10:44 am
کرونا کی وجہ سے تمام تعلیمی ادارے بند تاہم شجر کاری مہم میں  بچوں سے بغیر ماسک اور حفاظتی اقدام کے درخت  لگوائے جاتے رہے

کرونا کی وجہ سے تمام تعلیمی ادارے بند تاہم شجر کاری مہم میں  بچوں سے بغیر ماسک اور حفاظتی اقدام کے درخت لگوائے جاتے رہے

10:44 am

اسلام آباد (احمد ارسلان سے ) گزشتہ روز وزیر اعظم پاکستان کی تاریخی شجر کاری مہم جاری تھی جس کے تحت پاکستان میں تقریباً دس بلین درخت لگانے کی مہم کا آغاز کیا گیا جس کے تحت ملک بھر میں لاکھوں پودے لگائےگئے گوکہ اس دوران پارا چنار جیسے افسوسناک واقعات بھی شجرکاری مہم کا حصہ رہے تاہم کلی طور پر آزادی کے ماہ میں پاکستان کو سر سبزو شاداب بنانے کا عمل شاندار رہا تاہم ایک بات جو پاکستانیوں کو کھٹکتی رہی وہ یہ تھی کہ کرونا کی وجہ پاکستان میں میں تعلیمی اداروں میں چھٹیاں ہیں جس پر پرائیویٹ سکولز کی طرف سے شدید احتجاج بھی
دیکھنے میں آرہاہے جس پر حکومت کی طرف سےواضح اعلان کیا جا چکا ہے کہ پاکستان میں تمام تعلیمی ادارے 15اگست سے کھلیں گے ۔ اب جب حکومت خطرناک مہم کی وجہ سے یہ اعلان کر چکی تھی تو اسی دوران شجر کاری کی مہم کاآغاز ہوا اور اس میں ایسی تصاویر وائرل ہوئیں جنہوں نے کئی سوالا ت کو جنم دیا ۔ ہوا کچھ یوں کہ گزشتہ روز شجر کاری مہم میں سکول کے بچوں کی یونیفارم پہنے تصاویر وائرل ہوئیں جن میں دیکھا جا سکتا ہے کہ بچے یونیفار زیب تن کیے شجر کاری مہم میں مصروف عمل ہیں اور غور طلب بات یہ تھی کہ جن بچوں کو کرونا کے خوف کی وجہ سے سکول نہیں بھیجا جا رہا ، جن کیلئے سکول کھلنے سے پہلے انتہائی سخت ایس او پیز بنائے جا رہے ہیں وہ بچے بغیر ماسک اور بنا کسی فاصلے کے کندھے سے کندھا جوڑے درخت لگانے میں مصروف نظر آئے جن کی تصاویر سامنے آتے ہی پاکستانیوں کی جانب سے شدید احتجاج کیا گیا ۔ ذرائع کے مطابق نہ صرف سکول کے بچوں بلکہ سرکاری ملازمین کو بھی اس عمل میں استعمال کیا گیا۔ شجر کاری مہم بہت اچھا اقدام ہے جو ہماری آنے والی نسلوں کیلئے بھی فائدہ مند ہے تاہم اس مہم میں بچوں کا بغیر کسی حفاظتی اقدام کے استعمال اپنی جگہ ایک سوال ہے جس پر حکومت کو اقدامات اٹھانے چاہئیں ۔

تازہ ترین خبریں