12:11 pm
حکومت نے 15ماہ میں سلامتی خطرات پیدا کردیے، نااہلی سے حساس تقرری کو تماشا بنا دیاگیا

حکومت نے 15ماہ میں سلامتی خطرات پیدا کردیے، نااہلی سے حساس تقرری کو تماشا بنا دیاگیا

12:11 pm


اسلام آباد(نیوز ڈیسک)حکومت نے 15ماہ میں سلامتی خطرات پیدا کردیے، نااہلی سے حساس تقرری کو تماشا بنا دیاگیا۔۔مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء احسن اقبال نے کہا ہے کہ حکومت نے نااہلی سے حساس تقرری کو تماشا بنا دیا، حکومت نے 15ماہ میں سلامتی خطرات پیدا کردیے ہیں، حکومت کا جانا ناگزیرہوچکا ہے، ملک بچانے کا ایک ہی راستہ ہے کہ شفاف انتخابات کروائے جائیں۔ انہوں نے اپوزیشن کی آل پارٹیز کانفرنس کے بعد جمیعت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان،
 
چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو اور دیگر کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے نوجوانوں کا مستقبل تاریک کردیا ہے۔حکومت کا جانا ناگزیرہوچکا ہے۔ آج پارلیمنٹ کو تالے لگا کر آرڈیننس سے حکومت چلائی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے 15ماہ میں سلامتی خطرات پیدا کردیے ہیں۔ایک ہی راستہ ہے کہ شفاف انتخابات کروائے جائیں۔الیکشن شفاف ہوں گے تو ملک بچ جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی سب سے حساس تقرری کو تماشا بنا دیا گیا۔ سربراہ جے یوآئی(ف) مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ اے پی سی میں ملک کی موجودہ سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اجلاس نے قراردیا کہ حکومتی وزراء نے غیرذمہ درانہ بیانات سے سی پیک کو متنازع بنا دیا ہے۔ اجلاس میں شدید مذمت کی گئی۔سی پیک کیلئے الگ اتھارٹی کا قیام غیرضروری ہے، پارلیمانی کمیٹی کے فیصلے سے متصادم بھی ہے۔اجلاس میں ناروے واقعے کی شدید مذمت کی گئی، حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ حکومت ناروے کی حکومت کے ساتھ معاملے کو مئوثرطریقے سے اٹھائے۔اجلاس میں نوازشریف اور آصف زرداری کی بیماری کے حوالے سے تشویش کا اظہار بھی کیا گیا۔ اجلاس میں بلدیاتی اداروں کی معطلی کی بھرپور مذمت کی گئی۔ اجلاس میں مطالبہ کیا گیا کہ پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ جلد سنایا جائے۔ مولانا فضل الرحمان نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ اگر ہمارے آزادی مارچ کے مطالبات کو پورا نہ کیا گیا تو پھر ہم بھی ہیں۔میدان بھی ہے اور کھڑے رہیں گے۔ ہم نے طے کیا ہے کہ تمام صوبوں اور اضلاع میں مشترکہ مظاہرے ہوں گے، جن کا شیڈول وہاں کی قیادت جاری کرے گی۔ انشاء اللہ حکومت احتجاجی مظاہروں کے نتیجے میں ہی جائے گی، آزادی مارچ میں تمام طبقات کے لوگ شامل تھے۔ سیاسی اور آئینی بحران کا حل موجودہ حکومت کا خاتمہ ہے۔ تمام ادارو ں کو اپنے آئینی دائرہ کار میں رہ کرکام کرنا ہوگا۔انہوں نے شفاف انتخابات حتمی مطالبہ ہے اس پر کوئی کمپرومائز نہیں کریں گے۔ الیکشن کمیشن کے ناموں کیلئے 3 رکنی کمیٹی تشکیل دی ہے۔ چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹونے کہا کہ آصف زرداری کی صحت انتہائی خراب ہے، حکومت آصف زرداری کی بیماری میں تعاون نہیں کررہی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ہمارا مطالبہ نہیں مان رہی، امید ہے سپریم کورٹ میں ہمارا کیس جلد لگے گا، آصف زرداری کا سندھ کا کیس راولپنڈی میں چلایا جارہا ہے۔

تازہ ترین خبریں