01:54 pm
چہرے نہیں، نظام بدلو

چہرے نہیں، نظام بدلو

01:54 pm

 بی بی مریم صفدر فرماتی ہیں کہ ’’حکومت کو گھر بھیجو پھر ہم فوج سے بات کرنے کو تیار ہیں‘‘… ن لیگی سیاست کی بیاض کے  اس شعر کو عوام سمجھ چکے ہیں … وہ یہ ہے کہ فوج سے کہا جارہا ہے کہ تم حکومت کو گھر بھیجو گے تو تب ہم تم سے بات کریں گے … ’’یعنی پہنچی وہیں پہ خاک جہاں کا خمیر تھا‘‘ ہم  جیسے سیاست کے طالبعلم تو روز اول سے ہی ’’ووٹ‘‘ کو عزت دو والے بیانیے کی ’’اصلیت‘‘ کو خوب جانتے تھے لیکن عوام کو جو خوش فہمی تھی وہ بھی الحمد للہ دور ہوگئی… سوال ہی ہے کہ کیا کسی بھی وزیراعظم یا کابینہ کی تبدیی سے پاکستانی قوم کے مسائل حل ہو جائیں گے؟ کشمور میں ماں بیٹی کے ساتھ جو ظلم عظیم ہوا … اس نے ہر درد دل رکھنے والے پر سکتہ طاری کر دیا، لیکن مقامی پولیس کے ایک اہلکار محمد بخش نے اس مظلوم  ماں کی زبان سے واقعہ سننے کے بعد جس فرض شناسی ، عقل مندی اور بہادری کا ثبوت دیا وہ اپنی مثال آپ تھا … ماں بیٹی کے ساتھ درندگی کرنے والے جانوروں سے بھی بدتر ان مجرموں کو گرفتار کیا … پھر مرکزی ملزم کو ایک مبینہ مقابلے میں مار ڈالا گیا ، اس بے غیرت مجرم کی موت کی خبر سن کر دل میرا بھی ٹھنڈا ہوا ، لیکن کیا ماورائے عدالت اس مجرم کی موت آج ایک مرتبہ پھر ’’سسٹم‘‘ پر سوالات نہیں اٹھا رہی؟ کون نہیں جانتا کہ عدالتی سسٹم میں مقدمات سال ہا سال تک چلتے ہی رہتے ہیں۔ کسے معلوم نہیں ہے کہ مجرم عدالتوں سے بری ہو جاتے ہیں، جب وزیراعظم کی تبدیلی سے نہ تھانوں کے نظام میں تبدیلی لائی جاسکی، نہ عدالتوں کا نظام بہتر ہوسکا نہ پولیس کے نظام میں کوئی بہتری لائی جاسکی، حکومتوں اور وزارتوں کی تبدیلی سے نہ پٹوار خانہ بہتر ہوسکا، نہ غربت کم ہوسکی ، نہ معیشت بہتر ہوسکی اور نہ ہی ملک کے اندر تادم تحریر قانون کی حکمرانی قائم کی جاسکی … وزیراعظم کی تبدیلی سے زیادہ سسٹم کی تبدیلی پر فوکس کیا جائے تو کیا یہ زیادہ بہتر نہ ہوگا؟
اگر بی بی مریم فوج سے بات کرکے ہی وزیراعظم بننا چاہتی ہیں تو پھر موجودہ حکومت میں کیا برائی ہے؟ اگر ن لیگ یا پی پی پی والے حکومت بنالیں تو وہ ’’الیکٹڈ‘‘ اور اگر عمران خان وزیراعظم بن جائے تو وہ ’’سلیکٹڈ‘‘ جب سب نے بات کرکے ہی وزیراعظم بننا ہے تو پھر عوام کو کیوں اُلو بنایا جاتا ہے … کشمور واقعے میں ملوث مرکزی ملزم کا ماوراء عدالت مارا جانا … اس بات کا کھلا اظہار ہے کہ یہاں انصاف کے فوری حصول کے لئے بھی قانون ہاتھ میں لینا پڑتا ہے … قانون کی  حکمرانی کا تصور ابھارنے کے لئے لاقانونیت کا سہارا لینا پڑتا ہے …  مجھے پندرہ سال قبل کے کراچی کے وہ د ن بھی یاد ہیں کہ جب ایم کیو ایم کی غنڈہ گردی، بدمعاشی اور دہشت گردی سے متاثرہ شخص  کسی افسر سے مدد لینے کے لئے پہنچتا تو  وہ افسر ایم کیو ایم کے متعلقہ سیکٹر انچارج کے نام پیغام بھیج کر اس ’’مظلوم‘‘ کی مدد کیا کرتا تھا … مجھے ان  لوگوں کی د ماغی حالت مشکوک نظر آتی ہے کہ جو کہتے ہیں کہ جی ، آج سب کچھ  بدل گیا ہے ، زمانہ بڑا جدید ہوگیا ہے، دنیا بڑ ی ترقی کرگئی ہے … کیا یہ خاک  جدت پسندی اور ترقی ہے ۔
جو قوم اپنی چار چار برس کی بیٹیوں کی عصمتوں کا دفاع نہ کرسکے اس قوم کو زندہ رہنے سے بہتر ہے کہ وہ مر جائے … یہ حکومتیں ہیں ، یہ سسٹم اور نظام ہے؟ سوال یہ ہے کہ سندھ پولیس میں صرف ایک ہی محمد بخش کیوں ہے کہ جسے پھولوں سے لادا جارہا ہے … اسے سندھی اجرکیں پیش کی جارہی ہیں … اسے وزیراعظم بھی فون کرکے مبارکباد دے رہے ہیں، اسے ایوارڈ اور نقد  انعامات دینے کے اعلانات کیے جارہے ہیں … پولیس میں تو لاکھوں جوان اور آفیسرز شامل ہیں، جواب اس کا  واضح ہے کہ پوری قوم اے ایس آئی محمد بخش کو پلکوں پہ اس لئے بٹھا رہی ہے کیونکہ اس  نے ماں بیٹی کی عزت کو تار تار کرنے والے بدمعاشوں کو بروقت گرفتار کیا … اگر وہ ان کی عزتیں بچانے میں بھی کامیاب ہو جاتا تو تاریخ میں امر ہو جاتا … یہ اس بات کی علامت ہے کہ قوم اپنی بیٹیوں کی عزتوں کا دفاع چاہتی ہے ، قوم اپنی مائوں، بہنوں کی عصمتوں کے دفاع کے حوالے سے سخت پریشان ہے، لیکن وفاقی حکومت ہو، صوبائی حکومتیں ہوں، پولیس ہو یا عدالتی نظام … وہ اس قوم کی مائوں، بہنوں، بیٹیوں کی عصمتوں کے دفاع سے یکسر غافل ہے، بس … اب بہت ہوچکا ہے ، ستر بہتر سالوں سے چہرے بدل بدل کر دیکھ لیا … لیکن حالات سدھرنے کی بجائے مزید بگڑتے چلے جارہے ہیں، ہم سب اوپر گیلری میں بیٹھ کر پارلیمنٹ کی کارروائی دیکھ اور سن رہے ہوتے ہوتے ہیں تو کبھی کبھی ایسے محسوس ہوتا ہے کہ پارلیمنٹ کے درودیوار کانوں میں سرگوشیاں کررہے ہوں کہ ’’چہرے نہیں ،نظام کو بد لو‘‘ سیاست دانوں نے اگر فوج سے بات ہی کرنا ہے جو کہ اچھی بات ہے  تو  وہ بات ’’سسٹم‘‘ کی تبدیلی کی ہونی چاہیے نہ سیکولر ازم، نہ سوشلزم، یہ کیپٹل ازم، نہ انگریزوں کا چھوڑا  ہوا ملغوبہ سسٹم، بلکہ  صرف اور صرف ریاست مدینہ والا اسلامی نظام ایک ایسا نظام کہ جن میں فوری انصاف ملتا ہے… جو مساوات کا علمبردار ہے، معاشی ناہمواریوں کا خاتمہ کرتاہے … اگر آج پاکستان میں اسلامی سزائوں کا اعلان کر دیا جائے ، چور کی شرعی سزا، زانی کی شرعی سزا اور دیگر سزائوں پر عملدرآمد ممکن بنا دیا جائے تو دوبارہ ممکن ہے کسی ’’علیشا‘‘ پر کوئی  ہاتھ ڈالنے سے پہلے سو مرتبہ سوچے… وزیراعظم عمران خان کہتے ہیں ’’بلوچستان کی پسماندگی کے ذمہ دار سابق حکمران ہیں … پچھلے حکمرانوں نے بلوچستان سے زیادہ دبئی اور لندن کے دورے کئے، ڈھائی سال ہونے کو ہیں … موصوف کو وزیراعظم بنے ہوئے لیکن ابھی تک ہر چیز کے ذمہ دار پچھلے حکمران ہی ہیں … مجھے تو ڈر ہے کہ کہیں کسی دن عمران خان یہ ہی نہ کہہ دیں کہ ’’مجھے وزیراعظم بنانے والے بھی پچھلے حکمران ہی ہیں‘‘ آخر کب تک ہر کام کی ذمہ داری پچھلے حکمرانوں پر ڈالی جاتی رہے گی،بھینس اگر دودھ نہ  دے تو ذمہ دار پچھلے حکمران، گھوڑا اگر بھاگنے سے انکاری ہو تو ذمہ دار پچھلے حکمران، مرغی کا انڈا ٹوٹ جائے تو ذمہ دار پچھلے حکمران! اب بس بھی کر دیں بہت ہوگیا، کچھ ذمہ داری  خود بھی قبول فرمالیں۔
اگر عمران خان پاکستان کو ریاست مدینہ کے طور پر ڈھالنا چاہتے ہیں تو انہیں فوری طور پر نفاذ اسلام کی طرف عملی طور پر  پیش رفت کرنی چاہیے تھی لیکن اپنے ڈھائی سالہ دور اقتدار میں انہوں نے اپنی تقریروں اور پریس کانفرنسوں میں ’’ریاست مدینہ‘ کا بار بار  ذکر تو کیا لیکن اسلامی نظام کا ایک قانون بھی عملی طور پر نافذ کرنا گوارا نہ کیا۔

 

تازہ ترین خبریں

چوری بری ہوتے ہی عدالت سے موٹر سائیکل لے اڑا

چوری بری ہوتے ہی عدالت سے موٹر سائیکل لے اڑا

ڈیم نے بننے سے بجلی مہنگی ہوئی، وزیر اعظم

ڈیم نے بننے سے بجلی مہنگی ہوئی، وزیر اعظم

چھ سالہ بچے کے گاڑی چلانے کی ویڈیو کا معاملہ، ملتان پولیس حرکت میں آگئی

چھ سالہ بچے کے گاڑی چلانے کی ویڈیو کا معاملہ، ملتان پولیس حرکت میں آگئی

سینیٹ الیکشن میں شو آف ہینڈ کا مطالبہ سیاسی نہیں ، زلفی بخاری

سینیٹ الیکشن میں شو آف ہینڈ کا مطالبہ سیاسی نہیں ، زلفی بخاری

ریسٹورنٹس میں آئوٹ ڈور ڈائننگ پر پابندی ختم

ریسٹورنٹس میں آئوٹ ڈور ڈائننگ پر پابندی ختم

برطانوی عدالت کاپاکستانی بزنس مین کو امریکہ کے حوالے کرنے کا حکم

برطانوی عدالت کاپاکستانی بزنس مین کو امریکہ کے حوالے کرنے کا حکم

لاکھوں ملازمتیں ۔۔ بے روزگار افراد کیلئے بڑی خوشخبری آ گئی۔۔ تنخواہیں کتنی بڑھیں گی؟ شاندار خبر آ گئی

لاکھوں ملازمتیں ۔۔ بے روزگار افراد کیلئے بڑی خوشخبری آ گئی۔۔ تنخواہیں کتنی بڑھیں گی؟ شاندار خبر آ گئی

ن لیگی رہنما اور رکن قومی اسمبلی کی 80سالہ ماں کے خلاف دوسرا مقدمہ درج، کیس کیا ہے ، جانیے تفصیل

ن لیگی رہنما اور رکن قومی اسمبلی کی 80سالہ ماں کے خلاف دوسرا مقدمہ درج، کیس کیا ہے ، جانیے تفصیل

آج پاکستانیوں کیساتھ کیا کام ہونے والا ہے ؟جانیں 

آج پاکستانیوں کیساتھ کیا کام ہونے والا ہے ؟جانیں 

نوازشریف نے فارن فنڈنگ کی بنیاد رکھی ، فضل الرحمن سب کے ’’امام‘‘ نکلے،فرخ حبیب

نوازشریف نے فارن فنڈنگ کی بنیاد رکھی ، فضل الرحمن سب کے ’’امام‘‘ نکلے،فرخ حبیب

اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس:یوٹیلیٹی سٹورز کو ڈیجیٹل بنانے کے منصوبے کی منظوری

اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس:یوٹیلیٹی سٹورز کو ڈیجیٹل بنانے کے منصوبے کی منظوری

چچی سے ناجائز تعلق، پکڑے جانے پر پوتے اوربہو نے بوڑھی ساس کے ساتھ کیا شرمناک کام کیا

چچی سے ناجائز تعلق، پکڑے جانے پر پوتے اوربہو نے بوڑھی ساس کے ساتھ کیا شرمناک کام کیا

 وزیراعظم پی ڈی ایم کے علاج کیلئے ویکسین تیار کررہے ہیں،فردوس عاشق اعوان

وزیراعظم پی ڈی ایم کے علاج کیلئے ویکسین تیار کررہے ہیں،فردوس عاشق اعوان

ہمارے عمران خان سے گلے شکوے ہیں لیکن ۔۔ ۔۔ وفاقی وزیر فواد چودھری نے اعتراف کرلیا

ہمارے عمران خان سے گلے شکوے ہیں لیکن ۔۔ ۔۔ وفاقی وزیر فواد چودھری نے اعتراف کرلیا