02:05 pm
نہ کورونا کا خوف نہ گرفتاری کا ڈر، لاہور میں شہریوں نے لاک ڈائون کی دھجیاں اڑادیں

نہ کورونا کا خوف نہ گرفتاری کا ڈر، لاہور میں شہریوں نے لاک ڈائون کی دھجیاں اڑادیں

02:05 pm

لاہور (نیوز ڈیسک ) پنجاب کے سب سے بڑے شہر لاہور میں لاک ڈاؤن کے اٹھارویں روز اثر کم ہوتا دکھائی دے رہا ہے۔پولیس نے سختی کم کر دی ہے جبکہ سڑکوں پر نکلنے والے عوام کی تعداد بھی بڑھ گئی ہے۔تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس کی وجہ سے پنجاب بھر میں لاک ڈاؤن اور دفعہ 144 نافذ ہیں لیکن لاہور میں کیا گیا لاک ڈاؤن مکمل طور پر کامیاب نظر نہیں آرہا۔شہر میں مختلف اشیاء فروخت کرنے والی دوکانیں کھلنے لگی ہیں۔رکشے بھی رواں دواں ہیں جبکہ موٹر سائیکل پر
ڈبل سواری بھی جاری ہے۔ٹریفک میں بھی اضافہ ہونے لگا ہے،موبائل فون شاپس اور دیگر اشیاء فروخت کرنے والی دکانیں بھی کھلنے لگی ہیں۔ناکوں پر کھڑے پولیس اہلکاروں کا کہنا ہے کہ وہ لوگوں کو گھروں میں رہنے کی تلقین کرتے ہیں تو لوگ ان سے بحث کرنے لگتے ہیں۔بڑھتے ہوئے کورونا وائرس اور حکومت کی جانب سے جاری کردہ دابیر کے باوجود شہریوں کا رویہ غیر سنجیدہ ہے۔جب کہ پنجاب حکومت کا لاک ڈاؤن میں مزید توسیع کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔صرف لاہور میں 14 مزید کیسز سامنے آنے پر شادباغ اور مکھن پورہ کے علاقے سیل کر دیا گیا تھا ۔ جبکہ 54 گھروں کو سیل کردیا گیا تھا ۔ بتایا گیا ہے کہ شادباغ کے علاقے سے 17 کیسز سامنے آئے ہیں جس کے بعد علاقے کو سیل کر دیا گیا ہےمارکیٹیں بھی بند کرا دی گئی ہیں، علاقے کو سیل کرنے کے موقع پر اسسٹنٹ کمشنر نے علاقے کا دورہ کیا ، جبکہ رہنما تحریک انصاف ملک زمان بھی ان کے ہمراہ تھے۔ملک بھر میں کورونا وائرس سے مزی 167 افراد متاثرہوئے ہیں ۔ بتایا گیا ہے کہ پنجاب میں 2279، سندھ میں 1128، کے پی میں 620 اور بلوچستان میں 219 کورونا کے مریض زیر علاج ہیں۔ گلگت بلتستان میں کورونا کے 215 ، آزاد کشمیر میں33 کیسز موجود ہیں جبکہ 527 مریض کورونا وائرس سے صحت یاب ہو چکے پیں۔ جبکہ 227 مزید افراد صحت یاب ہو گئے ہیں جس کے بعد مجموعی تعداد 727 ہو گئی ہے۔