01:10 pm
مقامی حکومتوں کے انتخابات میں تاخیر کیوں؟

مقامی حکومتوں کے انتخابات میں تاخیر کیوں؟

01:10 pm

لوکل گورنمنٹ اختیارات کو نچلی سطح پر منتقل کرنے کی ایک صورت ہوتی ہے جسے جمہوریت یا عوام کی حکمرانی پر یقین رکھنے والے ممالک میں رواج دیا جاتا ہے۔ وہ ملک جہاں مقامی حکومتیں موجود نہ ہوں انہیں  جمہوری ممالک کہلوانے کا کوئی حق حاصل نہیں ہے۔ بادشاہت اور جمہوریت میں طرز حکمرانی کا جو بنیادی فرق ہوتا ہے وہ یہ ہے کہ بادشاہت میں ہر اختیار سمٹ کر بادشاہ سلامت کی ذات میں آجاتا ہے جبکہ عوام کی حکومت میں جو طرز حکمرانی متعارف کروایا جاتا ہے اس میں اختیارات ایک فرد کی بجائے منتخب اداروں کے پاس ہوتے ہیں اور مرکزی حکومت اپنی ذمہ داریوں اور اختیارات کو کم کرکے نچلی سطح یعنی مقامی حکومتوں کو قائم  کرتے  ہیں۔
 

بدقسمتی سے پاکستان جیسے ممالک جو بظاہر جمہوری ملک سمجھے جاتے ہیں لیکن وہاں مقامی حکومتوں کے قیام میں ہمیشہ ہچکچاہٹ کا مظاہرہ کیا گیا ہے۔ پاکستان کا آئین مقامی حکومتوں کے قیام کی بات کرتا ہے اور یہ بات باقاعدہ ریاست پاکستان کا پالیسی اصول ہے۔ آئین میں جہاں پالیسی اصولوں کا ذکر ہے وہاں آرٹیکل 32میں درج ہے کہ ریاست مقامی حکومت کے اداروں کی حوصلہ افزائی کرے گی۔ آرٹیکل 140-Aمیں لکھا ہے کہ ہر صوبائی حکومت لوکل گورنمنٹ سسٹم قائم کرے گی اور  سیاسی، انتظامی اور مالیاتی ذمہ داری و اختیارات کو مقامی حکومتوں کے منتخب نمائندوں کو منتقل کرے گی۔ اس آئینی ذمہ داری سے ہمیشہ پہلوتہی کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ جن جماعتوں کے قائدین کو بات بات پر جمہوریت اور آئین کا بخار چڑھ جاتا ہے۔ ان کی جمہوریت پسندی ملاحظہ کرنی ہو تو اس کو لوکل گورنمنٹ  کے قیام اور مقامی حکومتوں کو تفویض کئے گئے اختیارات کے آئینے میں دیکھنے کی کوشش کریں تو ظاہر ہو جائے گا کہ یہ کس قدر جمہوریت پسند ہیں اور آئین کی پابندی پر کس قدر یقین رکھنے والے لوگ ہیں۔ ان کا وعظ کچھ اور ہے اور عمل کچھ اور۔ ان کے دوغلے پن نے وطن عزیز کے سیاسی نظام کو عامۃ الناس کی نظروں میں مکروہ بنا دیا ہے۔ جمہوریت اہلیان وطن کے لئے قابل احترام اور مقدس نظام آج تک اس وجہ سے نہیںبن سکا کیونکہ جمہوریت کی روح کے مطابق نہ ان کا انداز حکمرانی رہا اور نہ ہی انہوں نے اختیارات کو جمہوریت کی سپرٹ کے مطابق مقامی سطح پر منتقل کرنے کی کوشش کی۔ اٹھارویں آئینی ترمیم کی رو سے اختیارات مرکز سے صوبوں کو منتقل کئے گئے مگر صوبوں نے انہیں ضلع، تحصیل اور یونین کونسلز تک منتقل نہ کیا۔ خیبرپختونخواہ گزشتہ دور حکومت میں ایک استثنیٰ رہا۔ وہاں تحریک انصاف کی حکومت نے ایک ماڈل لوکل گورنمنٹ سسٹم متعارف کرایا  اور صحیح معنوں میں اختیارات کو ضلع کی سطح پر منتقل کیا۔ مزید برآں ویلج کونسلوں کا قیام اور بلحاظ آبادی ان کو صوبائی حکومت کی جانب سے ڈائریکٹ فنڈز کی فراہمی ایسے منفرد اقدامات تھے جن کی ماضی میں کوئی مثال نہیں ملتی۔ آج لیکن تحریک انصاف کی حکومت بھی نئے لوکل گورنمنٹ سسٹم کی موشگافیوں میں الجھ گئی ہے۔ 
پنجاب میں بلدیاتی اداروں کے انتخابات میں تاخیر سے تحریک انصاف کی لوکل گورنمنٹ پالیسی کو بڑا دھچکا لگا ہے۔ وزیر اعظم عمران خان نے اپنے حالیہ دورئہ لاہور میں لوکل گورنمنٹ انتخابات کے جلد انعقاد پر زور دیا ہے جو ایک خوش آئند پیش رفت ہے۔ صوبہ پنجاب اس لحاظ سے بدقسمت رہا کہ ماضی کے نام نہاد حکمرانوں نے جو آئین اور قانون کی سربلندی کا لیکچر دیتے نہیں تھکتے اپنی اس آئینی ذمہ داری کو نبھانے سے  پہلوتہی کرتے رہے اور 2008ء  سے لے کر 2015ء تک کے سات سال لوکل گورنمنٹ الیکشن نہ کروائے۔ عدالت عظمیٰ کی مداخلت کے بعد 2015ء میں جب انتخابات مجبوراً کروانے پڑ گئے تو 2017ء تک ان اداروں کو کام نہ کرنے دیا گیا اور یہ ادارے انتخابات ہونے کے باوجود قائم نہ ہوسکے۔ یہ ہے مسلم لیگ (ن) کا اصل چہرہ۔ 2019ء میں تحریک انصاف کی حکومت نے نئے لوکل گورنمنٹ سسٹم کو متعارف کرایا۔ اس نئے مقامی حکومتوں کے نظام کے تحت انتظامی تبدیلیاں کی جانی تھیں جن کے لئے ایک سال کا وقت مقرر تھا لیکن سست روی کے باعث دو سال کا قیمتی وقت ضائع ہوگیا۔ یہ تاخیر تحریک انصاف کی حکومت  کے لئے بدنامی کا باعث بنی ہے۔ دریں اثناء عدالت عظمیٰ کے حکم پر ختم شدہ بلدیاتی اداروں کو بحال کر دیا گیا لہٰذا اب انتخابات ان اداروں کی معیاد جو دسمبر 2021ء  میں پوری ہو رہی ہے کے بعد ہی ہوں گے۔ توقع کی جاسکتی ہے کہ وزیراعظم کی ہدایت کے بعد پنجاب کی صوبائی حکومت مارچ 2022ء تک مقامی حکومتوں کا قیام عمل میں لا کر مالیاتی و انتظامی اختیارات کی نچلی سطح تک منتقلی یقینی بنائے گی۔
دوسری طرف صوبہ سندھ کے حکمران ہیں جو اپنے آپ کو جمہوریت کے چیمپئن سمجھتے ہیں ان کی جمہوریت سے محبت کا احوال ملاحظہ ہو۔ لوکل گورنمنٹ کے ادارے سندھ میں گزشتہ سال اپنی مدت پوری کر چکے ہیں لیکن سندھ حکومت نئے انتخابات کرانے سے گریزاں ہے۔ پہلے اس کا بہانہ تھا کہ مردم شماری کے سرکاری نتائج آنے کے  بعد بلدیاتی انتخابات کرائے جائیں گے لیکن اب جبکہ مردم شماری کے سرکاری نتائج پبلک کر دئیے گئے ہیں تو سندھ کے نام نہاد جمہوری  حکمران نئی تاویلیں تراش رہے ہیں۔ الیکشن کمیشن نے حلقہ بندیاں کرنا تھیں لیکن سندھ حکومت ضروری ڈیٹا اور نقشہ  جات کی فراہمی میں رکاوٹ بن رہی ہے۔ ایک نئی بہانہ بازی لوکل گورنمنٹ ایکٹ میں مجوزہ ترمیم ہے۔ جس پر عملدرآمد کے لئے چھ ماہ کا وقت مانگا جارہا ہے۔ اس بہانہ بازی کے تناظر میں بالآخر چیف الیکشن کمشنر کو کہنا پڑا کہ سندھ حکومت جان بوجھ کر انتخابات میں تاخیر کر رہی ہے۔ یہ ہیں وہ لوگ جو دعویٰ کرتے ہیں کہ جمہوریت ان کے خون میں شامل  ہے، اس دعوے کے برعکس ان کا عمل دیکھیں تو فسانے اور حقیقت میں فرق صاف نظر آتا ہے۔

تازہ ترین خبریں

اگلے 48گھنٹوں میں کہاں کہاں بارش کا امکان ہے؟ محکمہ موسمیات نے شہریوں کو ٹھنڈی ٹھنڈی نوید سنا دی

اگلے 48گھنٹوں میں کہاں کہاں بارش کا امکان ہے؟ محکمہ موسمیات نے شہریوں کو ٹھنڈی ٹھنڈی نوید سنا دی

سونے کی قیمتوں میں اڑھائی ہزار روپے سے زائد کا اضافہ ، ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا

سونے کی قیمتوں میں اڑھائی ہزار روپے سے زائد کا اضافہ ، ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا

عمران خان 2021بھی مکمل نہیں کرے گا، مریم نواز کو امریکی وفد نے کیا یقین دہانی کرا دی؟

عمران خان 2021بھی مکمل نہیں کرے گا، مریم نواز کو امریکی وفد نے کیا یقین دہانی کرا دی؟

مشکل حالات میں پاکستانیوں کیلئے بڑی خوشخبری ، ایسی خبر آگئی کہ پوری قوم اللہ کا شکر بجا لائیگی

مشکل حالات میں پاکستانیوں کیلئے بڑی خوشخبری ، ایسی خبر آگئی کہ پوری قوم اللہ کا شکر بجا لائیگی

آئی ایم ایف سے قرضہ حاصل کرنے کیلئے پاکستان ترلے منتیں کرنے لگا مگر۔۔۔۔آئی ایم ایف نے بھی اپنا فیصلہ سنا دیا

آئی ایم ایف سے قرضہ حاصل کرنے کیلئے پاکستان ترلے منتیں کرنے لگا مگر۔۔۔۔آئی ایم ایف نے بھی اپنا فیصلہ سنا دیا

پاکستانیوں کیلئے خوشخبری ، سرکاری چھٹی کااعلان کر دیا گیا

پاکستانیوں کیلئے خوشخبری ، سرکاری چھٹی کااعلان کر دیا گیا

راولپنڈی میں ایک لڑکی لاپتہ ہوئی ، بعد میں وہ کس حالت میں کہاں سے برآمد ہوئی ؟ پاکستانی سناٹے میں آگئے

راولپنڈی میں ایک لڑکی لاپتہ ہوئی ، بعد میں وہ کس حالت میں کہاں سے برآمد ہوئی ؟ پاکستانی سناٹے میں آگئے

تمام پاکستانیوں کا انتظار ختم ، 12ربیع الاول کو کون سااہم ترین نوٹیفیکیشن جا ری ہونے جا رہا ہے ؟ بڑی بریکنگ نیوز

تمام پاکستانیوں کا انتظار ختم ، 12ربیع الاول کو کون سااہم ترین نوٹیفیکیشن جا ری ہونے جا رہا ہے ؟ بڑی بریکنگ نیوز

بجلی کے بل چاہیں تو قسطوں میں ادا کردیں ، حکومت نے غریب عوام کی سن لی ، بڑا ریلیف دیدیا

بجلی کے بل چاہیں تو قسطوں میں ادا کردیں ، حکومت نے غریب عوام کی سن لی ، بڑا ریلیف دیدیا

راولپنڈی میں سیکیورٹی گارڈ نے ایک خاتون کے کپڑے پھاڑے اور شرمناک کام کرتا رہا ، لڑکی پوری رات سڑک کے بیچ بیٹھی روتی رہی؟ ویڈیو لنک میں 

راولپنڈی میں سیکیورٹی گارڈ نے ایک خاتون کے کپڑے پھاڑے اور شرمناک کام کرتا رہا ، لڑکی پوری رات سڑک کے بیچ بیٹھی روتی رہی؟ ویڈیو لنک میں 

زرتاج گل کے شوہر کو دل کا دورہ ، انتہائی نازک حالت میں ہسپتال لایا گیا مگر ۔۔۔۔ افسوسناک خبر آگئی

زرتاج گل کے شوہر کو دل کا دورہ ، انتہائی نازک حالت میں ہسپتال لایا گیا مگر ۔۔۔۔ افسوسناک خبر آگئی

عمران خان کو نقصان پہنچانے کیلئے مجھے کس نے مہرے کی طرح استعمال کیا۔۔ جمائما خان نے بڑا انکشاف کر دیا، پوری پاکستانی قوم ہکا بکا

عمران خان کو نقصان پہنچانے کیلئے مجھے کس نے مہرے کی طرح استعمال کیا۔۔ جمائما خان نے بڑا انکشاف کر دیا، پوری پاکستانی قوم ہکا بکا

دو شہروں کا فاصلہ گھنٹوں کی جگہ منٹوں میں ،پاکستان میں4لین پر مشتمل نئی عالی شان اموٹر وے بنانے کی تیاریاں ، منظوری دیدی گئی

دو شہروں کا فاصلہ گھنٹوں کی جگہ منٹوں میں ،پاکستان میں4لین پر مشتمل نئی عالی شان اموٹر وے بنانے کی تیاریاں ، منظوری دیدی گئی

دنیا کلے آلودہ ترین شہروں میں پاکستان کا ایک شہر پہلے اور ایک چوتھے نمبر پر ، جانتے ہیں یہ دونوں شہرکون سے ہیں

دنیا کلے آلودہ ترین شہروں میں پاکستان کا ایک شہر پہلے اور ایک چوتھے نمبر پر ، جانتے ہیں یہ دونوں شہرکون سے ہیں