09:45 am
 درجہ حرارت بڑھنے سے برفانی جھیلوں کے پگھلنے کا عمل تیز،محکمہ موسمیات نے خطرےکی گھنٹی بجادی

درجہ حرارت بڑھنے سے برفانی جھیلوں کے پگھلنے کا عمل تیز،محکمہ موسمیات نے خطرےکی گھنٹی بجادی

09:45 am

چترال(ویب ڈیسک)متاثرہ علاقے سے سیلابی ریلہ گزر رہا ہےچترال میں درجہ حرارت بڑھنے سے برفانی جھیلوں کے پگھلنے کا عمل تیز ہوگیا۔ انتظامیہ نے احتیاطی تدابیر پر قریبی گاؤں خالی کرالیئے، جب کہ محکمہ موسمیات نے تمام اداروں کو الرٹ جاری کردیا۔محکمہ موسمیات کے مطابق گلگت بلتستان میں درجہ حرارت بڑھنے سے برفانی جھیلیں پھٹنے کا الرٹ جاری ہے۔ 15-16اگست کو ہنزہ، بگروٹ،
نگر اور یاسین ویلی میں درجہ حرارت معمول سے زیادہ ہوگا۔میٹ آفس کے مطابق درجہ حرارت بڑھنے سے گلیشئیرز کے پگھلنے کا عمل تیز ہوجائیگا۔ جب کہ 17تاریخ کو ہونے والی بارش سے برفانی جھیلیں پھٹ سکتی ہیں۔محکمہ موسمیات نے ہنزہ، نگر، بگروٹ اور یاسین ویلی کے لوگوں کو احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ہدایات جاری کردیں۔واضح رہے کہ جمعہ 14 اگست کی صبح چترال کے علاقے یارخون لشٹ میں سیلاب کی زد میں آکر 10 گھر مکمل تباہ، جب کہ درجن سے زیادہ گھروں کو جزوی نقصان پہنچا تھا۔ حادثے میں بچی جاں بحق ، جب کہ 3 افراد زخمی ہوئے تھے۔مقامی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ گرمی میں شدت کے ساتھ ندی نالوں میں گلیئشیروں سے آنے والی پانی نے سیلابی ریلوں کی شکل اختیار کرنا شروع کردی ہے، جب کہ سیلاب کا رخ آبادی کی طرف ہے، جس سے کھڑی فصلیں اور باغات بھی تباہ ہوئے ہیں۔ڈپٹی کمشنر اپر چترال شاہ سعود کا کہنا تھا کہ ے کہا کہ متاثرین خاندانوں کو ضروری اشیا مہیا کردی گئی ہیں۔

تازہ ترین خبریں