12:50 pm
حکومت و اپوزیشن کی قومی کانفرنس کی خوش آئند پیش رفت

حکومت و اپوزیشن کی قومی کانفرنس کی خوش آئند پیش رفت

12:50 pm

٭…ملک کے تمام سیاسی رہنمائوں افواج، مالی ماہرین کی قومی کانفرنس کی تیاریاں، عمران خان کی شرکت بھی متوقعO ’’پہلے حالات درست کرو پھر امداد ملے گی‘‘ آئی ایم ایف، عالمی بنک وغیرہ کا انتباہ O عمران خان نے وزیراعظم شہباز شریف سے مذاکرات کی پیش کش قبول کر لیOپیپلزپارٹی کی آل پارٹیز کانفرنس، ڈیجیٹل مردم شماری نامنظور O پاکستان کو چینی بنک سے مزید 50 کروڑ ڈالر مل گئےO عمران خان کی اسلام آباد کی عدالتوں میں پیشیاں، عدالت کی جگہ تبدیل O پنجاب پولیس عمران کو سکیورٹی دے گیO اسلام آباد میں دفعہ 144، پی ٹی آئی کو انتباہO اگلے 10 دن بہت اہم ہیں: شیخ رشیدO ایف آئی اے، ہوائی اڈوں پر ’وِی آئی پی‘ پروٹوکول ختم، ہر اِک کا سامان چیک ہو گاO گورنر پختونخوا کا یوٹرن ’’ابھی صوبائی اسمبلی کے انتخابات کا دن طے نہیں ہوا‘‘O میرے خلاف 94 مقدمے قائم کئے جا چکے ہیں‘‘ عمران خان کا لاہور ہائی کورٹ میں بیان O بھارت، آسام میں مسلمانوں کے 600 مدارس بند کر دیئے گئے، ان کی ضرورت نہیں، وزیراعلیٰ کا بیان Oشعیب شیخ کے ذمے 14 کروڑ60 لاکھ کا ٹیکس واجب ہے، اس کا مکان بیچنا پڑے گا، ایف آئی اے کا بیان O صوبوں کے انتخابات الگ کرانے سے قومی اسمبلی کو نقصان پہنچے گا، احسن اقبالO عمران خان کی اپنے مقدمات کی تعداد معلوم کرنے کے لئے عدالت سے استدعا۔
٭…کراچی سے روزنامہ اوصاف کے نمائندہ ابرار بختیار کی خبر نمایاں شائع ہوئی ہے کہ بالآخر حکومت اور اپوزیشن کو ہوش آ گیا ہے اور انہوں نے ایک دوسرے سے مل کر ملکی بدحالی کو دور کرنے کے لئے مشترکہ کانفرنس منعقد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ایوان صدر میں اس کانفرنس میں زندگی کے تقریباً تمام شعبے، حکومت، اپوزیشن، افواج، پولیس، صنعت و تجارت، اسمبلیوں کے سپیکر، سینٹ کا چیئرمین حتیٰ کہ عدلیہ کے نمائندے بھی شریک کئے جانے کا امکان ہے۔ ایک امید افزا بات یہ ہے کہ شہباز شریف نے بطور وزیراعظم مختلف اطراف سے مل بیٹھنے کی جو اپیل کی ہے اسے عمران خان نے قبول کر لیا ہے۔ یہ بہت اہم پیش رفت ہے۔ آپس کی لڑائیوں اور بے معنی جھگڑوں نے ملک کو دیوالیہ پن کی حالت تک پہنچا دیا ہے۔ زرمبادلہ ختم ہو گیا ہے، مہنگائی بالکل ناقابل برداشت ہو گئی، بجلی، گیس پانی، گھی، گوشت اور پٹرول کے نرخ بے قابو ہو چکے ہیں۔ گزشتہ دنوں زمان پارک لاہور میں تحریک انصاف اور پولیس کے درمیان جو کچھ ہوا، اس کا فوری نتیجہ تو یہ غلط ہے کہ ہر قسم کی ناقابل برداشت شرائط مان لینے کے باوجود آئی ایم ایف نے صاف کہہ دیا ہے کہ پہلے اپنے حالات ٹھیک کرو، پھر امداد کی بات کرنا۔ حقیقت بھی یہی ہے کہ موجودہ حالات کے تحت کوئی بھی شخص ملک کے حالات کی آئندہ بہتری کی ضمانت نہیں دے سکتا۔ ایک دوسرے کے خلاف نفرتیں اور کدورتیں اتنی بڑھ گئی ہیں کہ بات شہریوں کی لاشوں تک پھیل گئی ہے۔ اس موقع پر کسی ایک کو غلط یا درست قرار دینے کی بجائے، سب حلقوں سے مخلصانہ اپیل ہے کہ خدا کے لئے ایک دوسرے کے خلاف خونریز اشتعال انگیز کارروائیوں، دھمکیوں اور مختلف حربوں سے فسادات پھیلانے سے گریز کیا جائے۔ لاہور کے زمان پارک کے حالیہ واقعات کا فوری اثر ہوا ہے کہ امریکہ، چین اور دوسرے دوست ممالک نے کھلے عام پاکستان کو انتباہ کرنے شروع کر دیئے ہیں کہ فوری طور پر اپنے حالات درست کرو ورنہ سخت اذیت سے دوچار ہو جائو گے! ٭…خبر میں بتایا گیا ہے کہ ملک میں امن و امان کی خاطر منعقد کی جانے والی قومی امن کانفرنس میں سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کو بھی شریک کرنے پر غور کیا جا رہا ہے۔ یہ بالکل مناسب نہیں۔ عدلیہ کا منصب کسی فیصلے میں شریک ہونے کا نہیں بلکہ مختلف تنازعات کے فیصلے اور بنیادی حقوق کا تحفظ فراہم کرنے کا ہے۔ عدلیہ کا منصب سب سے بلند ہوتا ہے۔ کسی کانفرنس میں شریک ہونے سے اس کے اس منصب کا رعب اور دبدبہ قائم نہیں رہ سکتا۔ ویسے اگر اس کانفرنس کو بامقصد بنانا ہے تو اس کے لئے فوری عملی اقدامات ضروری ہیں۔ فوری حل تو ہے کہ تمام لڑائیوں جھگڑوں اور ہر قسم کے اختلافات کو کچھ وقت کے لئے نظر انداز کر کے فوری طور پر قومی حکومت تشکیل دی جائے جس میں موجودہ حکومت کے 85 ارکان کے بھیڑ بکریوں کے ریوڑ کی طرح وزرا کا بے مقصد ہجوم نہ جمع کر لیا جائے بلکہ امریکہ کی طرح پارلیمنٹ کی بجائے یونیورسٹیوں کے ماہر اقتصادی اساتذہ، عدلیہ، افواج اور صنعتی و زرعی ماہرین پر مشتمل عارضی کابینہ بنائی جائے جو ملک کی حالت بہتر بنانے کے بارے میں عملی اقدامات کرے۔ یہ میری تجویز ہے، اس کا متبادل بھی سوچا جا سکتا ہے بہر حال بڑے پریشان کن ماحول میں اچھی خبر سُننے میں آئی ہے۔ اس پر عملدرآمد بھی حکومت کی ذمہ داری بھی بنتی ہے۔ ٭…اب حُسنِ عمل دیکھیں، وزیراعظم ایک طرف قومی یک جہتی کی اپیلیں کر رہے ہیں دوسری پنجاب پولیس ہر شہر میں چُن چُن کر تحریک انصاف کے رہنمائوں اور کارکنوں کو گرفتار کر رہی ہے۔ لاہور میں یہ تعداد کئی درجن ہو چکی ہے۔ بدقسمتی کہ عمران خان کے قافلے میں اسلام آباد جاتے ہوئے راستے میں کلر کہار کے قریب قافلہ میں شریک چار گاڑیاں ایک دوسری سے ٹکرا کر الٹ گئیں۔ تفصیل اخبارات میں موجود ہے۔ پولیس زمان پارک میں جمع تحریک انصاف کے کارکنوں کے اجتماع پر چھاپے بھی مار رہی ہے۔ ٭…اب ذرا پارٹیوں کا حال۔ وزیراعظم شہبازشریف نے حالات بہتر بنانے کے لئے اپوزیشن کو مذاکرات کی دعوت دی، تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان اور ترجمان فواد چودھری نے دعوت قبول کرنے کا اعلان کر دیا مگر ن لیگ کے ہی رہنما خواجہ آصف نے بیان دیا ہے کہ عمران خان ہر وقت اپنا بیانیہ بدلتا رہتا ہے، اس سے کوئی بات نہیں ہو سکتی۔ آصف زرداری بھی عمران سے بات کرنے سے انکار کر چکے ہیں۔ مگر حقائق اور موجودہ بدحال صورت حال بتا رہی ہے کہ بالآخر سب افراد کو اکٹھا ہونا پڑے گا۔ اسی میں عافیت ہے۔ کالم شائع ہونے تک بہت سی خبریں، بہت سے فیصلے سامنے آ چکے ہوں گے۔ میں بہتری کی دُعا کر رہا ہوں۔ ویسے سیاست میں ہر جائز ناجائز حربہ چلتا ہے۔ ایوب خان اور ذوالفقار علی بھٹو نے ہنگامے کرنے والے اپوزیشن رہنمائوں سے مذاکرات کا اس وقت سوچا جب صورت حال ’’گرد آلود‘‘ ہو چکی تھی۔ ٭…ن لیگ کے احسن اقبال نے اہم نکتہ بیان کیا ہے کہ قومی اسمبلی سے پہلے وفاقی حکومت کی مخالف (تحریک انصاف) کوئی پارٹی کسی صوبائی اسمبلی میں اکثریت حاصل کر گئی تو وہ قومی اسمبلی کے انتخابات پر اثر انداز ہو سکتی ہے، اس لئے قومی و صوبائی اسمبلیوں کے انتخابات آگے پیچھے نہیں بلکہ ایک ہی وقت میں ہونے چاہئیں۔ یہی تو وہ واحد اور اہم ترین نکتہ ہے جس پر حکومت اور تحریک انصاف کی سیاست چل رہی ہے۔ حکومت شدید مہنگائی کے باعث انتخابات میں عوام کا سامنا کرنے کی حالت میں نہیں، اس کا تحریک فائدہ اٹھا سکتی ہے۔ ٭…کالم لکھتے وقت ٹیلی ویژن پر نظر پڑی ہے تو سنسنی خیز عجیب خبریں سامنے آ رہی ہیں کہ عمران خان کے اسلام آباد روانہ ہونے کے بعد لاہور کی پولیس نے عمران خان کے مکان واقع زمان پارک پر چھاپہ مارا، اور عمران خان کی رہائش گاہ پر کرین سے حملہ کر کے اس کا صدر دروازہ اور اردگرد کی دیواروں توڑ دیں اور خیمے اکھاڑ دیئے۔ پولیس مکان کے اندر داخل ہو گئی اور تحریک انصاف کے مزید 15 کارکن گرفتار کر لئے۔ اطلاعات کے مطابق گھر کے اندر صرف بشریٰ بی بی اکیلی موجود تھیں۔ تحریک انصاف کے سیکرٹری جنرل اسد عمر کے مطابق پولیس اب گھر سے اسلحہ کا بھاری ذخیرہ دکھائے گی۔ دوسری طرف اسلام آباد میں دفعہ 144 کے باعث عمران خان کے ساتھ جلوس کو اسلام آباد کے ٹول پلازہ پر روک دیا گیا، جوڈیشل کامپلیکس کے باہر قیدیوں والی گاڑی پہنچا دی گئی، پیمرا نے اسلام آباد میں انٹرنیٹ سسٹم بند کروا دیا۔ آخری خبر آنے تک صورت حال بگڑتی جا رہی تھی۔ خدا تعالیٰ رحم فرمائے۔ ایک طرف قومی کانفرنس کی خوش گوار دعوتیں، دوسری طرف مخالفین کے ساتھ یہ سلوک!! استغفراللہ: خدا تعالیٰ کرم فرمائے!!ش

تازہ ترین خبریں

ٹیکس چوری روکنے کیلئے نئے اقدامات، نان فائلرز سے زیادہ وصولی کی تجاویز

ٹیکس چوری روکنے کیلئے نئے اقدامات، نان فائلرز سے زیادہ وصولی کی تجاویز

عمران خان کے گھر سرچ آپریشن کی پولیس درخواست منظور

عمران خان کے گھر سرچ آپریشن کی پولیس درخواست منظور

حکومت کا آڈیو لیکس کمیشن بینچ پر اعتراض،نیا بینچ تشکیل دینے کی استدعا

حکومت کا آڈیو لیکس کمیشن بینچ پر اعتراض،نیا بینچ تشکیل دینے کی استدعا

انتشار پھیلانے والوں کیساتھ مذاکرات نہیں ہوسکتے، وزیراعظم شہبازشریف

انتشار پھیلانے والوں کیساتھ مذاکرات نہیں ہوسکتے، وزیراعظم شہبازشریف

پی ٹی آئی نے جھوٹی پریس کانفرنس کرنے پر عبدالقادر پٹیل کو 10 ارب ہرجانے کا نوٹس بھجوادیا

پی ٹی آئی نے جھوٹی پریس کانفرنس کرنے پر عبدالقادر پٹیل کو 10 ارب ہرجانے کا نوٹس بھجوادیا

مبینہ آڈیو لیکس کی تحقیقات کیلئے تشکیل کمیٹی  عدالت میں چیلنج

مبینہ آڈیو لیکس کی تحقیقات کیلئے تشکیل کمیٹی عدالت میں چیلنج

عمران خان   ناراض ، ڈاکٹر عارف علوی سے بات کرنا چھوڑ دیا

عمران خان ناراض ، ڈاکٹر عارف علوی سے بات کرنا چھوڑ دیا

عالمی مالیاتی ادارے کی آئی ایم ایف پروگرام کی بحالی کیلئے انوکھی شرط سامنے آگئی

عالمی مالیاتی ادارے کی آئی ایم ایف پروگرام کی بحالی کیلئے انوکھی شرط سامنے آگئی

سپیکر ، ڈپٹی سپیکرگلگت بلتستان آمنے سامنے ، سپیکرکیخلاف عدم اعتماد تحریک آج پیش کی جائےگی

سپیکر ، ڈپٹی سپیکرگلگت بلتستان آمنے سامنے ، سپیکرکیخلاف عدم اعتماد تحریک آج پیش کی جائےگی

صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی اور وزیراعظم شہباز شریف آج کوئٹہ کا دورہ کریں گے

صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی اور وزیراعظم شہباز شریف آج کوئٹہ کا دورہ کریں گے

فواد چوہدری ، پرویزخٹک ، اسد عمر کو القادر ٹرسٹ کیس میں پیش ہونے کے نوٹس جاری

فواد چوہدری ، پرویزخٹک ، اسد عمر کو القادر ٹرسٹ کیس میں پیش ہونے کے نوٹس جاری

میری پوزیشن اس وقت کمزور ہو گی جب۔۔۔!!!عمران خان نے خود ہی بڑے راز سے پردہ اٹھا دیا

میری پوزیشن اس وقت کمزور ہو گی جب۔۔۔!!!عمران خان نے خود ہی بڑے راز سے پردہ اٹھا دیا

وزیراعظم کسی عدالت کے سامنے جوابدہ نہیں ہیں،عرفان قادر

وزیراعظم کسی عدالت کے سامنے جوابدہ نہیں ہیں،عرفان قادر

نو مئی سانحہ قابل مذمت، پی ڈی ایم منافقت سے کام لے رہی ہے، پی ٹی آئی سینیٹرز

نو مئی سانحہ قابل مذمت، پی ڈی ایم منافقت سے کام لے رہی ہے، پی ٹی آئی سینیٹرز