"

تین ماہ کی عام تعطیلات کا اعلان کر دیا گیا ہے۔

آج کی سب سے بڑی خبر ۔۔۔3 ماہ طویل عام تعطیلات کا اعلان کر دیا گیا عالمی وبا کورونا وائرس کے سبب پاکستان میں بھی کورونا کی وجہ سے اموات میں روز بروز اضافہ ہو تا جا رہا ہے ۔ ہر دن اموات میں اضافے سے پاکستانیوں کے خوف میں اضافہ ہو رہا ہے جبکہ مرنے والوں کی مجموعی تعداد تقریبا 7ہزار160 ہو گئی ہے۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے مطابق متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد3لاکھ 59 ہزار32 ہوگئی ہے.پاکستان میں کورونا کے 3لاکھ 23 ہزار824 مریض صحت یاب ہوچکے ہیں اور28 ہزار484 زیرعلاج ہیں سندھ میں کورونا مریضوں کی تعداد 1لاکھ 55 ہزار680 اور پنجاب میں ایک لاکھ 10 ہزار450 ہے خیبرپختونخوا 42 ہزار370، اسلام آباد24 ہزار218، بلوچستان 16 ہزار407، آزاد کشمیر 5 ہزار455 اورگلگت میں4 ہزار452 کیسز رپورٹ ہو چکے ہیں. کورونا وائرس کے باعث پنجاب میں 2 ہزار475 اور سندھ میں 2 ہزار747 اموات ہو چکی ہیںخیبر پختونخوا میں اموات کی تعداد 1ہزار 311، اسلام آباد 257، بلوچستان 156، گلگت بلتستان 93 اور آزاد کشمیر میں 121 ہو گئی ہے پاکستان میں کورونا وائرس کی دوسری لہرشروع ہو چکی ہے دوسری لہر سے نمٹنے کے لیے ایس اوپیز پر سختی سے عمل کرنا ہو گا. این سی او سی کے مطابق ملک کے 15 شہروں میں کورونا وباتیزی سے پھیل رہی ہے۔پاکستان میں اسی فیصد کورونا کیسز گیارہ بڑے شہروں سے رپورٹ ہوئے صوبائی حکومتوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ بازاروں، شاپنگ مالز، پبلک ٹرانسپورٹ، ریسٹورنٹس میں ایس او پیز اور ماسک کو لازم قرار دیں. شہری گھروں سے باہر نکلتے وقت ماسک لازمی پہنیں حکومتی اور نجی سیکٹرز کے دفاتر میں کام کرنے والوں کے لیے ماسک پہننا لازم ہوگا۔ دوسری جانب بلوچستان حکومت نے کورونا وائرس کے باعث موسم سرما کی تعطیلات جلد کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق صوبائی وزیر تعلیم سردار یار محمد رند نے کہا ہے کہ صوبے میں موسم سرما کی چھٹیاں قبل از وقت دی جارہی ہیں ۔ تعلیمی اداروں میں یکم دسمبر سے چھٹیاں ہوں گی۔ تین ماہ کی چھٹیوں کے بعد تعلیمی ادارے یکم مارچ کو کھلیں گے ۔ بلوچستان میں نیا تعلیمی سال مارچ سے شروع ہوگا ۔ یاد رہے کہ پیر کے روز وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کی زیر صدارت بین الصوبائی وزرائے تعلیم کانفرنس ہوئی جس میں تمام صوبائی وزرا نے ویڈیو لنک کے ذریعے شرکت کی۔ اجلاس میں تعلیمی اداروں کو بند کرنے اور موسم سرما کی تعطیلات کے حوالے سے بات چیت کی گئی۔ اجلاس میں کہا گیا کہ تعلیمی اداروں میں کورونا کیسز خطرناک حد تک بڑھ گئے ہیں۔ وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا کہ بچوں اور اساتذہ کی جان زیادہ عزیز ہے۔ بچوں اور اُساتذہ کی حفاظت ہماری اولین ترجیح ہے۔ اجلاس میں تعلیمی اداروں میں 20 نومبر سے 31 جنوری تک موسم سرما کی تعطیلات دینے کی تجویز پیش کی گئی ۔ تعلیمی اداروں میں موسم سرما کی تعطیلات کے معاملے پر کچھ شرکا نے حمایت کی اور کچھ نے مخالفت کردی۔ واضح رہے کہ گلگلت بلتستان کی حکومت نے ریجن کے تعلیمی ادارے بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ گلگلت میں حالیہ انتخابات کے انعقاد کے بعد احتیاط کے طور پر تعلیمی ادارے کچھ روز کیلئے بند رکھے جائیں گے۔ ریجن کے تمام تعلیمی ادارت 17 سے 23 نومبر تک بند رہیں گے۔ جبکہ تعلیمی اداروں کی مزید بندش کے حوالے سے فیصلہ وفاقی حکومت کے فیصلے کے مطابق لیا جائے گا