11:30 am
سات اضلاع میں لینڈ ریکارڈ کی کمپیوٹرائزیشن جون 2020 تک مکمل کر لیں گے ..

سات اضلاع میں لینڈ ریکارڈ کی کمپیوٹرائزیشن جون 2020 تک مکمل کر لیں گے ..

11:30 am


پشاور : وزیر اعلیٰ کے معاون خصوصی برائے آئی ٹی کامران بنگش نے کہا ہے کہ خیبر پختونخوا میں لینڈ ریکارڈ کی کمپیوٹرائزیشن کا کام تیزی سے جاری ہے اور بڑی کامابی سے اپنے اہداف کی جانب بڑھ رہے ہیں،بدھ کو ایک پریس بریفنگ کے دوران انھوں نے بتایا کہ پہلے مرحلے میں صوبے کے سات اضلاع میں لینڈ ریکارڈ کی کمپیو ٹرائزیشن کا کام جاری ہے اور یہ کام جون 2020تک مکمل کر لیا جائے گا ،
 
اس مرحلے کے بعد دیگر اضلاع میں لینڈ ریکارڈ کی کمپیوٹرائزیشن کی جائے گی ،انھوں نے کہا کہ اس قدام کے نتیجے میں شہریوں کو پٹواریوں کے غیر ضروری عمل دخل سے نجات ملے گی اور زمینوں کے انتقالات اور انکی خرید و فروخت کا عمل آسان ہو گا جبکہ اس کے ساتھ ساتھ اس عمل میں بدعنوانی کی شکایات کا بھی بہت حد تک ازالہ ہو گا ، انھوں نے کہا کہ ڈیجیٹل پالیسی کے چار ستون ہیں جنھیں مضبوط بنانے کیلئے انکا محکمہ تمام توانائیاں بروئے کار لا رہا ہے ، انھوں نے کہا کہ ماضی میں صوبے میں اس شعبے کی جانب بہت کم توجہ دی گئی جس کی وجہ سے یہ شعبہ نظر انداز رہا تاہم اب جدید تقاضوں کو مدنظر رکھتے ہوئے پی ٹی آئی کی حکومت انفار میشن ٹیکنالوجی سے بھر پور استفادہ کر رہی ہے تا کہ صوبائی حکومت کے تمام محکموں میں اصلاحات کے عمل کو اس جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے بہتر سے بہتر انداز میں آگے بڑ ھایا جا سکے ، انھوں نے کہا کہ کاروبار کا آسان بنانے اور سرمایہ کاری کے عمل میں سہولیات کی فراہمی کیلئے بھی انفارمیشن ٹیکنالوجی کو استعمال کیا جا رہا ہے جس کی انتہائی مثبت نتائج برآمد ہو ئے ہیں،انھوں نے کہا کہ ہمارا عزم کے صوبے کے عوام کو ایک چھت کے نیچے زیادہ سے زیادہ سہولیات فراہم کی جائیں۔

تازہ ترین خبریں