نہیں سکتے اگر یہ ایسا کربھی لیں تو اگلے روز سپریم کورٹ میں چیلنج ہوجائیں گی
۔ملک کو مصیبت سے نکالنے کے لیے ساری سیاسی جماعتوں کو آپس میں مل کرسوچنا ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ نوازشریف نے یہاں پر تو مقدمات میں بہت کہا کہ سیاسی انتقام لیا جارہا ہے لیکن لندن میں چلنے والے مقدمات پر کبھی کچھ نہیں کہا۔ پروگرام میں موجود تجزیہ کار حفیظ اللہ نیازی نے کہا کہ گذشتہ روز عمران خان میں بہت زیادہ فرسٹریشن تھی، لگتا تھا وہ بہت زیادہ ڈسٹرب ہیں۔انہوں نے خوب اپوزیشن کو لتاڑا جو وزیراعظم کے منصب کو زیب نہیں دیتا ۔ انہوں نے کہا کہ ہو نہ ہو دال میں کچھ نہ کچھ کالا ضرور ہے ۔ جب سیٹی بجے گی تو عمران خان کے ارد گرد بیٹھے لوگ سارے بھاگ جائیں گے ، جب عمران خان کمپرومائز کرکے وزیراعظم بنے تو ایسا ہی ہوگا۔ جبکہ ملک کے موجودہ سیاسی حالات پر بات کرتے ہوئے تجزیہ کار سلیم بخاری نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے اگرچہ کابینہ میں وزراکو نوازشریف کی بیماری پربات کرنے سے منع کیا لیکن اس کے باوجود ان کے وزرا نے سینکڑوں بیانات دیے ، پہلا وزیراعظم ہے جو موجودہ اورآنے والے چیف جسٹس کو کہہ رہے ہیں کہ وہ انصاف کریں۔انہوں نے کہا کہ چودھری برادران نے جوباتیں کی ہیں ان کے بعد توعمران خان کو فکر مند ہونا چاہئیے کہ وہ ایسے لوگوں سے جان چُھڑوائیں جنہوں نے انہیں یہاں تک پہنچایا۔ وزیراعظم کو چاہئیے کہ مدینے کی شخصیات کو اپنے خطاب میں نہ لائیں کیونکہ ان شخصیات کے جوتوں کے برابر بھی ہم نہیں ہوسکتے ہیں۔