04:41 pm
جب بھی میں بیرون ملک سے جیت کر آیا ، پاکستان کے اس ایک ادارے کے سوا کسی نے میری قدر نہیں کی

جب بھی میں بیرون ملک سے جیت کر آیا ، پاکستان کے اس ایک ادارے کے سوا کسی نے میری قدر نہیں کی

04:41 pm

راولپنڈی(ویب ڈیسک) پاکستان کے لیے ورلڈ ٹائٹل کھیلنے جا رہا ہوں، پاکستان کی ہسٹری میں یہ کسی نے نہیں کھیلا ۔ دبئی میں منعقدہ پروفیشنل باؤٹ جیتنے والے پاکستانی باکسر محمد وسیم نے کہا ہے کہ وہ جب بھی بیرون ملک سے جیت کر لوٹتے ہیں تو صرف پاک فوج ان کی حوصلہ افزائی کرتی ہے۔ تفصیلات کے مطابق باکسر محمد وسیم نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ انھیں پاکستان کی نمایندگی کرنے پر بہت خوشی ہے، پہلے بھی پاکستان کی نمایندگی کرتے رہے ہیں۔
انھوں نے کہا کہ 15 سال سے پاکستان کا نام دنیا میں روشن کر رہا ہوں لیکن جب بھی بیرون ملک سے جیت کر آیا صرف پاک فوج نے حوصلہ افزائی کی، اس بار شاہد آفریدی، وسیم اکرم اور جہانگیر خان نے فون کر کے مبارک باد دی۔محمد وسیم کا کہنا تھا آیندہ پاکستان کے لیے ورلڈ ٹائٹل کھیلنے جا رہا ہوں، پاکستان کی ہسٹری میں کسی نے ورلڈ ٹائٹل نہیں کھیلا ہے، اکتوبر میں میری دوبارہ فائٹ ہونے جا رہی ہے، ٹاپ فائیو میں آ گیا ہوں فائٹ جیت کر ورلڈ ٹائٹل جیتنا چاہتا ہوں۔پاکستانی باکسر نے مزید کہا کہ حکومت سے درخواست ہے میری آیندہ ہونے والی فائٹ کو سپورٹ کرے، ملک میں ٹیلنٹ کی کمی نہیں ہے، بس حکومتی سپورٹ چاہیے۔خیال رہے کہ تین دن قبل محمد وسیم نے دبئی میں منعقدہ پروفیشنل باؤٹ جیتی ہے، انھوں نے فلپائن کے باکسر کونراڈو تنومور کو پہلے ہی راؤنڈ میں ناک آؤٹ کر دیا تھا، یہ پروفیشنل باکسنگ کیریئر کا 9 واں مقابلہ تھا جو انھوں نے جیتا۔تاہم باکسر محمد وسیم پاکستان واپس پہنچے تو ائیر پورٹ پر حکومتی عہدے داروں اور باکسنگ فیڈریشن کی جانب سے کسی قسم کا کوئی استقبال نہیں کیا گیا۔ محمد وسیم کا کہنا تھا کہ میرے غیرملکی ٹرینر ڈینی وان نے اسکاٹ لینڈ میں پچھلے چھ سے سات ماہ سخت ٹریننگ کرائی جس کا رزلٹ آج کامیابی کی صورت میں ملا ہے۔ واضح رہے کہ محمد وسیم ایک سال بعد رنگ میں دوبارہ اترے تھے، جیت سے ان کی رینکنگ میں بہتری آئے گی۔