12:44 pm
انسانی ضروریات اور معاوضوں کا تفاوت

انسانی ضروریات اور معاوضوں کا تفاوت

12:44 pm

(الف) اتنی طویل مدت ملازمت کے بعد آج کے اس شدید ترین مہنگائی کے دور میں اس کی تنخواہ کا معیار اس کے مناصب کے لحاظ سے کیا ہونا چاہیے؟ ادارہ کے
(گزشتہ سے پیوستہ)
(الف) اتنی طویل مدت ملازمت کے بعد آج کے اس شدید ترین مہنگائی کے دور میں اس کی تنخواہ کا معیار اس کے مناصب کے لحاظ سے کیا ہونا چاہیے؟ ادارہ کے اس سینئر ترین ملازم کو مدرس کی تنخواہ اس کے شاگرد اور ساڑھے پانچ سال جونیئر ملازم سے بھی کم 8900 روپے کارہائے خصوصی کے، 3100روپے (دو ملازمتوں کی تنخواہ ملا کر 9000) بغیر طعام و قیام وغیرہ کی سہولت کے، اور امام و خطابت کے صرف 3500 کسی بھی قسم کی طعام و قیام وغیرہ کی سہولت کے بغیر، یعنی تین اہم ترین ملازمتوں کی کل تنخواہ چوبیس سے اٹھائیس سال کے عرصہ ملازمتوں کے بعد 12500روپے دی جا رہی ہے۔ جبکہ اگر کسی شخص کا کسی دنیاوی کمپنی یا ادارہ یا بینک وغیرہ میں یا کسی سرکاری و نیم سرکاری ادارہ میں چوبیس سے اٹھائیس سال کا عرصہ ہو چکا ہو، وہ بھی ادنیٰ ترین درجہ کی ملازمت کا مثلاً ایک غیر تعلیم یافتہ، انگوٹھا چھاپ، چوکیدار، گارڈ، چپراسی، قاصد، ڈرائیور کی ملازمت کرنے والے کو بھی بہت سی مراعات کے ساتھ صرف ایک ملازمت کے 12000سے 15000کے درمیان ماہانہ تنخواہ دی جا رہی ہے۔
(ب) تو کیا اس دینی ادارے کے ملازم کی بذات خود اور ان تینوں اہم مناصب کی بھی یہ تذلیل نہیں ہے؟ یہ دینی ادارے کا ملازم زید خود صاحب حیثیت بھی نہیں ہے، کرایہ کے مکان میں رہتا ہے، شادی شدہ ہے، الحمد للہ تین بچے بھی ہیں۔ کرایہ مکان، بل بجلی، بل گیس اور کرایہ آمد و رفت میں ہی 7000سے 8000خرچ ہو جاتے ہیں۔ بقیہ 5000میں گھر کا ماہانہ راشن، علاج معالجہ، کپڑا لتا، بچوں کے اسکول وغیرہ کی فیس و دیگر بنیادی ضروریات زندگی پورا کرنا مشکل ہی ناممکن ہو جاتا ہے۔ کیونکہ ادارہ کی ان تینوں ملازمتوں کے علاوہ زید کے پاس کوئی اور ذرائع آمدن نہیں ہیں اور بارہ سے چودہ گھنٹے کی ملازمتوں کے بعد کسی دوسرے امور و ملازمت کے لیے بھی وقت نہیں ملتا ہے۔ جبکہ اسی ادارے میں آج اگر کسی نئے مؤذن و خادم مسجد کا تقرر کیا جاتا ہے تو 5000 روپے طعام و قیام کی سہولت کے ساتھ یہاں تک کہ نئے چوکیدار یعنی ادنیٰ درجہ کے ملازم کا تقرر بھی کم از کم 3500روپے پر طعام و قیام کی سہولت کے ساتھ کیا جاتا ہے۔ جبکہ ان لوگوں کی تنخواہ بھی آج کے اس ہوشربا مہنگائی کے دور کے حساب سے کچھ بھی نہیں ہے۔
(ج) بلکہ مجبوری سے ناجائز فائدہ اٹھاتے ہوئے کیا یہ ظلم کے زمرے میں نہیں آئے گا؟ کیا دینی ادارے کی انتظامیہ کا یہ عمل درست ہے یا خلاف شرع اور ناجائز ہے؟ اور مؤذن و خادم کی تنخواہ امام سے زیادہ مقرر کر کے، جبکہ وہ صلاحیت و قابلیت میں امام کے مقابلے میں بہت کمتر ہو اور چوبیس سال امام سے جونیئر ہو تو کیا یہ امام کے منصب او رخود امام کی بھی توہین نہیں ہے؟
کیا ادارہ یا مساجد و مداس کی انتظامیہ کمیٹی کی ائمہ مساجد، مؤذن و خادم مسجد کے لیے رہائش کا انتظام گھر یا اس کا کرایہ وغیرہ دینے کی ذمہ داری ہے کہ نہیں؟ تاکہ یہ حضرات سکون قلب کے ساتھ بہ حسن خوبی اپنے فرائض منصبی انجام دے سکیں۔
آج پوری دنیا میں کسی بھی مذہب سے تعلق رکھنے والے کسی بھی ادارہ کے ملازم کو ان سالانہ رخصتوں کے علاوہ جو اس ادارے وغیرہ کی طرف سے متعین ہوتی ہیں، ہفتہ میں ایک رخصت ضرور دی جاتی ہے تاکہ وہ اپنے اہل و عیال، رشتہ دار وغیرہ کے حقوق کی ادائیگی اور دیگر گھریلو ضروریات وغیرہ سے خوش اسلوبی سے عہدہ برآ ہو سکے۔ تو کیا ائمہ کرام، مؤذنین و خادمین مسجد کو ہفتہ میں ایک رخصت دینا ناجائز و حرام ہے؟ کیا یہ ان کی تحقیر و تذلیل میں شمار نہیں ہوگا؟ کیونکہ کسی دینی ادارے کی انتظامیہ امام و خطیب، مؤذن و خادم مسجد کو ہفتہ میں ایک بھی رخصت نہیں دیتی۔ کیا انتظامیہ کا یہ عمل خلاف شرع ہے یا صحیح ہے؟
ازراہِ کرم و عنایت شرع کی رو سے آج کے اس ہوشربا مہنگائی کے دور میں بھرپور طریقے سے مدنظر رکھتے ہوئے، نیز دنیاوی امور کے سلسلہ میں ملازمت، چاہے وہ ادنیٰ درجہ کا چوکیدار، گارڈ، نائب قاصد وغیرہ کی ملازمت ہو، بھاری تنخواہ پانے والے راج، مستری، پلمبر، الیکٹریشن، کار پینٹر یا ان کے ہیلپر وغیرہ کی یومیہ اجرت کے حساب سے ماہانہ رقم (کم وقت یعنی آٹھ سے نو گھنٹے کام کر کے صرف)، اور دینی امور کی خدمات انجام دینے والے حضرات کے مناصب و مراتب اور زیادہ اوقات کار اور دنیاوی لوگوں کی آمدنی اور دینی امور کی خدمات انجام دے کر ماہانہ آمدنی کے تقابل کو بھی خصوصی طور پر ملحوظ رکھتے ہوئے (کیونکہ گھر بار، اہل و عیال اور بنیادی ضروریات زندگی وغیرہ کے مسائل سب کے ساتھ ہیں) مندرجہ بالا تمام سوالات کے مدلل و مفصل جوابات مرحمت فرما کر ممنون و مشکو رفرمائیں۔ تاکہ سائل کے علاوہ دیگر عوام و خواص کی معلومات میں بھی اضافہ ہو جائے، نیز درپیش تمام مسائل سے متعلق معلومات حاصل ہو کر اصلاح بھی ہو جائے گی، ان شاء اللہ تعالیٰ۔
 


تازہ ترین خبریں

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کا جیل بھرو تحریک کا اعلان

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کا جیل بھرو تحریک کا اعلان

عمران خان کی نااہلی متوقع،پی ڈی ایم ضمنی الیکشن میں حصہ نہ لے، فضل الرحمن کا شہباز شریف کو مشورہ

عمران خان کی نااہلی متوقع،پی ڈی ایم ضمنی الیکشن میں حصہ نہ لے، فضل الرحمن کا شہباز شریف کو مشورہ

قتل  ہوا  تو  ذمہ دار آصف زرداری، بلاول، شہباز اور رانا ثنا اللہ ہوں گے، شیخ رشید   کا دعویٰ

قتل ہوا تو ذمہ دار آصف زرداری، بلاول، شہباز اور رانا ثنا اللہ ہوں گے، شیخ رشید کا دعویٰ

وزیرخزانہ اسحاق ڈار اپنے معاشی اعداد وشمار درست کریں، شوکت ترین کی تنقید

وزیرخزانہ اسحاق ڈار اپنے معاشی اعداد وشمار درست کریں، شوکت ترین کی تنقید

ہرجانہ کیس ، افتخار چوہدری کے اعتراض پر عمران خان کیخلاف بینچ تبدیل

ہرجانہ کیس ، افتخار چوہدری کے اعتراض پر عمران خان کیخلاف بینچ تبدیل

انتقامی کارروائیوں سے معیشت بہتر نہیں ہوگی،حکومت الیکشن کا اعلان کرے مذاکرات  کیلئے تیار ہیں، فیصل جاوید

انتقامی کارروائیوں سے معیشت بہتر نہیں ہوگی،حکومت الیکشن کا اعلان کرے مذاکرات کیلئے تیار ہیں، فیصل جاوید

تحریک انصاف کے سابق ارکان قومی اسمبلی سے پارلیمنٹ لاجز کے کمرے خالی کروالئے گئے

تحریک انصاف کے سابق ارکان قومی اسمبلی سے پارلیمنٹ لاجز کے کمرے خالی کروالئے گئے

شیخ رشید  اسلام آباد کے کسی تھانے میں موجود نہیں، راشد شفیق کا دعویٰ

شیخ رشید اسلام آباد کے کسی تھانے میں موجود نہیں، راشد شفیق کا دعویٰ

حکومتی ترجیحات امن نہیں، مقدمات ہیں، ہمیں کسی اور کی جنگ کاایندھن بنایا جارہا ہے، مراد سعیدکا انکشاف

حکومتی ترجیحات امن نہیں، مقدمات ہیں، ہمیں کسی اور کی جنگ کاایندھن بنایا جارہا ہے، مراد سعیدکا انکشاف

مہنگائی میں اضافے سے عوام کو تکلیف پہنچی ،ہم سب جانتے ہیں، وزیرخزانہ اسحاق ڈار

مہنگائی میں اضافے سے عوام کو تکلیف پہنچی ،ہم سب جانتے ہیں، وزیرخزانہ اسحاق ڈار

سابق وفاقی وزیر شیخ رشید کیخلاف کراچی میں مقدمہ درج ، پولیس گرفتاری کیلئے اسلام آباد پہنچ گئی

سابق وفاقی وزیر شیخ رشید کیخلاف کراچی میں مقدمہ درج ، پولیس گرفتاری کیلئے اسلام آباد پہنچ گئی

کوہاٹ تاندہ  ڈیم خادثہ ، آخری طالب علم  کی لاش 6 روز بعد  نکال لی گئی،جاں بحق ہونیوالوں کی تعداد 53 ہو گئی

کوہاٹ تاندہ ڈیم خادثہ ، آخری طالب علم کی لاش 6 روز بعد نکال لی گئی،جاں بحق ہونیوالوں کی تعداد 53 ہو گئی

معروف اینکر عمران ریاض خان کیخلاف مقدمہ خارج ، عدالت کا فوری رہا کرنے کا حکم

معروف اینکر عمران ریاض خان کیخلاف مقدمہ خارج ، عدالت کا فوری رہا کرنے کا حکم

شیخ رشید کی مشکلات میں مزید اضافہ، مری میں بھی مقدمہ درج

شیخ رشید کی مشکلات میں مزید اضافہ، مری میں بھی مقدمہ درج