02:32 pm
وزیراعظم سےجہانگیر ترین کی ملاقات کی کوشش کپتان کا ملنے سے صاف انکار، بڑا دعویٰ سامنے آگیا

وزیراعظم سےجہانگیر ترین کی ملاقات کی کوشش کپتان کا ملنے سے صاف انکار، بڑا دعویٰ سامنے آگیا

02:32 pm

اسلام آباد(ویب ڈیسک ) صحافی عبدالقادر نے دعویٰ کیا ہے کہ پی ٹی آئی رہنماء جہانگیر ترین نے وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کی کوشش کی ہے، عمران خان ملنے کو تیار نہیں۔ تفصیلات کے مطابق اپنے ایک ویڈیو بیان میں عبدالقادر کا کہنا ہے کہ جہانگیر ترین اور عمران خان کے درمیان تعلقات ٹھیک ہوتے نظر نہیں آرہے،رہنما تحریک انصاف جہانگیرترین نے عمران خان سے ملاقات کی کوشش کی ، جہانگیر ترین عمران خان سے تفیصلی بات کرنا چاہتےتھے، تاکہ خود کو
اس سارے معاملے سے کلیئر کر سکیں۔ عمران خان نے ملاقات سے انکار کر دیا ۔ عبدالقادر کاکہنا ہے کہ تحریک انصاف کاکوئی رہنما کسی چینل پر جہانگیر ترین کے سامنے آنے کو تیار نہیں اور انہیں نظر انداز کررہے ہیں۔عبدالقادرکا کہنا ہے کہ کابینہ کے اجلاس میں وزیراعظم عمران خان نے جہانگیر ترین سے متعلق کابینہ کو ا عتماد میں لیا اور جہانگیر ترین کے کردار پر اظہار افسوس بھی کیا۔ان کا کہنا ہے کہ رہنما تحریک انصاف اس لیئے جہانگیر ترین کی حمایت نہیں کر رہے کیونکہ وزیراعظم نے ایجنسیوں کے ڈیٹا کے مطابق فیصلہ لیا۔ اور رہنما عمران خان کی ناراضگی سے ڈرتے ہوئے جہانگیر ترین کو سپورٹ نہیں کررہے۔واضح رہے آٹے چینی بحران کی تحقیقاتی رپورٹ کے نتیجے میں وزیراعظم عمران خان کی جانب سے کیے جانے والے غیر معمولی اقدامات اور تبدیلیوں کے بعد پنجاب اور وفاق میں میں جہانگیر ترین کے قریبی سمجھے جانے والے وزراء ،بیوروکریٹس اور پی ٹی آئی کے تنظیمی عہدیداروں کے حوالے سے بھی اہم تبدیلیوں کا امکان ظاہر کیا جارہا ہے۔اس حوالے سے اینٹی ترین لابی کی جانب سے وزیراعظم پر دباؤ بڑھایا جارہا ہے جب کہ یہ کوشش بھی کی جارہی ہے کہ جہانگیر ترین کی جانب سے بنائے گئے 300 ارب روپے مالیت کے وزیراعظم زرعی ایمرجنسی پروگرام پر نظر ثانی کر کے اس میں ترامیم کر ائی جائیں۔پاکستان تحریک انصاف اور اور حکومت کے باخبر افراد کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی اور حکومت میں موجود جہانگیر ترین مخالف لابی نے وزیراعظم عمران خان اور ان کے قریبی حلقوں کو تجویز دی ہے کہ جس طرح جہانگیرترین نے لابنگ کرکے چینی ایکسپورٹ اور سبسڈی کے فیصلے کرائے اور ویسے ہی انہوں نے اپنے افراد کو اہم حکومتی عہدوں پر تعینات کرایا،لہذا ان کو ہٹایا جائے۔