12:51 pm
ریسٹورنٹس رات کس وقت کھلے رہیں گے؟حکومت نےوقت مقرر کر دیا، عوام کیلئے بڑی خبر

ریسٹورنٹس رات کس وقت کھلے رہیں گے؟حکومت نےوقت مقرر کر دیا، عوام کیلئے بڑی خبر

12:51 pm

کراچی(نیوز ڈیسک)وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی جانب سے سندھ میں عالمی وبا کورونا وائرس کے پیش نظر بند ریسٹورانٹ کو رات 10 بجے تک کام کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے جبکہ بہتر صورتحال کے پیش نظر کاروباری و تعلیمی سرگرمیاں 15 ستمبر سے دوبارہ کھولی جائیں گی۔سندھ میں کورونا وائرس سے متعلق صوبائی ٹاسک فورس نے 15 ستمبر سے پورے صوبے میں تعلیمی، کاروباری اور سماجی سرگرمیوں کو دوبارہ کھولنے کا فیصلہ کیا ہے، جیسا کہ این سی سی نے تجویز کیا تھا، 
لیکن صوبائی حکومت آئندہ ماہ کے پہلے ہفتے میں ایک بار پھر صورتحال کا جائزہ لے کر اس منصوبے پر آگے بڑھے گی۔ وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت اجلاس ہوا، اجلاس میں صوبائی وزراء ڈاکٹر عذرا پیچوہو ، سعید غنی ، مکیش چاولا ، ناصر شاہ اور مشیر قانون مرتضیٰ وہاب ، میئر کراچی وسیم اختر ، چیف سیکریٹری ممتاز شاہ ، آئی جی سندھ مشتاق مہر ، وزیراعلیٰ سندھ کے پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو ، اے سی ایس محکمہ داخلہ عثمان چاچڑ ، کمشنر کراچی افتخار شہلوانی ، سیکریٹری صحت کاظم جتوئی ، ڈپٹی ڈی جی رینجرز ، کور 5 کے بریگیڈیئر حسین مسعود ، پاک بحریہ کے کمانڈر رضوان ، ڈاکٹر عزیز ، ڈاکٹر فیصل ، مشتاق چھاپرا ، یونیسیف کے ایاز سومرو ، ڈبلیو ایچ او کی ڈاکٹر سارا اور دیگر شامل تھے۔ اجلاس کے آغاز میں وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ سی سی آئی اجلاس کے فوراً بعد ہی وزیر اعظم نے 6 اگست کو اسلام آباد میں این سی سی اجلاس کی صدارت کی تھی جس میں 15 ستمبر سے تعلیمی اداروں اور دیگر سمیت تمام کاروباری سرگرمیوں کو دوبارہ کھولنے کا فیصلہ کیا گیا تاہم یہ فیصلہ کیا گیا کہ صوبائی حکومتیں حتمی فیصلے لینے کیلئے اپنی ٹاسک فورس اجلاسز میں صورتحال کا جائزہ لیں گی۔وزیر صحت ڈاکٹر عذرا پیچوہو نے اجلاس کو کورونا وائرس کی صورتحال بہتر قرار دیتے ہوئے بتایا کہ نئے کیسوں کی تعداد میں کمی آنا شروع ہوگئی ہے۔اس پر وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ پچھلے 30 دنوں کے دوران معاملات میں کمی آرہی ہے، انہوں نے مزید کہا کہ 8 جولائی کو 1782 نئے کیس رپورٹ ہوئے اور یکے بعد دیگرے یہ تعداد گھٹتی چلی گئی اور آخر کار 7 اگست 2020 کو 487 نئے کیس رپورٹ ہوئے۔اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ کورونا وائرس کو ختم کردیا گیا یا اس پر قابو پالیا گیا ہے لیکن یہ ہمیں سبق سکھاتا ہے کہ وائرس اب بھی موجود ہے اور ہمیں اس کے ساتھ رہنا سیکھنا ہے جب تک کہ اس کی ویکسین تیار نہ ہوجائے۔سکریٹری صحت کاظم جتوئی نے ڈبلیو ایچ او کی طرف سے جاری کردہ اہم سفارشات کو اجلاس میں پڑھ کر سنایا جس میں مندرجہ ذیل نکات شامل ہیں:

تازہ ترین خبریں