05:36 pm
اب ڈویلپمنٹ کا وقت آگیا، وزیراعظم نے ملکی تاریخ کے سب سے جدید منصوبے کا سنگ بنیاد رکھ دیا

اب ڈویلپمنٹ کا وقت آگیا، وزیراعظم نے ملکی تاریخ کے سب سے جدید منصوبے کا سنگ بنیاد رکھ دیا

05:36 pm


لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک ) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ دوسال مشکل گزارے، ہرجگہ این آر او کا مجمع اکٹھا ہوجاتا تھا، این آر اووالے شورمچاتے کہ این آر او دو گے تو فیٹف اورکشمیرایشو میں سپورٹ کریں گے، لیکن ڈویلپمنٹ اور روزگاردینے کا وقت آگیا ہے ، لاہور کو بچانے کیلئے اربن راوی پراجیکٹ بہت ضروری ہے، پروگرام سے معیشت کا پہیہ چل پڑے گا۔
انہوں نے راوی اربن ڈویلپمنٹ پراجیکٹ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ لاہور کی آب وہوا اور پینے کے پانی کیلئے بڑا زبردست پروگرام ہے، کبھی لاہور کا میٹھا پانی تھا،
ہم نلکے کا پانی پیتے تھے، 15سالوں میں لاہورکا پانی 800 فٹ نیچے چلا گیا۔ لاہور پھیلتا جا رہا ہے، گرین علاقے ختم ہوتے جا رہے ہیں، گندم کی مسلسل دوسال پیداوار کم ہوئی ہیں، اس سال ڈیڑھ ملین ٹن گندم کی پیداوار کم ہوئی ہے، گندم کی کم پیدا وار کی اور بھی وجوہات ہیں۔ پاکستان کاٹن پیدا کرتا تھا، لیکن اب گنا کاشت کیا جا رہاہے، آہستہ آہستہ لاہور تبدیل ہوتا جا رہا ہے، راوی بہت بڑا دریا تھا، لیکن اب ایک سیوریج کا نالہ بن چکا ہے، لاہور کو بچانے کیلئے پراجیکٹ بننا بہت ضروری ہے، ضرورت اب یہ ہے کہ ایک ماڈرن سٹی بنے، شہروں کو پھیلنے نہیں دینا، کیونکہ جیسے ہی شہر پھیلتا ہے کہ گیس، بجلی پہنچانا مشکل ہوتا ہے، ماڈرن سٹی میں حکومت کیلئے سہولیات فراہم کرنا آسان ہوتا ہے، اب دریاکو بچانے کیلئے بیراج بنائیں گے، پھر سیوریج کے پانی کو صاف کرکے اس میں ڈالا جائے گا۔ نیا لاہور ماڈرن سٹی اس بیراج کے ساتھ ساتھ بنے گا۔ یہاں پر 60لاکھ درخت اگائیں گے، ماحولیاتی آلودگی سے بچائیں گے۔ اس کی لاگت کا اندازہ لگایا جارہا ہے، یہ 5ٹریلین روپے یعنی 50ہزار ارب کا ہے۔یہ غیرملکی سرمایہ کاری آئے گی۔انہوں نے کہاکہ کورونا کی وجہ سے ہمیں 31 دسمبر تک ہمارے پاس وقت ہے کہ ہمارے پاس جو پیسا پڑا ہے اس کو بھی لگا دیں۔90لاکھ اورسیز پاکستانی کیلئے یہ زبردست سرمایہ کاری کا موقع ہے۔ ان کیلئے پیسا پاکستان لانے کا موقع مل جائے گا۔ نوجوانوں کو روزگار دینے کا بہترین پراجیکٹ ہے، ہاؤسنگ شروع کرنے سے 40 صنعتیں چل پڑیں گی، جس سے نوجوانوں کو روزگار ملے گا، اس نے دولت بنائی جائے گی ، جو پیسا ہمیں حاصل ہوگا وہ پیسا ہم عوام پر خرچ کریں گے، اور ملک کا قرض اتارنا شروع کریں گے۔اس لیے راوی پراجیکٹ کی بڑی اہمیت ہے۔ اسلام آبا دکے بعد یہ دوسرا بڑا پراجیکٹ ہے جہاں نیا شہر بننے جا رہا ہے، میں اپنی ٹیم کو سمجھا رہا تھا کہ یہ بڑا مشکل پراجیکٹ ہے۔ 2004ء سے کوشش کی جارہی ہے، اگر آسان ہوتا تو اب تک بن چکا ہوتا۔عمران خان نے کہاکہ ہم نے دوسال بڑی مشکل سے گزاریں ہیں،پہلے توزرمبادلہ کے ذخائر گرے ہوئے تھے، پہلے تو ملک کو خسارے سے نکالنا تھا۔اس کے بعد ایک مشکل جاتی تو دوسری آجاتی،اسی طرح آپ لوگوں کو پتا ہے کہ این آر او کا مجمع ہر جگہ اکٹھا ہوجاتا تھا، وہ ہر جگہ شور مچاتے کہ این آر او دو گے تو ہم فیٹف کا بل منظور کریں گے، این آراو دیں گے تو کشمیر میں سپورٹ کریں گے،ایک تو این آر اووالوں نے مصیبت ڈالی ہوئی تھی، لیکن اب وقت آگیا ہے کہ جب ہم ملک میں ڈویلپمنٹ اور روزگار کا سوچ رہے تھے اب یہ مسائل حل کرنے کا وقت آگیا ہے۔