"

شبنم مجید کے گھر سے افسوس ناک خبر آگئی ۔

اناللہ واناالیہ راجعون بہیمانہ قتل ۔۔! پاکستان کی لیجنڈ اداکارہ شبنم مجید کے گھر صف ماتم بچھ گئی لاہور (ویب ڈیسک) لاہور کے علاقے بادامی باغ میں گلوکارہ شبنم مجید کے بھائی کو قتل کردیا گیا۔ پولیس نے گلوکارہ کی مدعیت میں مقدمہ درج کر لیا۔ایف آئی آر کے مطابق مقدمہ میں مقتول کی اہلیہ کے بھائیوں کو نامزد کیا گیا ہے۔ گلوکارہ کے بھائی کی اپنی بیوی سے تکرا ہوتی رہتی تھی۔مدعیہ نے مؤقف اپنایا کہ میرے بھائی کو اس کے سالوں نے جان سے مارنے کی دھمکیاں دی تھیں۔پولیس نے لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے مردہ خانے منتقل کر دیا۔واضح رہے کہ فروری 2020میں گلوکارہ شبنم مجید نے شوہر سے علیحدگی کے لیے خلع کا دعویٰ دائر کردیا تھا ۔ شبنم مجید نے لاہور کی فیملی کورٹ میں شوہر واجد علی سے خلع لینے کے لیے درخواست دائر کی۔ درخواست میں شبنم مجید نے مؤقف اختیار کیا کہ ان کے چار بچے ہیں، شوہر واجد علی نے اپنی سابقہ بیوی سے رجوع کرلیا ہے، واجد علی اور سابقہ بیوی کی تصویریں بھی وائرل ہوچکی ہیں۔ شبنم مجید کا کہنا تھا کہ اس صورتحال میں وہ سخت پریشان ہیں اور شوہر کے ساتھ گزارہ ممکن نہیں۔ شبنم مجید نے مزید کہا کہ وہ ذہنی کرب میں مبتلا ہیں اور ان کا شوہر کےساتھ رہنا مشکل ہوگیا ہے لہٰذا عدالت خلع کی ڈگری جاری کرے۔