12:36 pm
پختونخوا ، خوش گوار خبر، متفقہ نگران وزیراعلیٰ

پختونخوا ، خوش گوار خبر، متفقہ نگران وزیراعلیٰ

12:36 pm

٭…انتہائی خوش گوار خبر! شائستہ مہذب لوگوں کی شائستگی، پختونخوا: حکومت اور اپوزیشن نے پہلی ملاقات میں ہی نہائت مہذبانہ انداز میں نگران وزیراعلیٰ اعظم خان کا انتخاب کر لیا! وَیل ڈَن!! بے حد مبارکباد!O ’’نوازشریف کی حکومت کے خلاف عمران خان، دو جرنیلوں اور دو چیف جسٹسوں نے سازش کی‘‘ مریم نواز کی واپسی پر شاندار استقبال ہو گا!، رانا ثناء اللہO پاکستان 35 فیصد تیل روس سے منگوائے گا، دوسروں سے سستا مگر قیمت خفیہ رہے گیO سعودی عرب، چار ممالک کی لڑکیوں کا فٹ بال ٹورنامنٹ، پاکستانی ٹیم دوسرے نمبر پر! افغانستان میں لڑکیوں کی تعلیم بند! اسلامی سربراہی کانفرنس کی تشویش، افغانستان کا سخت جوابO قومی اسمبلی: پی ٹی آئی کے ارکان کے9 ماہ کے رکے ہوئے استعفوں کے کشتوں کے پُشتے! ایک دن میں 80 استعفے منظور O ایف آئی اے نے وزیراعظم کے بیٹے سلمان شہباز کو منی لانڈرنگ کیس میں بے قصور قرار دے دیا!O وزیراعظم شہبازشریف کی بھارت کو مذاکرات کی پیش کش، عمران خان اور وزیراعظم آزاد کشمیر کی سخت مذمتO شہبازشریف کو اعتماد کا ووٹ لینا پڑے گا: فواد چودھریO لکڑی 1400 روپے منO بلوچستان: پھر طوفانی بارشیں، شدید برف باری، گیس بند!!
٭…ملک میں جہاں ہر طرف گالم گلوچ، ایک دوسرے کی شدید مخالفت اور مذمت کا ناگوار طوفان برپا ہے، کراچی اور پنجاب میں طوفان بدتمیزی کی انتہا ہو گئی ہے، ایک دوسرے کے خلاف شعلے اگلے جا رہے ہیں، دھمکیاں، بھبکیاں! وہاں پشاور سے نہائت خوش گوار خبریں! پنجاب کا عالم یہ کہ گورنر نے اسمبلی تحلیل کرنے کی سمری پر دستخط کرنے سے انکار کر دیا۔ پختونخوا کے گورنر حاجی غلام علی کو رات ایک بجے سمری موصول ہوئی۔ صبح اٹھتے ہی اس پر دستخط کر دیئے۔ پنجاب کے مغرور وزیراعلیٰ پرویزالٰہی نے نگران وزیراعلیٰ کے لئے اپوزیشن سے ملنا بھی پسند نہ کیا اور اس کے پیش کردہ نام مسترد کر دیئے اور اپنے ناموں پر اصرار کیا۔ پہلا مرحلہ ناکام ہونے پر سپیکر کی مقرر کردہ پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس بھی ناکام، معاملہ الیکشن کمیشن کے پاس جا رہا ہے تو وزیراعلیٰ نے اعلان کر دیا کہ کمیشن کا مقرر کردہ نگران وزیراعلیٰ تسلیم نہیں کروں گا (نہ کرو، وہ تو آ رہا ہے!) ٭…اب پشاور چلئے۔ وزیراعلیٰ محمودخان نے اسمبلی تحلیل کرنے کی سمری تیار کی۔ گورنر حاجی غلام علی کو رات ایک بجے سمری ملی۔ انہوں نے صبح دفتر جا کر 9 بجے اس پر دستخط کر دیئے! (پنجاب کے گورنر کی طرح رسوائی مول نہیں لی) آغاز اچھا ہوا تو مزید خوش گوار بات کہ اسمبلی تحلیل ہونے کے بعد آئین کے مطابق وزیراعلیٰ محمود خان اور اپوزیشن لیڈر حاجی محمد اکرم درانی کے درمیان ابتدائی نشست منعقد ہوئی، کوئی جھگڑا نہیں ہوا، کوئی ٹھوں ٹھاں نہیں چند لمحوں میں دونوں فریقوں نے نہائت شائستہ اور مہذبانہ انداز میں صوبہ کے سابق چیف سیکرٹری اعظم خان کے نام پر اتفاق کر لیا۔ ایک دوسرے کو مبارکباد دی اور اتفاق رائے سے ایک سمری پر دستخط کرکے بیرونی یونیورسٹیوں کے اعلیٰ تعلیم یافتہ گورنر حاجی غلام علی کو بھیج دی، گورنر نے سمری پر فوراً دستخط کر کے اعظم خان کو نگران وزیراعلیٰ مقرر کر دیا۔ انتہائی قابل تحسین بات کہ وزیراعلیٰ اور اپوزیشن لیڈر نے ایک دوسرے کا بے حد احترام کیا، بڑے تپاک سے مصافحہ کیا، بڑے شائستہ انداز میں بات چیت کی اور اعظم خان کے نام پر اتفاق کا اظہار کر دیا! میں خود کو کسی ایک صوبے کا نہیں پورے پاکستان کا شہری قرار دیتا ہوں۔ رہتا لاہور میں ہوں، پنجاب کی حکومت اور اپوزیشن سمیت گورنر کے رویوں پر شرم سار ہو رہا ہوں اور پختونخوا کے نہائت محترم مہذب لوگوں کے لئے سراپا تحسین ہوں۔ مجھے کوئٹہ میں طویل قیام کے دوران وہاں پختون رہنمائوں اور عام لوگوں سے ملنے کا اتفاق ہوتا رہا، بے حد کشادہ دل، کشادہ بازو، مہمان ان کے گلے لگتے ہوا گھبراتا ہے، اتنے زور سے بغل گیر ہوتے ہیں کہ مہمان کا دم گھٹنے لگتا ہے۔ پنجاب کے لوگ بھی ہیر رانجھا، سوہنی مہینوال، مرزا صاحبہ کی رومانی فضا کے وارث اور نہائت کھلے دلوں والے لوگ ہیں مگر صد حَیف! کہ انہیں شرم ناک پاٹے خاں پھنے خاں قیادتیں گھیرے رہتی ہیں۔ پختونخوا زندہ باد!! ٭…پختونخوا کی بات ذرا لمبی ہو گئی مگر جہاں بے حد فضول باتوں پر روزانہ پورا کالم ضائع کرتا ہوں، وہاں ایک خوش گوار، رُوح افزا بات پر یہ چند سطریں بھی کم ہیں۔ چلئے اب فضول باتیں: ٭…عمران خان کہتا ہے کہ اس کی حکومت کے خلاف جنرل باجوہ، نوازشریف، شہبازشریف نے سازش کی۔ اور اب ن لیگ کی نئی ’صدر‘ مریم نواز کے روبرو سربسجدہ وزیرداخلہ رانا ثناء اللہ کا نیا ’’نوبال‘‘ کیا ہے کہ نوازشریف کی حکومت کے خلاف پانچ لوگوں نے سازش کی۔ ان میں عمران خان، جنرل باجوہ، جنرل فیض، سابق چیف جسٹس ثاقب نثار اور آصف سعید کھوسہ شامل تھے۔ گویا جنرل باجوہ عمران اور نوازشریف دونوں کے ’محسن‘ ٹھہرے! رانا ثناء اللہ کے بیانات پہلے کون سے سنجیدہ ہوتے ہیں؟یہ بیان بھی اسی طرح کا ہے۔ چلئے جرنیلوں کی بات چھوڑیں وہ تو لیاقت علی خان کے زمانے سے ہی سیاست کا لبادہ اوڑھے چلے آ رہے ہیں، مگر یہ بتائوء رانا ثناء اللہ! کہ سپریم کورٹ کے دو چیف جسٹس حضرات کو نوازشریف کے ساتھ کیا عداوت تھی؟ ٭…مخالف کی ہر بات کی مخالفت عام رویہ بن چکا ہے۔ وزیراعظم شہبازشریف نے ایک عام سادہ بات کہی کہ خطے میں امن کے قیام اور دہشت گردی کے انسداد کے لئے پاکستان اور بھارت میں مذاکرات ضروری ہیں۔ یہ محض رسمی بیان ہے۔ بھارت کے وزیر دفاع و داخلہ بار بار پاکستان کو دہشت گرد قرار دے رہے ہیںاور کہہ رہے ہیںکہ پاکستان کوکسی قسم کے مذاکرات سے پہلے بھارت کے خلاف دہشت گردی ختم کرنی ہو گی! پاکستان واضح الزام لگا چکا ہے کہ کشمیر، بلوچستان، پختونخوا اور پاکستان کے دوسرے علاقوں میں بھارت دہشت گردی کرا رہا ہے۔ ایک دوسرے کے خلاف ایسے انتہا پسندانہ ناموں میں مذاکرات کا ذکر مضحکہ خیز لگتا ہے مگر پھر امن کیسے قائم کیا جا سکتا ہے؟ جنگ کا ذکر چھوڑیں، تین جنگوںمیں دونوں طرف بے پناہ تباہی بربادی، ہزاروں جانیں ضائع اور پھر فوجیںاور مفتوحہ علاقے واپس، پھر 1965ء کی جنگ کے بعد تاشقند میں مذاکرات ہوتے ہیں اور جنرل ایوب خاں اپنے کاندھوں پر بھارتی وزیراعظم لال بہادر شاستری کی ارتھی اٹھا کر طیارے تک پہنچاتا ہے۔ دلیری، بہادری، غیرت، حمیت، کچھ یاد نہیں رہتا! اور پھر بھٹو اندرا گاندھی، ضیاء الحق راجیو، نواز واجپائی وغیرہ کے مذاکرات! یہ رسمی کارروائیاں سہی، مگر ایک دوسرے کے قریب آنے کا یہی واحد راستہ ہے۔ دو سال قبل چین بھارت میں سخت محاذ آرائی ہوئی۔ چینی فوجیوں نے صرف لاٹھیوں سے بھارت کے 20 فوجی ہلاک کر دیئے۔ اس کے بعد مذاکرات شروع ہوئے، اب تک جاری ہیں۔ شہباز شریف نے مذاکرات کی رسمی بات کی مگر موصوف کے خاندان کے ذہنوں سے بھارت کا سابق ’جاتی عمرا‘ گائوں نکلتا ہی نہیں! ان لوگوں کی پاکستان میں فیکٹریاں بھارتی لوہے سے بنی ہیں۔ اس پس منظرکے حوالے سے ’شریف‘ افراد کے منہ سے بھارت کے ساتھ بات چیت خاص رنگ اختیار کر لیتی ہے۔ عمران خان مذاکرات کی مخالفت کریں مگر دوسرا حل بھی بتائیں! ٭…قومی اسمبلی میں استعفوں کی منڈی لگی ہوئی ہے۔ سپیکر اسمبلی کے پاس 9 ماہ تک پی ٹی آئی کے 131 استعفے پڑے سُوکھتے رہے۔ پی ٹی آئی شورمچاتی رہی کہ استعفے منظور کرو، اب سپیکر نے اچانک ان استعفوںکے کشتوں کے پُشتے لگا دیئے ہیں۔ 24 گھنٹوں میں اک دم 80 استعفے منظور، ابھی مزید بھی سُولی چڑھنے والے ہیں۔ ان کی جلد منظوری کے مطالبہ والی تحریک انصاف اب چیخ رہی ہے کہ استعفے کیوں منطور کئے ہیں؟ اور پی ٹی آئی کو بار بار اسمبلی میں واپس آنے کی دعوت پر اصرار کرنے والے، سپیکر، خواجہ آصف وغیرہ الٹ قلابازیاں لگا کر دھمکیاں دے رہے ہیں کہ پی ٹی آئی کو اسمبلی میں گھسنے نہیں دیں گے۔ دونوں طرف ایک ہی جیسے لوگ!! صُبح ایک بیان،دوپہر کو یُوٹرن! الاماں! الاماں! ٭…قارئین کرام! پلیز میرے ساتھ تھوڑی سی ہمدردی! مجھے ہمیشہ سردیوں کی بارشیں بہت اچھی لگتی ہیں، اندر گرم لحاف میں کھڑکی کے باہر بوندا باندی کی ٹپ ٹپ آوازیں بہت مسحور کرتی ہیں۔ گزشتہ روز بہت طویل عرصہ کے بعد ہلکی بارش ہوئی۔ میں سویا ہوا تھا، پتہ ہی نہیں چلا! افسوس!


تازہ ترین خبریں

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کا جیل بھرو تحریک کا اعلان

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کا جیل بھرو تحریک کا اعلان

عمران خان کی نااہلی متوقع،پی ڈی ایم ضمنی الیکشن میں حصہ نہ لے، فضل الرحمن کا شہباز شریف کو مشورہ

عمران خان کی نااہلی متوقع،پی ڈی ایم ضمنی الیکشن میں حصہ نہ لے، فضل الرحمن کا شہباز شریف کو مشورہ

قتل  ہوا  تو  ذمہ دار آصف زرداری، بلاول، شہباز اور رانا ثنا اللہ ہوں گے، شیخ رشید   کا دعویٰ

قتل ہوا تو ذمہ دار آصف زرداری، بلاول، شہباز اور رانا ثنا اللہ ہوں گے، شیخ رشید کا دعویٰ

وزیرخزانہ اسحاق ڈار اپنے معاشی اعداد وشمار درست کریں، شوکت ترین کی تنقید

وزیرخزانہ اسحاق ڈار اپنے معاشی اعداد وشمار درست کریں، شوکت ترین کی تنقید

ہرجانہ کیس ، افتخار چوہدری کے اعتراض پر عمران خان کیخلاف بینچ تبدیل

ہرجانہ کیس ، افتخار چوہدری کے اعتراض پر عمران خان کیخلاف بینچ تبدیل

انتقامی کارروائیوں سے معیشت بہتر نہیں ہوگی،حکومت الیکشن کا اعلان کرے مذاکرات  کیلئے تیار ہیں، فیصل جاوید

انتقامی کارروائیوں سے معیشت بہتر نہیں ہوگی،حکومت الیکشن کا اعلان کرے مذاکرات کیلئے تیار ہیں، فیصل جاوید

تحریک انصاف کے سابق ارکان قومی اسمبلی سے پارلیمنٹ لاجز کے کمرے خالی کروالئے گئے

تحریک انصاف کے سابق ارکان قومی اسمبلی سے پارلیمنٹ لاجز کے کمرے خالی کروالئے گئے

شیخ رشید  اسلام آباد کے کسی تھانے میں موجود نہیں، راشد شفیق کا دعویٰ

شیخ رشید اسلام آباد کے کسی تھانے میں موجود نہیں، راشد شفیق کا دعویٰ

حکومتی ترجیحات امن نہیں، مقدمات ہیں، ہمیں کسی اور کی جنگ کاایندھن بنایا جارہا ہے، مراد سعیدکا انکشاف

حکومتی ترجیحات امن نہیں، مقدمات ہیں، ہمیں کسی اور کی جنگ کاایندھن بنایا جارہا ہے، مراد سعیدکا انکشاف

مہنگائی میں اضافے سے عوام کو تکلیف پہنچی ،ہم سب جانتے ہیں، وزیرخزانہ اسحاق ڈار

مہنگائی میں اضافے سے عوام کو تکلیف پہنچی ،ہم سب جانتے ہیں، وزیرخزانہ اسحاق ڈار

سابق وفاقی وزیر شیخ رشید کیخلاف کراچی میں مقدمہ درج ، پولیس گرفتاری کیلئے اسلام آباد پہنچ گئی

سابق وفاقی وزیر شیخ رشید کیخلاف کراچی میں مقدمہ درج ، پولیس گرفتاری کیلئے اسلام آباد پہنچ گئی

کوہاٹ تاندہ  ڈیم خادثہ ، آخری طالب علم  کی لاش 6 روز بعد  نکال لی گئی،جاں بحق ہونیوالوں کی تعداد 53 ہو گئی

کوہاٹ تاندہ ڈیم خادثہ ، آخری طالب علم کی لاش 6 روز بعد نکال لی گئی،جاں بحق ہونیوالوں کی تعداد 53 ہو گئی

معروف اینکر عمران ریاض خان کیخلاف مقدمہ خارج ، عدالت کا فوری رہا کرنے کا حکم

معروف اینکر عمران ریاض خان کیخلاف مقدمہ خارج ، عدالت کا فوری رہا کرنے کا حکم

شیخ رشید کی مشکلات میں مزید اضافہ، مری میں بھی مقدمہ درج

شیخ رشید کی مشکلات میں مزید اضافہ، مری میں بھی مقدمہ درج