11:08 am
ڈسکہ میں تحریک انصاف کو شکست : (ن) لیگ کے ووٹ بنک  میں مسلسل اضافہ

ڈسکہ میں تحریک انصاف کو شکست : (ن) لیگ کے ووٹ بنک میں مسلسل اضافہ

11:08 am

ہر ضمنی انتخاب میں اہلِ سیاست کے لئے کئی سبق پوشیدہ ہوتے ہیں۔ ڈسکہ ضمنی انتخاب کے نتائج سے کئی سبق سیکھے جا سکتے ہیں۔ پہلا سبق یہ کہ سنٹرل پنجاب میں 2018 کے بعد سے ابھی تکن لیگ کی حمایت میں کمی نہیں آئی اور دوسری طرف اگرچہ پی ٹی آئی کا ووٹ بڑھا ہے جو وزیر آباد اور ڈسکہ دونوں ضمنی انتخابات میں نظر آیا
مگر ووٹ بینک میں یہ اضافہ ایسا نہیں ہے جس سے ن لیگ کی اکثریت چیلنج ہو سکے۔حالیہ ضمنی انتخابات میں پی ٹی آئی دیہی علاقوں کی جماعت کے طور پر ابھر رہی ہے جبکہ شہروں یا قصبوں یا بڑے دیہات جہاں بازار ہیں وہاں ن لیگ کا ووٹ بینک مضبوط نظر آتا ہے۔ ڈسکہ اور وزیر آباد کے ضمنی انتخابات میں یہی رجحان دیکھنے میں آیا ہے۔ تحریک انصاف کے لئے سیاسی طور پر یہ اچھا شگون نہیں ہے کہ وہ یونینسٹ پارٹی کی طرح صرف دیہات میں طاقتور ہے، اصل سیاسی ووٹ بینک تو شہروں میں بیٹھا ہوا ہے۔ 10اپریل کو دوبارہ ہونے والے ضمنی انتخاب کے نتائج سے یہ واضح بھی ہو گیا کہ 19فروری کے انتخابی نتائج شفاف نہ تھے کیونکہ اس بار نتائج واضح طور پر مختلف ہیں جبکہ اگر پچھلی بار کے سرکاری نتائج دیکھے جاتے تو ان میں علی اسجد ملہی جیت رہے تھے۔ اس کا صاف مطلب ہے کہ ن لیگ کے اس الزام میں حقیقت تھی کہ دیہی علاقوں کے بعض پولنگ اسٹیشنز کی گنتی میں گڑ بڑ کی گئی تھی۔ڈسکہ انتخاب کا پی ٹی آئی کے لئے دھچکا صرف سیاسی شکست نہیں بلکہ یہ ایک ایسی شکست ہے جس میں یہ بیچارے کہہ بھی نہیں سکتے کہ ان کے ساتھ دھاندلی ہوئی ہے یا کوئی زور زبردستی کی گئی ہے بلکہ اُن کے پاساپنی شکست کو تسلیم کرنے کے سوا کوئی چارہ نہیں ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ پی ٹی آئی کو بہت امید تھی کہ وہ یہ سیٹ نکال لے گی اور اس کی وجہ یہ تھی کہ ڈسکہ شہر اور چند قصبات کے علاوہ 70فیصد علاقہ دیہی تھا، جہاں ووٹ سیاست کی بنیاد پر نہیں بلکہ ذات برادری اور دھڑے بندی کی بنیاد پر پڑتے ہیں۔ یہ حلقہ کافی لمبا چوڑا ہے، اس کی سرحدیں سیالکوٹ، گوجرانوالہ، گجرات، نارروال اور حتیٰ کہ شیخوپورہ سے بھی ملتی ہیں۔ پی ٹی آئی کے لئے مثبت پہلو یہ تھا کہ اس حلقے کے اندر دیہی علاقوں میں جاٹ بیلٹ موجود تھی جہاں کی اکثریتی آبادی علی اسجد ملہی کو سپورٹ کر رہی تھی مگر اس بھرپور حمایت کے مقابلے میں ہر وہ چھوٹا شہر یا قصبہ جہاں لوگ تجارت سے وابستہ ہیں یا وہاں چند دکانیں ہیں، وہاں کا سیاسی رجحان ن لیگ کی طرف رہا۔ڈسکہ اور وزیر آباد کے ضمنی انتخابات کے نتائج کو اگر قومی سطح پر منطبق کیا جائے تو صاف نظر آتا ہے کہ یہ نتائج ان لوگوں کے لئے دھچکا ہیں جو چار برس سے ن لیگ کے خلاف بدعنوانی کا بیانیہ تیار کر رہے ہیں، انہیں عدالتوں سے سزائیں دلوا رہے ہیں یا روزانہ ان کے خلاف بیان دیتے ہیں۔ ان نتائج سے یہ لگتا ہے کہ اگرچہ ان کا پروپیگنڈا بڑا خطرناک ہے لیکن ن لیگ کے ووٹر اس پروپیگنڈے کے اثر میں نہیں آئے اور وہ ابھی تک ن لیگ کے بیانیے اور اس کی تعمیر و ترقی کے پروگرام پر یقین رکھتے ہیں۔پی ٹی آئی کو وزیرآباد، ڈسکہ اور ملک بھر میں یہ مشکل بھی درپیش ہے کہ وہ بدعنوانی کے خلاف اپنے بیانیے کے علاوہ اپنا کونسا کارنامہ عوام کے سامنے رکھے؟ ضمنی انتخابات کے نتائج دیکھ کر آسانی سے یہ پیش گوئی کی جا سکتی ہےکہ اگر آج پنجاب میں انتخابات کا اعلان ہو جائے تو دو بڑے حریف ن لیگ اور پی ٹی آئی ہوں گے اور اس لڑائی میں برتری ن لیگ کی ہوگی۔ گویا پاکستان تحریک انصاف حکومت میں ہونے کے باوجود پنجاب کی اکثریتی رائے کو تبدیل نہیں کر سکی۔ اس حوالے سے یہ نتائج پی ٹی آئی کے لئے پریشان کن ہونے چاہئیں۔مجھے ڈسکہ اور وزیر آباد دونوں جگہ پی ٹی آئی کے حق میں مہم چلانے والوں سے ملنے کا اتفاق ہوا، دونوں جگہ انہوں نے تسلیم کیا کہ ان کو مہنگائی اور بیروزگاری کے حوالے سے مخالفت کا سامنا کرنا پڑا۔ وزیراعظم عمران خان کو بھی اب شاید یہ احساس ہو گیا ہے کہ ان کی اصل دشمن اپوزیشن نہیں مہنگائی ہے، اسی لئے وہ پے در پے اپنی ٹیم میں تبدیلیاں کر رہے ہیں کہ کسی طرح مہنگائی کے عفریت کو قابو کر سکیں۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ ڈسکہ میں پی ٹی آئی کو دھچکا ایسے وقت میں لگا ہے جب ملکی اپوزیشن ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے اور نفسیاتی طور پر ساری اپوزیشن ہی دبائو کا شکار ہے۔ ہونا تو یہ چاہئے تھا کہ ان کمزور لمحات میں پی ٹی آئی ڈسکہ میں ن لیگ کے امیدوار کو شکست دے کر یہ ثابت کرتی کہ نہ صرف اپوزیشن قومی سطح پر ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے بلکہ حلقوں کے اندر بھی کمزور ہو رہی ہے لیکن ڈسکہ کے الیکشن میں پی ٹی آئی یہ ثابت کرنے میں ناکام رہی بلکہ الٹا یہ تاثر ملا کہ اپوزیشن کمزور ترین صورتحال میں بھی پی ٹی آئی پر بھاری ثابت ہوئی ہے۔(تحریر: سہیل وڑائچ)

تازہ ترین خبریں

راولپنڈی میں ماں اور معصوم بچے کے قتل کی اصل وجہ سامنے آگئی،خبر پڑھ کر آپ کے رونگٹے کھڑے ہوجائینگے

راولپنڈی میں ماں اور معصوم بچے کے قتل کی اصل وجہ سامنے آگئی،خبر پڑھ کر آپ کے رونگٹے کھڑے ہوجائینگے

پنجاب حکومت  نے سرکاری ،نجی سکولوں و مدارس میں یکساں نظام تعلیم رائج کرنے کی ٹھان لی

پنجاب حکومت نے سرکاری ،نجی سکولوں و مدارس میں یکساں نظام تعلیم رائج کرنے کی ٹھان لی

بوائے فرینڈ سےبے وفائی کا بدلہ۔۔۔!!! لڑکی نے ایسا کام کیا کہ سب حیران رہ گئے

بوائے فرینڈ سےبے وفائی کا بدلہ۔۔۔!!! لڑکی نے ایسا کام کیا کہ سب حیران رہ گئے

گاڑی کے سفر کو آسان اور آرام دہ بنانے کیلئے نئی ہونڈا سٹی پاکستانیوں کو کتنے میں ملے گی ؟جانیں 

گاڑی کے سفر کو آسان اور آرام دہ بنانے کیلئے نئی ہونڈا سٹی پاکستانیوں کو کتنے میں ملے گی ؟جانیں 

کار یا موٹر سائیکل میں بس ایک چیز موجود ہو تو پھر مجال ہے کہ کوئی ڈاکو قریب بھی آجائے

کار یا موٹر سائیکل میں بس ایک چیز موجود ہو تو پھر مجال ہے کہ کوئی ڈاکو قریب بھی آجائے

بلاول بھٹوشہباز شریف سے ہاتھ ملانے کوتیار

بلاول بھٹوشہباز شریف سے ہاتھ ملانے کوتیار

حکومت کا بڑا اقدام، ملک بھر میں یکساں نصاب تعلیم رائج ہونے کیلئے تیار

حکومت کا بڑا اقدام، ملک بھر میں یکساں نصاب تعلیم رائج ہونے کیلئے تیار

کرکٹ پربھارتی سیاست کی جتنی مذمت کی جائےکم ہے، دفتر خارجہ

کرکٹ پربھارتی سیاست کی جتنی مذمت کی جائےکم ہے، دفتر خارجہ

میرا بس چلے تو میں ملزم کو گولی ماردوں،شیخ رشید نے ایسی بات کہہ دی جان کر آپ دنگ رہ جائینگے

میرا بس چلے تو میں ملزم کو گولی ماردوں،شیخ رشید نے ایسی بات کہہ دی جان کر آپ دنگ رہ جائینگے

کن ممالک کے باشندے سعودی عرب آسکتے ہیں اور کس شرط پر؟ شہری یہ خبر ضرور پڑھ لیں

کن ممالک کے باشندے سعودی عرب آسکتے ہیں اور کس شرط پر؟ شہری یہ خبر ضرور پڑھ لیں

عمران خان نے 59 سال پُرانی شادی کی تصویر شیئر کردی

عمران خان نے 59 سال پُرانی شادی کی تصویر شیئر کردی

جوبائیڈن ٹھوڑی پر چپکی چیز سے لاعلم، ویڈیو وائرل

جوبائیڈن ٹھوڑی پر چپکی چیز سے لاعلم، ویڈیو وائرل

 شہباز شریف کے پارٹی قیادت چھوڑنے کی باتوں میں کوئی صداقت نہیں،راناثنا ء اللہ

شہباز شریف کے پارٹی قیادت چھوڑنے کی باتوں میں کوئی صداقت نہیں،راناثنا ء اللہ

ورلڈ بینک کا پاکستان کیلئے10کروڑڈالر امداد کا اعلان

ورلڈ بینک کا پاکستان کیلئے10کروڑڈالر امداد کا اعلان