03:07 pm
جامعہ الازہرکے خلاف مبینہ سازش

جامعہ الازہرکے خلاف مبینہ سازش

03:07 pm

کسی بھی ملک میں دینی اصلاحات سے پہلے ضروری ہے کہ ملک کی تعمیروترقی میں حائل رکاوٹوں کودورکیاجائے۔مصری صدرعبدالفتح سیسی، اس کے ہم نواں اورسابق وزیرثقافتی امور جابرحمد عصفور کاخیال ہے کہ مصرکی تعمیروترقی، معاشی استحکام ،مذہبی اصلاحات سے مشروط ہے۔ درحقیقت 2013 میں شدت پسندوں کے خلاف کارروائی اورفوجی بغاوت اور سیاسی جبر وتشدد کے پیچھے کارفرما یہی مقاصدتھے۔فوجی بغاوت کے فوری بعد 2014  میں آئینی ترامیم کے ذریعے منتخب صدرمحمد مرسی کومعزول کردیا گیا تھا۔ الازہر کواسلامی تعلیمات کے حوالے سے اہم مقام حاصل ہے، تاہم آئینی اورقانونی عمل میں اس کا کوئی کردار نہیں ۔ جمال عبدالناصرکے زمانے سے اس ادارے کوادارہ جاتی خودمختاری حاصل ہے ۔
سیسی اوراس کے حواریوں کوالازہرکے عوامی سطح پراثرورسوخ اوراس کے کردارکے حوالے سے پریشانی رہی ہے لہذاانہوں نے اقتدارپرقابض ہونے کے فورابعدالازہرکے خلاف باقاعدہ مہم شروع کی،ان کاخیال ہے کہ الازہر دورِجدیدکے تقاضوں کے مطابق نصاب سازی میں ناکام ہے۔ مصرکے بڑے اخبارات نے اس پروپیگنڈامہم  میں بھرپور ساتھ دیااورعجیب وغریب سوالات اٹھاناشروع کردیئے،مثلاً اگرانسان بھوک سے مرنے کے قریب ہوتوکیاوہ اپنایاکسی اور انسان کاگوشت کھاسکتا ہے۔ان کاخیال ہے کہ الازہر کانصاب مذہبی انتہاپسندی کوفروغ دے رہا ہے، لہٰذامذہبی انتہاپسندی کوشکست دینے کیلئے ناگزیر ہے کہ اس کے نصاب میں تبدیلی کی جائے،دراصل نصاب کی تبدیلی اہم مسئلہ نہیں ہے بلکہ مقاصدکچھ اورہیں۔
تاہم یہ بھی اپنی جگہ حقیقت ہے کہ فوجی بغاوت کے موقع پرالازہرنے ایک منتخب صدر کی حمایت کرنے یااس معاملے میں غیر جانبداررہنے کی بجائے،فوج کی حمایت کی تھی۔اب وقت کے ساتھ ساتھ سیسی حکومت کے الازہرپراعتمادمیں کمی آرہی ہے، سیسی کی حکومت اوراس کے کارندے الاز ہرکو حاصل بہت سے اختیارات اور مراعات سے محروم کرنے کی سازشیں کررہے ہیں۔حال ہی میں ایک بل کے ذریعے دارالافتا کومذہبی امورکے ماتحت کردیاہے اور جامعہ کی تاریخ میں یہ پہلی مرتبہ ہواہے۔ایساحملہ توجمال عبدلناصرکے زمانے میں بھی نہیں ہواتھا۔
اس بل کے خلاف الازہرکی جانب سے اورعوامی سطح پرشدیدردعمل کے بعدپارلیمان نے اس بل کوواپس تولے لیاہے لیکن سیسی حکومت کے عزائم کاپتہ چل گیاہے۔یادرہے جب منتخب صدرمحمد مرسی کومعزول کرنے پرجامعہ الازہرنے فوج کی حمائت کی تھی تویہاں لندن میں ایک پروگرام میں جب میں نے احتجاجی تقریرمیں متنبہ کیاتھاکہ وہ دن دورنہیں جب سیسی کی بے رحم تلوار الازہرکی نظریاتی گردن پرہوگی کیونکہ سیسی کے آقااب مصرکی مکمل ایسی نظریاتی تبدیلی کے خواہاں ہیں جہاں فرعونی نظام کودوبارہ نافذکیاجائے گااور اب ایسا ہی ہواہے۔ موجودہ بیانیے اور اقدامات سے محسوس ہوتاہے کہ اگران اقدامات پرعمل ہوتاہے توالازہرکو حاصل آئینی اختیارات سے محروم کر دیاجائے گا۔
مجھے خدشہ ہے اگریہ بل منظورہوجاتاہے تواس دارالافتاکوزیادہ آئینی اختیارات دے کرمصری سماج میں الازہرکے بامعنی کردار کوختم کردیاجائے گا،اس طرح مصرمیں مسلمانوں کے مذہبی امورمیں الازہرکاعمل دخل بھی بتدریج کم ہوتے ہوئے ایک دن ختم کردیاجائے گایاپھرایک نمائشی کردارہوگا۔ الازہرکاتعلیمی میدان میں خاصابڑانیٹ ورک ہے،یہ کنڈرگارڈن سے ڈاکٹریٹ کی سطح تک دینی اورعصری تعلیم فراہم کررہاہے۔مصری معاشرہ کی ثقافت اورتمدن پراس جامعہ کے گہرے اثرات ہیں۔دوسری جانب یہ بھی خیال موجود ہے کہ الازہرکے کردار میں  مزیداضافہ کیاجائے،تاکہ روزمرہ کے  مذہبی معاملات میں اس سے رہنمائی حاصل کی جاسکے، خواندگی میں اضافہ ہو،اوردینی کتب کی اشاعت کاکام تیزہوسکے۔گزشتہ کئی دہائیوں سے الازہرسے فارغ التحصیل افراد کودینی تعلیم کے حوالے سے نمایاں مقام حاصل ہے۔
گزشتہ ایک صدی سے مصرمیں تعلیمی اصلاحات اوربالخصوص الازہرمیں دی جانے والی تعلیم بحث کا موضوع رہی ہے۔معروف اسکالر محمدعبدہ اصلاحات کے پرزورحامی ہیں،ان کا خیال ہے نصاب کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ، تخلیقی اورتنقیدی صلاحیتوں کو پروان چڑھانے والا اور طلبہ کواسلامی وژن  کے مطابق جدید مصری معاشرے کی تشکیل میں اہم کردار اداکرنے کے قابل  بنانا چاہیے ۔اس میں توکوئی دورائے نہیں کہ الازہر کے نصاب میں جوہری تبدیلیوں اور اصلاحات کی ضرورت ہے لیکن یہ اصلاحات مصر کے ہرایک سرکاری تعلیمی ادارے میں ہونا چاہئیں۔ مصرکاہرایک تعلیمی ادارہ ازکاررفتہ تعلیمی وتدریسی نظام،بدانتظامی،کرپشن اور غیر فعالیت کا شکارہے۔ ایساتوہوناہی تھاکیونکہ برسوں سے ریاست نے اصلاح احوال کی کوئی سنجیدہ کوشش نہیں کی۔
ایسے کوئی شواہدنہیں کہ سیسی نے اب تک تعلیمی میدان،سماجی اورانسانی وسائل کی بہتری اور انفرااسٹرکچرمیں کوئی قابل ذکرکام کیاہو۔لیکن ایک فیصداشرافیہ کے مفادات کیلئے بہت کام کیاہے، باقی99فیصد عوام کوحالات کے رحم وکرم پرچھوڑ دیاہے جہاں دن بدن تیزی سے اخلاق باختہ کلچرفروغ پا رہاہے جس سے مصرکی نوجوان نسل کوبے راہروی کی طرف مائل کیاجارہاہے۔ الازہرکے خلاف سازشوں کواسی پس منظرمیں سمجھناچاہیے۔ الازہربہت ہی اہم تعلیمی ادارہ ہے اس کے گہرے نقوش مصری معاشرہ اور باہرکی دنیاپرثبت ہیں لیکن اب یہ خدشہ سر اٹھا رہاہے کہ الازہرکے تاریخی کردارکوختم کرنے کاسفرشروع کردیاگیاہے۔
سیسی اوراس کے سیکولرحلیفوں کی اصلاحات کے حوالوں سے سازشوں پرشیخ طیب کا کہنا تھا،حال ہی میں الازہرمیں مذہبی اصلاحات کے حوالے سے اعلی سطحی اجلاس منعقد کیاگیا، مصری معاشرے کولادین بنانے کی ایک صدی سے جاری کوششوں کا نتیجہ یہ ہے کہ مصرخودایک پہیہ بھی نہیں بناسکتا۔اب خاکم بدہن ہرطرف سے یہ آوازیں اٹھناشروع ہوگئی ہیں کہ سیسی حکومت اوراس کے لا دین عناصرالازہرکی بچی کھچی علمی میراث کوتباہ توکرسکتے ہیں،لیکن بہتری اور خیرکاکوئی عمل ان کے ہاتھوں ممکن نہیں کیونکہ منتخب صدرمحمد مرسی کومعزول کرکے سیسی کو لانے کے مقاصدمیں مصرسے ان تمام مذہبی روایات کوختم کرنامقصودہے جس کی آبیاری پچھلی سات دہائیوں سے اخوان المسلمون نے اپنے عمل سے کی ہے۔

 

تازہ ترین خبریں

لڑکھڑاتی حکومت کو سینیٹ انتخابات سے قبل بڑی شکست ہوئی ،مصطفی نواز

لڑکھڑاتی حکومت کو سینیٹ انتخابات سے قبل بڑی شکست ہوئی ،مصطفی نواز

حلیم عادل شیخ کی درخواست ضمانت مسترد

حلیم عادل شیخ کی درخواست ضمانت مسترد

 ملک میں عوامی راج کا سورج طلوع ہونے والا ہے،بلاول

ملک میں عوامی راج کا سورج طلوع ہونے والا ہے،بلاول

سپریم کورٹ نےذمہ داری الیکشن کمیشن کےکندھوں پرڈال دی ،فردوس عاشق اعوان

سپریم کورٹ نےذمہ داری الیکشن کمیشن کےکندھوں پرڈال دی ،فردوس عاشق اعوان

 الیکشن کمیشن کو قابل شناخت بیلٹ پیپرز چھاپنے ہوں گے، اٹارنی جنرل

الیکشن کمیشن کو قابل شناخت بیلٹ پیپرز چھاپنے ہوں گے، اٹارنی جنرل

 شفاف و آزادانہ انتخابات کیلئے الیکشن کمیشن کیساتھ تعاون ضروری ہے،لطیف کھوسہ

شفاف و آزادانہ انتخابات کیلئے الیکشن کمیشن کیساتھ تعاون ضروری ہے،لطیف کھوسہ

ہنگو:مکان کی چھت گرنے سے 2افراد جاں بحق ،3زخمی

ہنگو:مکان کی چھت گرنے سے 2افراد جاں بحق ،3زخمی

سپریم کورٹ نے سینٹ الیکشن خفیہ کرانے کی رائے دی،شبلی فرازنوکری کر نے پر مجبور ہیں،مریم اورنگزیب

سپریم کورٹ نے سینٹ الیکشن خفیہ کرانے کی رائے دی،شبلی فرازنوکری کر نے پر مجبور ہیں،مریم اورنگزیب

سپریم کورٹ نےسینیٹ الیکشن میں شفافیت کیلئے زبردست فیصلہ دیا ،فیصل جاوید

سپریم کورٹ نےسینیٹ الیکشن میں شفافیت کیلئے زبردست فیصلہ دیا ،فیصل جاوید

سپریم کورٹ نے ہارس ٹریڈنگ کی حوصلہ شکنی کا موقف تسلیم کرلیا ،فواد چوہدری

سپریم کورٹ نے ہارس ٹریڈنگ کی حوصلہ شکنی کا موقف تسلیم کرلیا ،فواد چوہدری

سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد سینیٹ الیکشن دلچسپ ہونگے،شیخ رشید

سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد سینیٹ الیکشن دلچسپ ہونگے،شیخ رشید

سپریم کوٹ کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہیں،شبلی فراز

سپریم کوٹ کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہیں،شبلی فراز

وزیراعظم وزراء کی کارکردگی سے ناخوش : وفاقی کابینہ میں ردوبدل کا امکان

وزیراعظم وزراء کی کارکردگی سے ناخوش : وفاقی کابینہ میں ردوبدل کا امکان

نامور اداکار اعجاز درانی انتقال کر گئے

نامور اداکار اعجاز درانی انتقال کر گئے