03:22 pm
تھوڑی دیر قبل ملک کی اہم ترین حکومتی شخصیت نے استعفیٰ کیوں دیا ،اہم انکشافات

تھوڑی دیر قبل ملک کی اہم ترین حکومتی شخصیت نے استعفیٰ کیوں دیا ،اہم انکشافات

03:22 pm

اسلام آباد (مانیترنگ ڈیسک )جنرل قمر جاوید باجوہ کے وکیل کون ہیں ؟ تھوڑی دیر قبل ملک کی اہم ترین حکومتی شخصیت نے استعفیٰ کیوں دیا ،اہم انکشافات ۔۔۔۔ وفاقی وزیرِ تعلیم شفقت محمود نے بتایا ہے کہ استعفیٰ لینے کیلئے سابق وزیرِ قانون فروغ نسیم پر کسی نے دباؤ نہیں ڈالا تھا بلکہ سب نے انکی خدمات کو سراہا ہے۔ شفقت محمود نے بتایا ہے کہ بیرسٹر فروغ نسیم کل آرمی چیف کے وکیل کے طور پر سپریم کورٹ
میں پیش ہوکر کیس کی پیروی کریں گے۔ انہوں نے بتایا ہے کہ وفاقی وزیر ہونے کی وجہ سے وہ وکالت نہیں کرسکتے تھے اس لیے انہوں نے خود وزارت سے استعفیٰ دیا ہے تاکہ وہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کو جاری ہونے والے نوٹس کے حوالے سے ان کے وکیل کے طور پر پیش ہو کر کیس کی پیروی کر سکیں۔ خیال رہے کہ آج وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم نے آرمی چیف کی طرف سے عدالت میں کیس لڑنے کیلئے اپنی وزرات سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ فروغ نسیم نے وفاقی کابینہ کا اجلاس ختم ہونے کے بعد اپنی وزارت سے مستعفی ہونے کا اعلان کیا۔ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کے ہنگامی اجلاس کا دوسرا سیشنختم ہوگیا ہے۔ اجلاس میں کابینہ ارکان اور قانونی ماہرین سپریم کورٹ میں آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کے نوٹیفکیشن پر مشاورت کی۔ وزیراعظم عمران خان نے کابینہ کو اس معاملے پر اعتماد میں لیا۔اس دوران کابینہ کے تمام اراکین نے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع پر اتفاق کیا اور اس حوالے سے نئی سمری کی منظوری دے دی گئی۔ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کی نئی سمری منظوری کیلئے صدر مملکت کو بھجوا دی گئی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ کابینہ ارکان کا کہنا تھا کہ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کا اختیارچیف ایگزیکٹوکے پاس ہے۔ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کا فیصلہ کشمیر اور سکیورٹی صورتحال کو دیکھ کرکیا۔ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کابینہ کا متفقہ فیصلہ ہے۔

تازہ ترین خبریں