09:00 am
سردیوں میں رکھیں پائوں کا خیال

سردیوں میں رکھیں پائوں کا خیال

09:00 am

بلاشبہ نرم وملائم اور خوب صورت پاؤں شخصیت کو چار چاند لگا دیتے ہیں اس کے برعکس اگر ان پر توجہ نہ دی جائے تو یہ دیکھنے میں انتہائی بد نما لگتے ہیں کہتے ہیں اگرکسی کی شخصیت کا اندازہ لگانا ہوتو اس کے پاؤں پر نظر ڈالی جائے کہ پاؤں شخصیت کے کئی راز ظاہر کر دیتے ہیں اس لئے جہاں چہرے اور ہاتھوں کی خوبصورتی کا خیال رکھا جاتا ہے وہاں پیروں کو بھی ہر گز نظر انداز نہ کیا جائے موسم چاہے کوئی بھی ہو سب سے پہلے پاؤں خصوصاً ایڑیوں پر اثر انداز ہوتا ہے پاؤں کی جلد موسمی اثرات سب سے پہلے قبول کرتی ہے صرف سرد موسم میں ہی نہیں گرم موسم میں بھی پاؤں کی جلد اکثر پھٹ جاتی ہے جس کے لئے عرق گلاب کے ایک گلاس میں گلیسرین کے دو بڑے چمچ اور ایک بڑا چمچ لیموں کارس نچوڑ کر اچھی طرح مکس کرکے کسی صاف ستھری شیشی میں بھر کر رکھ لیں یہ محلول روزانہ رات کو سوتے وقت پیروں پر ملیں کچھ ہی دنوں میں پھٹی ہوئی جلد ٹھیک ہو جائے گی پاؤں کی تھکاوٹ اور بد نمائی دور کرنے کے لئے ایک چھوٹے ٹب میں گرم پانی لیں اور اس میں تھوڑا سا نمک ملا کر0 2منٹ تک اس میں پاؤں ڈبوئے رکھیں پھر جھانویں کے ساتھ صاف کرلیں اور کوئی سی بھی کریم لگا لیں روزانہ یہ عمل کرنے سے پاؤں نر و ملائم اور پُرکشش ہو جائیں گے اگر پاؤں کی جلد میں کٹ کے نشان ہیں تو موم اور تیل گرم کرکے لگائیں اور موزے پہن لیں سرسوں کے ہلکے گرم تیل سے مساج کرنے سے بھی پاؤں صاف ہو جاتے ہیں بند جوتے پہننے سے پاؤں سے ایک عجیب سی بُو آنے لگتی ہے اس سے نجات کے لئے نیم کے پتوں کو سُکھا پاؤڈر بنالیں اور روزانہ جوتے یا پاؤں پر چھڑک لیں بُو نہیں آئے گی وہ افراد جو 5وقت وضو کرتے ہیں۔
 
ان کے پاؤں سے میل دور ہو جاتا ہے صبح کی نمازکے بعد ننگے پاؤں گھاس پر 10منٹ کے لئے ٹہلیں جرابیں روزانہ دھو کر استعمال کریں جوتوں کو بھی دھوپ میں رکھیں پھر ٹالکم پاؤڈر چھڑک کر استعمال کریں اگر پاؤں پر جوتے سے دھبے پڑجائیں تو گلیسرین کے چار بڑے چمچ اور لیموں کے عرق کا ایک بڑا چمچ ملا کر کسی بوتل میں بھر لیں اور روزانہ ان دھبوں پر مالش کریں اور تھوڑی دیر بعد پاؤں دھولیں ایک ہفتے میں پاؤں ٹھیک ہو جائیں گے عام طورپر پاؤں میں نمی رہنے سے فمگل انفیکشن ہو جاتاہے جس سے پاؤں کی انگلیوں کی درمیانی جلد سفید ہو جاتی ہے اور خراش ہونے کے ساتھ درد بھی ہوتا ہے اس سے نجات کے لئے پاؤں دھونے کے بعد انگلیوں کے درمیانی حصے کو اچھی طرح صاف کرلیں تاکہ نمی نہ رہے اور باہر سے آنے کے بعد پاؤں کو اچھی طرح دھولیں تاکہ ان پر ست جمی میل مٹی گرد دُھول اور پسینہ اچھی طرح صاف ہو کرپاؤں نرم وملائم دکھائی دیں گے۔

تازہ ترین خبریں