06:24 pm
عامر لیاقت دوبارہ ایم کیو ایم کے پاس جا پہنچے

عامر لیاقت دوبارہ ایم کیو ایم کے پاس جا پہنچے

06:24 pm

کراچی (ویب ڈیسک) پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی عامر لیاقت حسین نے اپنی پرانی پارٹی ایم کیو ایم کی قیادت سے ملاقات کی ہے۔تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی عامر لیاقت حسین اپنی پرانی پارٹی ایم کیو ایم کے دفتر پہنچ گئے جہاں انہوں نے ایم کیو ایم کی مرکزی قیادت سے ملاقات کی۔بعد ازاں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے عامر لیاقت حسین نے کہا کہ ان کی ایم کیو ایم کی قیادت کے ساتھ کراچی کے مسائل پر بات ہوئی ، مردم شماری میں کراچی کی نشستیں کم کی گئیں،
میرے حلقے این اے 245 میں قومی اسمبلی کی کم از کم تین نشستیں بنتی ہیں لیکن مہاجروں کی تعداد کو کم کرنے کیلئے حلقہ بندیاں کی گئیں۔کیا تحریک انصاف کے ساتھ کوئی ناراضی چل رہی ہے یا ایم کیو ایم میں واپسی کا کوئی ارادہ بن رہا ہے؟ اس سوال کے جواب میں عامر لیاقت حسین نے کہا کہ ’ میںمہاجر تھا، مہاجر ہوں اور مہاجر رہوں گا، یہ میرا پرانا گھر ہے، میراٹوٹا ہوا بٹن ان کے پاس ہے وہ لینے آیا ہوں، مردم شماری کے حوالے سے ایم کیو ایم کے موقف سے اتفاق کرتا ہوں، کراچی والوں کے ساتھ بڑی زیادتی ہوئی ہے اور کراچی پیکج بھی نہیں مل پایا۔‘انہوں نے واضح کیا کہ ایم کیو ایم کے مرکز میں پی ٹی آئی کے لوگوں کا آنا جانا لگا رہتا ہے ، ہوسکتا ہے کہ وہ عمران خان کا کوئی پیغام لے کر ایم کیو ایم کے مرکز آئے ہوں، عمران خان کراچی کے مسائل حل کرنے کے خواہاں ہیں۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے کہاہے کہ قوم کوعظیم بننے کے لئے کرپشن کے خلاف جہاد میں شریک ہونا ہوگا ، کرپشن کے خلاف موبائل ایپ میں ہر کوئی شرکت کرسکتاہے جب ہمارے نوجوانوں میں سمجھ آگئی کہ ہم انسداد کرپشن مہم میں شرکت کرکے ملک کی خدمت کررہے ہیں تو نیا پاکستان بن جائے گا ۔اسلام آباد میں انسداد بدعنوانی کے عالمی دن کے موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان میں لوگوں کوپتہ ہی نہیں ہے کہ کرپشن کا اور ان کاکیا تعلق ہے ؟ ملک کا پیسہ جب چوری ہوتاہے تو اس کا نقصان پورے ملک کوہوتاہے ۔ انہوں نے کہا کہ بدعنوانی سے متعلق ایب لانچ کرکے بڑی خوشی ہوئی ہے۔ چائنہ کی معیشت بڑی تیزی سے آگے بڑھ رہی ہے ۔ چینی صدر کی مقبولیت کا راز یہ ہے کہ چین میں چارسو کے قریب وزیر کی سطح کے لوگوںکوجیل میں ڈالا گیاہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت بیروت، چلی اور عراق میں لوگ کرپشن کے خلاف باہرنکلے ہوئے ہیں۔ عوام کو اب آہستہ آہستہ احساس ہوگیاہے کہ کرپشن سے ان کا ملک آگے نہیں نکل سکتا ، جس قوم میں کرپشن نہیں ہے ، وہ اوپر ہے اوروسائل کے باوجود جس ملک میں کرپشن ہے ، وہ نیچے ہے ۔انہوں نے کہا کہ جب ایک معاشرے میں کرپشن بڑھ جاتی ہے تو جو پیسہ عوام پر خرچ ہونا ہوتاہے وہ جیبوں میں چلاجاتا ہے ، کرپٹ لوگ حکومت میں آکر پیسہ بناتے ہیں ، ان کوڈر ہوتاہے کہ پیسہ بینک میں رکھیں گے تو لوگوں کوپتہ چل جائے گا ، وہ پیسہ ملک سے باہر بھجوادیتے ہیں ۔ اس سے ملک کودگنا نقصان ہوتاہے کیونکہ وہ منی لانڈرنگ کے ذریعے پیسہ باہر بھجواتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پیسہ باہر بھجوانے سے ڈالر مہنگا ہوتاہے جس سے ہر چیز جو در آمد کرتے ہیں ، وہ مہنگی ہوجاتی ہے ۔وزیر اعظم کا کہناتھاکہ کرپٹ معاشروں میں سرمایہ کاری نہیں آتی ، ہمارا سب سے بڑااثاثہ بیرون ملک پاکستانی ہیں، اگر یہ پاکستانی اپنا پیسہ ملک میں لگانا شروع کردیں تو ملکی معیشت بہت مضبوط ہوجائےگی ۔ انہوں نے کہا کہ بیرون ملک مقیم پاکستانی اپنا پیسہ اس لئے ملک میں نہیں لاتے کہ وہ کہتے ہیں کہ یہاں کرپشن ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملتان میں میٹرو کی ضرورت نہیں تھی لیکن بنادی اوراب وہ اربوں روپے کانقصان کررہی ہے، خالی چل رہی ہے ۔