02:20 pm
والد کے کام پر جانے کے بعد بزرگ محلے دار حیوان بن گئے،  13سالہ بچی کے ہاں بیٹی کی پیدائش

والد کے کام پر جانے کے بعد بزرگ محلے دار حیوان بن گئے، 13سالہ بچی کے ہاں بیٹی کی پیدائش

02:20 pm

راولپنڈی(مانیٹرنگ ڈیسک) والد کے کام پر جانے کے بعد بزرگ محلے دار حیوان بن گئے، 13سالہ بچی کے ہاں بیٹی کی پیدائش ۔۔کچھ دن قبل راولپنڈی میں ایک 13 سالہ بچی کے ساتھ زیادتی کی خبر سامنے آئی تھی جس کے الزام میں 4 اہلیان محلہ کو گرفتار کر لیا گیا تھا۔ متاثرہ بچی کے گھر اب ایک بچی کی پیدائش ہوئی ہے جس کے بعد اس کے والد نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے پورا واقعہ بیان کیا ہے۔ والد نے بات کرتے ہوئے بتایا ہے کہ جب بیٹی نے پیٹ میں درد کی شکایت کی تو مجھے پہلے لگا
کہ شاہد معدے کا مسئلہ ہے۔ جب دوائیاں دے کر بھی آرام نہ آیا تو میں نے ڈاکڑ کو چیک کروایا اور جب ڈاکٹر نے گائنی وارڈ میں چیک کروانے کا کہا تو میں ایک لمحہ کے لئے رک گیا کہ یہ کیا ہونے والا ہے۔ والد نے بات کرتے ہوئے بتایا ہے کہ میں نے شرو ع میں پولیس کو اس بارے میں نہیں بتایا کیونکہ مجھے ڈرایا دھمکایا جا رہا تھا اور میں اکیلا شخص تھا، میراکوئی بھائی نہیں یا کوئی ایسا شخص نہیں جس سے میں یہ بات کر سکتا۔ والد کا کہنا تھا کہ مجھے ڈر تھا کہ اگر میں اس بارے میں کسی کو بتاوں گا تو لوگ ہماری عزت اچھالیں گے، اس لئے میں نے یہ بات اپنے دل میں دبائے رکھی۔ ملزمان کے بارے میں بات کرتے ہوئے والد کا کہنا تھا کہ میرا مطالبہ ہے کہ انہیں سرعام پھانسی دی جائے کیونکہ میری بیٹی انہیں اپنا انکل کہتی تھی او ر انہوں نے ہی اس کے ساتھ ایسا درندگی والا سلوک کیا ہے۔ بیٹی کے بارے میں بات کرتے ہوئے بتایا گیا کہ اسے ڈرایا دھمکایا جا رہا تھا کہ اگر اس نے اس بارے میں کسی سے بات کی تو وہ مجھے مار دیں گے، اس ڈر سے میری بیٹی خاموش رہی۔ یاد رہے کہ راولپنڈی میں ایک 14 سالہ لڑکی کو اس کے 4 محلے داروں نے مبینہ زیادتی کا نشانہ بنایا تھا۔ تفصیلات کے مطابق یہ سلسلہ گزشتہ سال جون سے شروع ہوا تھا جس کے بعد لڑکی کو بار بار زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔ لڑکی نے اس بارے میں اپنے والد کو تب بتایا جب وہ حاملہ ہو گئی۔ والد کو جب اس واقع کے بارے میں پتہ چلا تو اس نے فوری مقامی پولیس سے رابطہ کرتے ہوئے ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کروا دیا جس پر پولیس نے کارروآئی کرتے ہوئے 4 محلے داروں کو گرفتار کر لیا۔ ایف آئی آر کے مطابق جون 2019 میں یہ واقع پہلی بار پیش آیا جس میں لڑکی کو اس کے ہمسائے کی جانب سے گھر میں گھس کر زیادتی کا نشانہ بنایا گیا اور لڑکی کو دھمکایا گیا۔ اب اس کے والد نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ ملزمان کو سرعام پھانسی دی جائے کیونکہ میری بیٹی جنہیں انکل کہتی تھی، انہوں نے ہی اس کے ساتھ یہ سلوک کیا ہے۔ ملزمان کو گرفتار کر کے کوٹ لکھپت جیل منتقل کر دیا گیا ہے۔