10:39 am
دعا منگی کی رہائی کیلئے ڈھائی لاکھ ڈالرز تاوان کا مطالبہ

دعا منگی کی رہائی کیلئے ڈھائی لاکھ ڈالرز تاوان کا مطالبہ

10:39 am


کراچی: اغوا کاروں نے دعا منگی کی رہائی کے لیے ڈھائی لاکھ ڈالرز تاوان کا مطالبہ کر دیا۔تفصیلات کے مطابق پانچ روز قبل کراچی کے علاقے ڈیفینس سے اغوا کی گئی لڑکی دعا منگی کے حوالے سے پولیس تاحال کوئی سراغ نہیں لگا سکی۔تاہم آج اس کیس میں اہم پیش رفت سامنے آئی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ اغوا کاروں نے دعا منگی کے اہلخانہ سے رابطہ کر کے تاوان طلب کیا ہے۔
 
تاوان کی رقم ڈھائی لاکھ ڈالرز بتائی جا رہی ہے۔اغوا کار دعا منگی کے اہل خانہ سے انٹرنیٹ کے ذریعے واٹس ایپ پر رابطہ کر رہے ہیں اور گذشتہ تین روز کے دوران واٹس ایپ پر تین مرتبہ کال کر چکے ہیں۔ذرائع کے مطابق اغو اکاروں کی جانب سے آخری رابطہ بدھ دوپہر 2 بج کر 20منٹ پر کیا گیا تھا اور وہ دعا منگی کی رہائی کے لیے ڈھائی لاکھ ڈالرز کی ادائیگی کے لیے بضد تھے۔ سندھ پولیس کے مختلف شعبوں کے ساتھ ملکی حساس ادارے بھی ملزمان کے سراغ میں مصروف ہیں۔یادرہے کہ 5روز قبل دعا منگی کو کراچی کے علاقے ڈیفنس سے اغوا کیاگیا تھا ۔ تاہم ابھی تک بازیاب نہ کرایا جا سکا۔کیس کی تفتیش میں اب ایک اہم پیش رفت سامنے آئی ہے جس میں اغوا کاروں نے دعامنگی کے اہل خانہ کیساتھ رابطہ کرنے کی کوشش کی ہے۔واضح رہے اس سے قبل دعامنگی کے اہل خانہ نے کہنا تھا کہ صدر، وزیر اعظم، یا وزیر اعلیٰ ہمدردی نہیں چاہیئے، دعا کی بحفاظت واپسی چاہتے ہیں۔ جب کہ سندھ کے وزیراطلاعات سعیدغنی نے کہاتھا کہ ڈیفنس جیسے علاقے میں دعا کا اغوا تشویش ناک ہے ، بازیابی میں مکمل کامیابی تو نہیں ملی البتہ کچھ پولیس کو کچھ شواہد ملے ہیں، لیکن ان باتوں کے میڈیا پر آنے سے تفتیش متاثر ہوتی ہے۔ اس سے قبل دعا منگی کی بہن نے مارنگ شو میں گفتگو کے دوران کہا تھا کہ دعا میری چھوٹی بہن ہے،اغوا کا واقعہ بہت افسوسناک ہے۔ لڑکیوں کے اغوا کے واقعات ہم سب کے لئے خطرے کی گھنٹی ہے۔تا ہم اب واقعہ میں اہم پیش رفت سامنے آئی ہے جس سے اہل خانہ نے پولیس کو آگاہ کردیا ہے۔ تاہم ابھی تک دعا منگی کو بازیاب نہ کرایا جا سکا۔