07:00 am
ناصر مدنی کو اپنی غلطی کا احساس ہوگیا

ناصر مدنی کو اپنی غلطی کا احساس ہوگیا

07:00 am

لاہور (نیوز ڈیسک) لوگوں کو گمراہ کرنے کے بعد ناصر مدنی کو غلطی کا احساس ہوگیا، سوشل میڈیا پر لوگوں کے نام جاری کیے گئے خصوصی پیغام میں کہا کہ کرونا وائرس خطرناک ہے، حکومت کی بات مانیں، گھروں تک محدود رہیں۔ تفصیلات کے مطابق معروف عالم دین علامہ ناصر مدنی کو کرونا وائرس کے حوالے سے کی جانے والی گمراہ کن باتوں کے بعد اپنی غلطی کا احساس ہو گیا ہے، اسی لیے ان کی جانب سے عوام کے نام خصوصی پیغام جاری کیا گیا ہے:
اپنے تازہ ترین پیغام میں ناصر مدنی نے عوام سے اپیل کی ہے کہ کرونا وائرس کے باعث پیدا ہونے والی صورتحال کو سنجیدہ سمجھیں۔اس حوالے سے حکومت کی جانب سے جو بھی ہدایات کی جا رہی ہیں ان پر عمل کریں۔خود کو گھروں تک محدود کر لیں اور غیر ضروری طور پر باہر نہ نکلیں۔ اس کے علاوہ تمام احتیاطی تدابیر اختیار کریں جن میں ہاتھ دھونا، ہاتھ نہ ملانا، ماسک پہننا اور ایک دوسرے سے دوری اختیار کرنا ہے۔ اس سے قبل ان کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی جس میں ان کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کچھ نہیں ہوتا۔کہاجارہاہےکہ کرو نہ پھیل جائے گا اس لئے اکٹھے نہ ہوں لیکن مجھے یہ بتائیں اگر مسلمان موت سے ڈرتا ہوتا تو ٹیپو سلطان نہ ہو تا۔اگر مسلمان موت سے ڈرتا ہوتا تو جنرل راحیل شریف کا بھائی شبیر شریف نہ ہوتا،اگر مسلمان موت سے ڈرتا ہوتا تومیجر عزیز بھٹی نہ ہوتا۔اگر کورونا ہوتا تو آپ لاہور میں کھڑے نہ ہوتے۔ناصر مدنی نے مزید کہا کہ ڈینگی اور کینسر سے اب تک کون مرا ہے۔ناصر مدنی نے کہا کہ جس نے مرنا ہے اس نے شیشے کے کمرے میں مر جانا ہے لہذا کورونا وائرس کچھ بھی نہیں ہوتا۔ سوشل میڈیا پر ناصر مدنی کو ایسا بیان دینےپر گرفتار کرنے کا مطالبہ کیا جا رہا تھا، جس کے بعد انہوں نے فوری یوٹرن لیتے ہوئے نیا بیان جاری کر دیا۔